فکر و نظر

جب چندر شیکھر آزاد نے ساورکر سے کہا تھا ہمیں بھاڑے کا قاتل مت سمجھو

یہ ہم لوگوں کو  بھاڑے کا قاتل سمجھتا ہے۔ انگریزوں سے ملا ہوا ہے۔ ہماری لڑائی انگریزوں سے ہے مسلمانوں کو ہم کیوں ماریں‌گے؟ منع کر دو… نہیں چاہئے اس کا پیسہ ۔

Photo:www.hindgrapha.com

Photo:www.hindgrapha.com

آج مجاہد آزادی اور ہندوستانی سوشلسٹ ری پبلکن ایسوسی ایشن کے سپریم کمانڈر چندرشیکھر آزادکا یوم شہادت ہے ۔آزاد کی بہادری کے قصے ہم بچپن سے سنتے آئے ہیں ،جو قصہ ہمیں بار بار سنایا جاتا ہے کہ جب انگریزوں سے لڑتے ہوئے ان کے پاس آخری گولی بچی تو انہوں نے خود سپردگی کے بجائے اپنے آپ کوگولی مار لی۔دراصل وہ کسی قیمت پر انگریزوں کے ہاتھ زندہ گرفتار نہیں ہونا چاہتے تھے ۔

ایک اوراہم قصہ جو ہمیں آزاد کے بارے میں اکثر نہیں بتایا جاتا ہے ،وہ ہندوتوا کے علمبردار اور آر ایس ایس سے وابستہ وی ڈی ساورکرکے ایک پیغام کو قبول نہیں کرنے سے متعلق ہے۔اس حوالے سے دہلی یونیورسٹی میں تاریخ کے استاد سوربھ باجپئی اپنے ایک مضمون میں لکھتے ہیں کہ؛

’ہندوستانی سوشلسٹ ری پبلکن ایسوسی ایشن کے سپریم کمانڈر چندرشیکھر آزاد کو ایک بار ساورکر نے پیغام بھجوایا تھا کہ انقلابیوں کو انگریزوں سے لڑنا بند کرکے جنّاح اور مسلمانوں کا قتل کرنا چاہئے۔یشپال نے اپنی کتاب ’ سنہ اولوکن ‘ میں لکھا ہے کہ اس پر آزاد نے ان کے دیے پچاس ہزار روپے یہ کہہ‌کے ٹھکرا دیے تھے کہ ‘ یہ ہم لوگوں کو بھاڑے کا قاتل سمجھتا ہے۔ انگریزوں سے ملا ہوا ہے۔ ہماری لڑائی انگریزوں سے ہے مسلمانوں کو ہم کیوں ماریں‌گے؟ منع کر دو… نہیں چاہئے اس کا پیسہ ‘۔

Azad_Savarkar

آزاد ہندتوا اور شدت پسند مسلمانوں کے کتنے خلاف تھے ،اس باب میں باجپئی مزید لکھتے ہیں کہ؛

’آزاد نے اپنے ایک جونیئر دوست، جو کہ ہندو راشٹر کے جملوں سے تھوڑا متاثر ہو گیا تھا، سے واضح الفاظ میں کہا تھا۔

ہے بھگت!تیرے اس’ ہندو راج تنتر ‘کا تصور ملک کو بہت بڑے خطرے میں ڈالنے والا ہے کچھ مسلمان بھی ایسا ہی خواب دیکھتے ہیں۔ لیکن یہ تو پرانے شاہی گھرانوں کے ہندوؤں اور مسلمانوں کی خبط ہے۔ ہمیں تو فرنٹیر سے لےکے برما تک اور نیپال سے لےکے کراچی تک کے ہر ہندوستانی کو ساتھ لےکر ایک مضبوط حکومت بنانی ہے۔ ‘

چندر شیکھر آزاد کے متعلق یہ باتیں آج اس لیے بہت اہم ہیں کہ ہندتوا اور سنگھ پریوارکی ہر ممکن کوشش ہوتی ہے کہ آزاد جیسے سیکولر اورمحب وطن کو ہندوتوا کے ایک علمبردار کے طور پر پیش کیا جائے۔