اسٹیٹ بینک آف انڈیا

اسٹیٹ بینک آف انڈیا۔ فوٹو: پی ٹی آئی

آر ٹی آئی میں انکشاف، مالی سال 2018سے 19 کے 9 مہینوں میں ایس بی آئی میں تقریباً 8 ہزار کروڑ کی بینکنگ دھوکہ دھڑی

اپریل-دسمبر 2018 کے دوران بینکنگ دھوکہ دھڑی کے شکار ہونے والے لوگوں کی تعداد اور ان کو ہوئے نقصان کی جانکاری مانگے جانے پر اسٹیٹ بینک آف انڈیا نے کہا کہ قانونی اہتماموں کے مطابق اس کو اس بارے میں مانگی گئی جانکاری نہیں دینے کا اختیار ہے۔

 (فوٹو بشکریہ: وکپیڈیا)

ایس بی آئی نے آدھار ڈیٹا کے غلط استعمال کا لگایا الزام، یو آئی ڈی اے آئی نے تردید کی

ایس بی آئی افسروں نے کہا کہ یو آئی ڈی اے آئی کے حفاظتی نظام میں کئی خامیاں ہیں، جو ہیک کرنے اور کئی اسٹیشن آئی ڈی بنانے کو ممکن بناتا ہے۔ ہم نے اتھارٹی سے اپیل کی ہے کہ وہ ہمارے ساتھ اپنے سسٹم کو زیادہ شفاف بنانے اور ڈیٹا بیس کو زیادہ محفوظ بنانے کے لئے کام کریں۔

(فوٹو : رائٹرس)

ایس بی آئی میں پہلی ششما ہی کے دوران 5555 کروڑ روپے کا بینکنگ فراڈ: آر ٹی آئی

ایس بی آئی کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ اس مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں بینک میں کل 723.06 کروڑ روپے کے بینکنگ فراڈ کے 669 معاملے اور دوسری سہ ماہی میں کل 4832.42 کروڑ روپے کے بینکنگ فراڈ کے 660 معاملے سامنے آئے ہیں۔

فوٹو: رائٹرس

ایس بی آئی کا الیکشن بانڈ سے چندہ پانے والی سیاسی پارٹیوں کی جانکاری دینے سے انکار: آر ٹی آئی

بینک نے مانگی گئی جانکاری کو متعلقہ لوگوں کے بارے میں ذاتی جانکاری بتاتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اطلاعات اس کے پاس ‘ دوسروں کی امانت’ کے تحت رکھی گئی ہیں اور قانون میں اس طرح کی جانکاری نہ دینے کی چھوٹ ہے۔ بینک نے جو بیورا دیا ہے اس کے مطابق مارچ 2018 میں اس نے 222 کروڑ روپے کی قیمت سے زیادہ کے انتخابی بانڈ بیچے۔