محمد حمید شاہد اور آصف فرخی، فوٹو بہ شکریہ، فیس بک محمد حمید شاہد

پیارے آصف فرخی ! کیاکوئی یوں بھی مرتا ہے!

انتظار حسین مر گئے تو آصف جنازے میں شریک ہونے کے لیے کراچی سے فلائٹ لے کے لاہور پہنچے تھے۔ادھر اسلام آباد سے میں اور کشور ناہید وہاں پہنچے توآصف پہلے سےپہنچ گئے تھے ۔ مجھے دیکھا ، لپک کر آئے اور میرے گلے لگ کر یوں دھاڑیں مار مار کر روئے کہ میرے دل کا بوجھ بھی اتر گیا تھا۔ مجھے اپنے دل کا بوجھ اتارنا تھا کسی سے گلے لگ کر اور اُسی طرح دھاڑیں مار کر رونا تھاجیسے آصف اور میں انتظار حسین کی موت پرروئے تھے ۔

فروری میں ہوئےتشدد کے دوران موج پور میٹرو اسٹیشن کے پاس تعینات سیکورٹی فورس۔ (فائل فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی: پولیس نے چارج شیٹ میں طاہر حسین کو ’فسادات کا ماسٹر مائنڈ‘ بتایا، وکیل نے کہا-پھنسایا جا رہا ہے

فروری میں شمال مشرقی دہلی میں ہوئے تشدد کے معاملے میں پولیس نے مقامی عدالت میں ہزارصفحات سے زیادہ کی چارج شیٹ دائر کی ہے۔ طاہر حسین کے وکیل کا کہنا ہے کہ پولیس ان کے موکل کے خلاف ایک بھی ثبوت نہیں پیش کر پائی ہے اور انہیں سازش کے تحت پھنسایا جا رہا ہے۔ حسین ملزم نہیں مظلوم ہیں۔

1 June 2020.00_17_29_24.Still002

امریکہ میں سیاہ فام لوگوں کا مظاہرہ، ہندوستان میں اقلیتوں کو انصاف کب؟

ویڈیو: گزشتہ25 مئی کو امریکہ میں ایک پولیس افسرنے ایک سیاہ فام شخص کے گلے کو گھٹنوں سے کئی منٹ تک دبائے رکھا تھا، جس کہ وجہ سے اس کی موت ہو گئی تھی۔اس کے بعد سے نسلی تعصب کے خلاف امریکہ سمیت مختلف ممالک میں مظاہرے شروع ہو گئے ہیں۔ اس مدعے پر عارفہ خانم شیروانی کا نظریہ۔

فوٹو: رائٹرس

چین-ہندوستان تنازعہ: چین کی ناراضگی کے چار اسباب

چین کی ناراضگی کی چوتھی وجہ یہ ہے کہ حالیہ عرصے میں جو دستاویزات سامنے آئے ہیں، ان سے ثابت ہوتا ہے کہ ہندوستان-چین سرحدی تنازعہ بس ایک مفروضہ ہے، جس سے پچھلے 70سالوں سے ہندوستانی حکومت عوام اور میڈیا کو بیوقوف بنارہی ہے۔

 (فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی تشدد: اپنے سیاسی آقاؤں کی لکھی اسکرپٹ کے لیے پولیس کردار چن رہی ہے

دہلی پولیس اس بات پر یقین کرنے کو کہہ رہی ہے کہ فروری میں دہلی میں ہوئے تشدد کے پیچھے ایک سازش ہے اور اس میں و ہی لوگ شامل ہیں جنہوں نے کسی نہ کسی طورپر شہریت قانون کے خلاف ہوئے مظاہروں میں حصہ لیا تھا۔ پولیس کو یہ اسکرپٹ ان کے سیاسی آقاؤں نے دی اور جانچ ایجنسیوں نے اس کو کہانی کی صورت میں فروغ دیا ہے۔

(فوٹو: رائٹرس)

این 95 ماسک کی کوالٹی کو لےکر ٹوئٹ کر نے والے ایمس ڈاکٹر کو وجہ بتاؤ نوٹس جاری

گزشتہ 25 مئی کو ایمس میں ایک سینئر ریزیڈنٹ ڈاکٹر راج کمار شری نواس نے کرکے ہندوستان میں بنے این 95 ماسک کی کوالٹی اوراسٹینڈرڈ کو لےکر سوال اٹھائے تھے۔ انہوں نے مرکزی وزارت صحت اور آئی سی ایم آر کی طرف سےجاری این 95 ماسک سے متعلق اعدادوشمار کو بھی جھوٹ بتایا تھا۔

(فوٹو: پی ٹی آئی)

بہار لوٹنے والے لوگوں کو اب کورنٹائن نہیں کرے گی حکومت، اپوزیشن نے کی تنقید

پندرہ جون کے بعد بہار میں کورنٹائن سینٹرز کو بند کیا جائےگا۔ ساتھ ہی ریلوے اسٹیشنوں پر تھرمل اسکریننگ بھی بند کی جائےگی۔ ریاستی حکومت کا فیصلہ ایسے وقت میں آیا ہے جب ریاست میں کورونا انفیکشن کے 3872 پازیٹو معاملوں میں سے 2743 لوگ وہ ہیں جو تین مئی کے بعد دوسری ریاستوں سے لوٹے ہیں۔

(فوٹو: پی ٹی آئی)

ہندوستان میں کورونا وائرس کے کمیونٹی ٹرانسمیشن کی تصدیق ہو چکی ہے: ماہرین

انڈین پبلک ہیلتھ ایسوسی ایشن(آئی پی ایچ اے)، انڈین ایسوسی ایشن آف پریوینٹو اینڈ سوشل میڈیسن (آئی اے پی ایس ایم) اور انڈین ایپی ڈیمیولوجیکل ایسوسی ایشن(آئی ای اے)کے ماہرین کی جانب سے مرتب کردہ ایک رپورٹ وزیر اعظم کو سونپی گئی ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ سرکار نے اس وبا سے نپٹنے کی تدابیرسے متعلق فیصلہ لیتے وقت ماہرین سے صلاح نہیں لی۔

ڈاکٹر آرتی لالچندانی۔ (فوٹو: ویڈیوگریب/ٹوئٹر)

یوپی: ڈاکٹر کامتنازعہ ویڈیو سامنے آیا، کہا-تبلیغی جماعت کے ممبر دہشت گرد، جیل میں ڈالا جائے

کانپور کے گنیش شنکر ودیارتھی میڈیکل کالج کی پرنسپل ڈاکٹر آرتی لالچندانی کا اپریل میں بنایا گیا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے، جس میں وہ دہلی میں تبلیغی جماعت کے اجتماع میں شامل ہوئے لوگوں کے بارے میں قابل اعتراض تبصرہ کرتی نظر آتی ہیں۔ ڈاکٹر آرتی کا کہنا ہے کہ ویڈیو سے چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے۔

(فوٹو: رائٹرس)

دو دہائی سے زیادہ کے عرصے میں موڈیز  نے پہلی بار گھٹائی ہندوستان کی ریٹنگ

ریٹنگ ایجنسی موڈیز نے اس سے پہلے 1998 میں ہندوستان کی ریٹنگ کو کم کیا تھا۔ موڈیز نے کہا کہ اصلاحات کی سست رفتاری اور پالیسیوں کی اثرپذیری میں رکاوٹ نےہندوستان کی سست نمو میں رول ادا کیا۔ یہ صورتحال کووڈ 19 کے آنے سے پہلے ہی شروع ہو چکی تھی۔

گجرات ہائی کورٹ/ فوٹو: وکی پیڈیا

بنچ میں تبدیلی کے بعد گجرات ہائی کورٹ نے کہا-محض سرکار کی تنقید سے مرے ہو ئے واپس نہیں آئیں گے

اس سے پہلے ہائی کورٹ نے اپنے ایک آرڈر میں کہا تھا کہ سرکار کے ذریعے چلائے جارہے احمدآباد سول ہاسپٹل کی حالت قابل رحم اور کال کوٹھری سے بھی بدتر ہے۔ اس کے بعد اس بنچ میں تبدیلی کی گئی تھی۔

(فوٹو: رائٹرس)

گجرات: ہاسپٹل نے کورونا مشتبہ کی پہلے لاش بھیجی، پھر آخری رسومات کی ادائیگی  کے بعد کہا-مریض کی حالت مستحکم

احمدآباد سول ہاسپٹل کے گجرات کینسر اینڈ ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کا معاملہ۔ ہاسپٹل کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اس پورے واقعہ میں کسی طرح کی لاپرواہی نہیں تھی بجائے اس کے کہ جس اسٹاف کی کنٹرول روم میں ڈیوٹی تھی، اس نے بناصحیح جانچ کےفیملی کو غلط جانکاری دے دی۔

فوٹو: فیس بک

دہلی: ایمس کے 200 اسٹاف  کورونا وائرس کی زد میں

ویڈیو: دہلی میں کو رونا وائرس کے معاملوں میں لگاتار اضافہ ہو رہا ہے۔ یہاں تک کہ ملک کے سب سے بڑے ہاسپٹل ایمس میں بھی ڈاکٹر اور نرس سمیت دوسرے میڈیکل پیشہ ور اس کی چپیٹ میں آ رہے ہیں۔ ایمس میں اب تک تقریباً 200 اسٹاف پازیٹو پائے گئے ہیں۔ ایمس ریزیڈنٹ ڈاکٹرس ایسوسی ایشن نے اس کے لیے ماسک اور پی پی ای کٹ کے معیار کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔

AKI 30 May 2020.00_11_53_11.Still005

مودی 2.0 کا 1 سال: بیک گیئر میں ہندوستانی جمہوریت

ویڈیو: مودی سرکار 2.0 کی پہلی سالگرہ پر پی ایم نریندر مودی نے عوام کے نام ایک خط لکھا ہے۔ پی ایم مودی نے خط میں اپنی سرکار کے پچھلی مدت کار کی حصولیابیوں کا ذکر کرتے ہوئے گزشتہ ایک سال میں لیے گئے فیصلوں کے بارے میں بتایا ہے۔ اس مدعے پر عارفہ خانم شیروانی کا نظریہ۔

اتر پردیش کا لکھیم پور ریلوے اسٹیشن۔ (فوٹو: indiarailinfo)

لاک ڈاؤن: بے روزگاری سے تنگ آکر یوپی کے 50 سالہ شخص نے ٹرین سے کٹ کر جان دی

معاملہ اتر پردیش کے لکھیم پور کھیری ضلع کا ہے۔ لاک ڈاؤن سے پہلے ایک ریستوراں میں کام کرنے والے 50 سالہ بھانو پرکاش گپتا کی جیب سے ایک سوسائیڈ نوٹ برآمد ہوا ہے جس میں انہوں نے اپنی غریبی اور بے روزگاری کا ذکر کیا ہے۔پسماندگان میں بوڑھی ماں، بیوی، تین بیٹیاں اور ایک بیٹا ہیں۔

سالیسیٹر جنرل تشار مہتہ (فوٹو بہ شکریہ: ایم ٹی یونیورسٹی)

سالیسیٹر جنرل کے ذریعے کورٹ میں سنائی گئی گدھ والی کہانی فرضی وہاٹس ایپ فارورڈ پر مبنی تھی

فیکٹ چیک: سپریم کورٹ میں 28 مئی کو مہاجر مزدوروں کے لیے مرکزی حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کی تفصیلات پیش کرتےہوئےسالیسیٹر جنرل تشار مہتہ نے ایک پرانے واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے یہ اشارہ کیا تھا کہ مزدوروں کی پریشانیوں کو دکھانےوالے لوگ گدھوں کی طرح ہیں۔حقائق بتاتے ہیں کہ یہ واقعہ اصل میں ہوا ہی نہیں، یہ ایک جھوٹا وہاٹس ایپ فارورڈ ہے۔

نتاشا نروال(فوٹوبہ شکریہ : سوشل میڈیا)

دہلی تشدد: جے این یو اسٹوڈنٹ نتاشا نروال پر یو اے پی اے کے تحت معاملہ درج

دہلی پولیس کی اسپیشل سیل نے پہلے سے ہی حراست میں لی گئی پنجرہ توڑ تنظیم کی کارکن اور جے این یو کی ریسرچ اسکالر نتاشا نروال کو دہلی تشدد معاملے میں گرفتار کیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ فسادات کی سازش میں نتاشا کے رول کو لےکر ان کے پاس پختہ ثبوت ہیں۔

(فوٹو: پی ٹی آئی)

کووڈ 19: آر ٹی آئی کارکن نے آلات پر ہو ئے خرچ کی تفصیلات پوچھی، وزارت صحت نے انکار کیا

ممبئی کے ایک آر ٹی آئی کارکن نےمرکزی حکومت کے پورٹل پر آن لائن درخواست دائر کرکے کووڈ 19 کے انفیکشن کو پھیلنے سے روکنے کے لیے اٹھائے گئےا قدامات، خریدے گئے آلات اور سامانوں کے نام اور ان پر کئے گئے خرچ کی تفصیلات پوچھی تھی۔

 احمد آباد میں ہوئے ایک پروگرام میں مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ(فوٹو : پی ٹی آئی)

مودی حکومت کی حصولیابی: وزارت داخلہ نے ترمیم شدہ فہرست میں سی اے اے کو شامل کیا

قابل ذکر ہے کہ پہلے جاری کی گئی فہرست میں سی سی اے کو حصولیابی کے طور پر شامل نہیں کیا گیا تھا ۔وہیں وزارت داخلہ نےاپنی حصولیابیوں میں جموں وکشمیر کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے والےآئین کے آرٹیکل 370 اور 35اے کو ختم کرنے کو تاریخی قدم بتایا ہے۔

احمدآباد سے آگرہ کو لوٹتے مزدور(فوٹو: پی ٹی آئی)

نوبل ایوارڈ یافتہ سائنسداں ڈوہرٹی نے ہندوستان میں لاک ڈاؤن میں نرمی پرتشویش کا اظہار کیا

آسٹریلیائی سائنسداں ڈوہرٹی نے آگاہ کیا کہ آئندہ دنوں میں انفیکشن کے معاملے اوربڑھیں گے اور اس انفیکشن کو قابو کرنے کے لیے مؤثر ٹیکہ دستیاب ہونے میں نو سے 12 مہینے کا وقت لگ سکتا ہے۔

شاعر ورور راؤ۔ (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک/@VaraVaraRao)

ممبئی جیل میں بے ہوش ہو نے کے بعدسماجی کارکن اور شاعر ورورا راؤ کو ہاسپٹل میں بھرتی کرایا گیا

بھیما کورے گاؤں تشدد معاملے میں گرفتار سماجی کارکن اور شاعر ورورا راؤ اگست، 2018 سے جیل میں بند ہیں۔ ممبئی کےجے جے ہاسپٹل کے ڈاکٹروں نے بتایا کہ راؤ کی حالت مستحکم ہے اور ان کے کو رونا ٹیسٹ کے رپورٹ کا انتظار ہے۔

سابق مرکزی وزیر اور جموں وکشمیر کانگریس کے سینئررہنماسیف الدین سوز۔ (فوٹو: پی ٹی آئی)

سابق مرکزی وزیر سیف الدین سوز کی نظربندی کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی دائر

جموں وکشمیر سے خصوصی ریاست کا درجہ ہٹنے کے بعد سے سابق مرکزی وزیر اور جموں وکشمیر کانگریس کے سینئررہنماسیف الدین سوز نظربند ہیں۔ ان کی اہلیہ نے سپریم کورٹ میں داخل حبس بے جا یعنی ہیبیس کارپس کی درخواست میں الزام لگایا کہ ان کے شوہر کوپی ایس اے کے تحت گھر میں ہی نظربند کرنے کی وجہ آج تک نہیں بتائی گئی ہے۔

(علامتی تصویر،فوٹو: رائٹرس)

یوپی: ٹرین کے ٹوائلٹ میں مزدور کی لاش ملی، جلپائی گڑی جارہی خاتون کی ٹرین میں موت

ایک دوسرے واقعہ میں ممبئی سے کرایے کی ایک گاڑی سے بنارس لوٹ رہے ایک مہاجر مزدور کی 27 مئی کی رات اتر پردیش کے باندا میں موت ہو گئی۔ انہیں تین دن سے کھانسی اور زکام کی شکایت تھی۔

 (علامتی تصویر، فوٹو: رائٹرس)

چھتیس گڑھ: کورنٹائن سینٹروں میں گزشتہ 48 گھنٹوں میں تین بچیوں اور ایک خاتون کی موت

ریاست کے تین الگ الگ کورنٹائن سینٹر میں رہ رہے مہاجر مزدوروں  کی دو سال سے بھی کم عمر کی تین بچیوں کی موت ہو گئی ہے۔ حکا م  کا کہنا ہے کہ دو بچیوں کی موت کھاتے وقت دم گھٹنے سے ہوئی اور ایک کئی دن سے […]

 (علامتی تصویر، فوٹو: پی ٹی آئی)

جھارکھنڈ :مزدور نے ٹرین میں کھانا نہ ملنے کی شکایت کی تو افسر بو لے ٹرین سے کود جاؤ

جھارکھنڈ کے ایک مہاجر مزدور اور ریاست کے ایک سینئر آئی اے ایس افسر اےپی سنگھ کی بات چیت کامبینہ آ ڈیو کلپ سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے۔ حالانکہ افسر کا کہنا ہے کہ یہ بات انہوں نے دوسرے سیاق میں کہی تھی۔

جسٹس جےبی پردیوالا اور الیش جےوورا کی بنچ کو رونا سے متعلق پی آئی ایل  پرشنوائی کر رہی تھی۔ (علامتی تصویر، فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی سے لے کر گجرات ہائی کورٹ تک، کیا بنچ میں تبدیلی سرکار کو بچانے کے لیے ہوتی رہےگی؟

کو رونا کو لے کر اسپتالوں کی قابل رحم حالت اورحفظان صحت کو لے کرریاست کی بد نظمیوں پر گجرات سرکار کو بےحد سخت پھٹکار لگانے والی ہائی کورٹ کی بنچ میں اچانک تبدیلی کیے جانے سے ایک بار پھر ‘ماسٹر آف روسٹر’ کارول سوالوں کے گھیرے میں ہے۔

(فوٹوبہ شکریہ: فیس آف نیشن ویب سائٹ)

گجرات: سیڈیشن معاملے میں گرفتار صحافی کے خلاف الزام ثابت نہیں، ضمانت ملی

گزشتہ11 مئی کو ایک گجراتی نیوز پورٹل کے مدیر کو وزیر اعلیٰ وجئے روپانی کو عہدہ سے ہٹائے جانے کی قیاس آرائیوں پر شائع ایک خبر کے لیےسیڈیشن کے الزام میں معاملہ درج کرتے ہوئے حراست میں لیا گیا تھا۔مقامی عدالت نے کہا ہے کہ پولیس کے ذریعے دیے گئے دستاویز پڑھنے پر ایسا کوئی سنگین جرم نہیں دکھتا۔

Don`t copy text!