جعفرآباد

عمر خالد، ڈونالڈ ٹرمپ اور کپل مشرا(فوٹو:رائٹرس/فیس بک)

دہلی فسادات: ٹرمپ کرونالوجی میں  ہوئی فاش غلطی کے بعد دہلی پولیس کا یو ٹرن

دہلی فسادات کے معاملے میں دائر ایک چارج شیٹ میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ 8 جنوری کو منعقد ایک میٹنگ میں ٹرمپ کے ہندوستان دورے کےوقت تشدد کامنصوبہ بنایا گیاتھا۔ پچھلے دنوں ایک دوسری چارج شیٹ میں پولیس نے اس کو ہٹاتے ہوئے کہا ہے کہ سی اے اےمخالف مظاہرہ2019کے عام انتخابات میں بی جے پی کی جیت سے کھوئی زمین پانے کے لیے بڑے پیمانےپرفسادات کروانے کی‘دہشت گردانہ سازش’کا حصہ تھے۔

گل فشاں  فاطمہ(فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر)

دہلی فسادات: گرفتار جامعہ اسٹوڈنٹ نے تہاڑ جیل کے اہلکاروں پرذہنی ہراسانی کے الزام لگائے

دہلی تشددسے جڑے معاملے میں یو اے پی اے کے تحت گرفتار اسٹوڈنٹ گل فشا ں فاطمہ نے مقامی عدالت کی شنوائی میں الزام لگایا کہ جیل میں ان کے ساتھ امتیازی سلوک ہوتا ہے، فرقہ وارانہ تبصرےکیے جاتے ہیں۔ ایسے میں اگر وہ خود کو کوئی نقصان پہنچاتی ہیں، تو جیل انتظامیہ اس کی ذمہ دار ہوگی۔

موج پور لال بتی کے قریب ڈی سی پی(نارتھ-ایسٹ)وید پرکاش سوریہ کےساتھ بی جے پی رہنما کپل مشرا(فوٹو : ویڈیو اسکرین گریب/ٹوئٹر)

دہلی فسادات: کپل مشرا کا دعویٰ کوئی ہیٹ اسپیچ نہیں دیا، صرف مظاہرہ کی بات کہی تھی

بی جے پی رہنما کپل مشرا کا دہلی فسادات سے ایک دن پہلے کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوا تھا، جس میں وہ ایک ڈی ایس پی کے بغل میں کھڑے ہوکر دہلی پولیس کو الٹی میٹم دیتے ہوئے تین دنوں کے اندرجعفرآباد اور چاندباغ کی سڑکیں خالی کرانےکو کہہ رہے تھے۔ ایسا نہیں ہونے پر سڑکوں پر اترنے کی بات کہی تھی۔

گل فشاں  فاطمہ(فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر)

دہلی فسادات کے سلسلے میں گرفتار گل فشاں فاطمہ کی رہائی کے لیےشہریوں  نے اپیل کی

دہلی فسادات کےسلسلےمیں گرفتار گل فشاں فاطمہ سو دن سے زیادہ عرصے سے تہاڑ جیل میں ہیں۔سول سوسائٹی کے ممبروں، ماہرین تعلیم اور قلمکاروں سمیت450 سے زیادہ لوگوں نے ان کی رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ دہلی پولیس وباکا فائدہ اٹھاکر مظاہرین کو غیر قانونی طریقےسے گرفتار کر رہی ہے۔

فوٹو: رائٹرس

دہلی فسادات: کیا انصاف کا گلا گھونٹنے کے لیےمرکزی حکومت ’گجرات ماڈل‘ اپنا رہی ہے؟

گجرات فسادات کے بعد کی گئی کچھ ریکارڈنگس بتاتی ہیں کہ کس طرح سنگھ پریوار کے ممبروں کی پبلک پراسیکیوٹر کے طور پرتقرری کی گئی، جنہوں نے ان معاملوں کو ‘سیٹل’ کرنے میں مدد کی، جن میں ملزم ہندو تھے۔ اب دہلی فسادات کے معاملے میں مرکزی حکومت اپنی پسند کے پبلک پراسیکیوٹر چننا چاہتی ہے۔

(فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی فسادات: ایک ہی معاملے میں دو عرضیاں دائر کر نے پر ہائی کورٹ نے دہلی پولیس کو پھٹکار لگائی

دہلی ہائی کورٹ نے ایک ہی معاملے میں الگ الگ عرضیاں دائر کرنے کے لیے دہلی پولیس پر ناراضگی کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ عدالتی نظام کاغلط استعمال کر رہی ہےاور سسٹم کے ساتھ کھلواڑ کر رہی ہے۔

(فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی فسادات میں رہنماؤں کے رول کے ثبوت نہیں: دہلی پولیس

دہلی ہائی کورٹ کے سامنے دہلی پولیس نے یہ جواب ان پی آئی ایل عرضیوں کے جواب میں دیا ہے، جن میں کپل مشرا سمیت بی جےپی، کانگریس اور عام آدمی پارٹی کے کچھ رہنماؤں پر ہیٹ اسپیچ کا الزام لگاتے ہوئے ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی مانگ کی گئی ہے۔

(فائل فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی فسادات: پولیس نے کہا، ہندوؤں کی گرفتاری پر کمیونٹی میں غصہ، احتیاط برتنے کی ضرورت

دہلی فسادات کے سلسلے میں دہلی پولیس کی جانب سے کی جا رہی جانچ اورگرفتاریوں کے بیچ اسپیشل پولیس کمشنر پرویر رنجن نے ایک آرڈر میں خفیہ ان پٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ شمال مشرقی دہلی کے فسادات متاثرہ علاقوں میں کچھ ہندو نوجوانوں کوحراست میں لیے جانے سے کمیونٹی کے لوگوں میں غصہ ہے۔

(فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی فسادات: ’پہلے شرپسندوں  نے گھر اور دکان لوٹ لیا، اب مقدمہ واپس لینے کا دباؤ بنایا جا رہا ہے‘

رواں سال فروری میں شمال-مشرقی دہلی میں ہوئے فسادات کے شکار ریڈی میڈ کپڑوں کے تاجرنثار احمد نے ہائی کورٹ میں عرضی دائر کر کے الزام لگایا ہے کہ پولیس ان کی شکایت پر مناسب کارروائی نہیں کر رہی ہے اور ملزمین کی جانب سے ان کو ڈرایا- دھمکایا جا رہا ہے۔

فروری میں ہوئےتشدد کے دوران موج پور میٹرو اسٹیشن کے پاس تعینات سیکورٹی فورس۔ (فائل فوٹو: پی ٹی آئی)

دہلی: پولیس نے چارج شیٹ میں طاہر حسین کو ’فسادات کا ماسٹر مائنڈ‘ بتایا، وکیل نے کہا-پھنسایا جا رہا ہے

فروری میں شمال مشرقی دہلی میں ہوئے تشدد کے معاملے میں پولیس نے مقامی عدالت میں ہزارصفحات سے زیادہ کی چارج شیٹ دائر کی ہے۔ طاہر حسین کے وکیل کا کہنا ہے کہ پولیس ان کے موکل کے خلاف ایک بھی ثبوت نہیں پیش کر پائی ہے اور انہیں سازش کے تحت پھنسایا جا رہا ہے۔ حسین ملزم نہیں مظلوم ہیں۔

فوٹو: ٹوئٹر@tahirhussainaap

کیا طاہر حسین کے مکان پر لڑکی کے ساتھ انہونی ہوئی؟

فیک نیوز راؤنڈ اپ : دہلی فسادات کے بعد سدرشن نیوز کی ایک رپورٹر نے دعویٰ کیا کہ وہ عام آدمی پارٹی کے کونسلر طاہر حسین کے مکان سے رپورٹ کر رہی ہیں۔ جہاں ان کوکسی خاتون کے جلے ہوئے کپڑے، انڈر گارمنٹس، جلا ہوا پرس وغیرہ ملے ہیں۔ رپورٹر نے دعویٰ کیا کہ یہاں ایک خاتون کو گھسیٹ کر لایا گیا تھا اور اس کے ساتھ زیادتی کی گئی تھی پھر اس کو قریب کے نالے میں ڈال دیا گیا۔

فوٹو: رائٹرس

امریکی صحافی کو واپس بھیجنے سے متعلق  پرسار بھارتی کی خبر کو وزارت خارجہ  نے غلط بتایا

ملک کاعوامی نشریاتی ادارہ پرسار بھارتی نے ٹوئٹ کرکے کہا تھا کہ وزارت خارجہ نے امریکہ میں واقع ہندوستانی سفارت خانے سے ہندوستان مخالف رویے کو لے کر وال اسٹریٹ جرنل کے جنوبی ایشیائی ڈپٹی بیورو چیف ایرک بیل مین کو فوری اثر سے واپس بھیجنے کی ایک اپیل کو دیکھنے کے لیے کہا ہے۔ حالانکہ وزارت خارجہ کے ذرائع نے کہا کہ پرسار بھارتی نے غلط جانکاری دی۔

فوٹو: بہ شکریہ فیس بک

جسٹس مرلی دھر کے تبادلے پر وکیلوں کی بین الاقوامی تنظیم  نے تشویش کا اظہار کیا

جسٹس مرلی دھر نے شمال مشرقی دہلی میں فسادات سے پہلے بی جے پی کےکچھ رہنماؤں کی جانب سے مبینہ طور پر ہیٹ اسپیچ کے معاملے میں کیس درج کرنے میں ناکامیاب رہنے کو لےکر دہلی پولیس کی کھینچائی کی تھی۔ اس کے اگلے دن 26 فروری کی رات کو مرکزی حکومت نے ان کا تبادلہ کر دیا تھا۔

hsFHuTQg

دہلی فسادات: اپوزیشن پارٹیوں نے عدالتی تفتیش کی مانگ کی، وزارت داخلہ اور پولیس پر سوال کھڑے کئے

اپوزیشن پارٹیوں نے دہلی تشدد کے دوران وزارت داخلہ اور دہلی پولیس پر اپنی ذمہ داری نبھانے میں ناکام رہنے کا الزام لگایا اور مانگ کی کہ اس معاملے کی سپریم کورٹ کی نگرانی میں عدالتی جانچ کرائی جانی چاہیے۔

23 سال کے فیضان۔(سبھی فوٹو : دی وائر)

دہلی فسادات: کیا دہلی پولیس ہے فیضان کی موت کی ذمہ دار

دہلی فسادات کے دوران سامنے آئے ایک ویڈیو میں کچھ پولیس اہلکار زمین پر پڑے کچھ زخمی نوجوانوں سے قومی ترانہ گانے کو کہتے دکھ رہے تھے۔زخمیوں میں سے ایک فیضان کی موت ہو چکی ہے۔ ان کی ماں کا کہنا ہے کہ پولیس کسٹڈی میں بےرحمی سے […]

فوٹو: پی ٹی آئی

دہلی فسادات: ہائی کورٹ نے اگلے حکم تک لاوارث لاشوں کی تجہیز و تکفین پر روک لگائی

دلی ہائی کورٹ نے جمعہ کو سبھی سرکاری اسپتالوں کو دہلی کے شمال مشرقی علاقوں میں فسادات کے دوران مرنے والے سبھی لوگوں کے ڈی این اے نمونے محفوظ کرنے اور ویڈیوگرافی پوسٹ مارٹم کرانے کا حکم دیا۔ ان فسادات میں تقریباً 53 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔

فوٹو: ٹوئٹر@tahirhussainaap

دہلی فسادات: آئی بی اہلکار کے قتل معاملے میں عآپ سے نکالے گئے کاؤنسلر طاہر حسین گرفتار

عام آدمی پارٹی سے نکالے گئے کاؤنسلر طاہر حسین کے خلاف آئی بی اہلکار کے قتل کا معاملہ درج کیا گیا ہے، جن کا قتل شمال مشرقی دہلی میں شہریت ترمیم قانون کو لےکر ہوئے فسادات کے دوران ہواتھا۔

سپریم کورٹ/ فوٹو: پی ٹی آئی

دہلی فسادات: سپریم کورٹ نے دہلی ہائی کورٹ سے کہا-تاخیر غیر مناسب، 6 مارچ کو کریں سماعت

گزشتہ 27 فروری کو دہلی ہائی کورٹ نے بی جے پی رہنماؤں اور دیگر کی ہیٹ اسپیچ پر ایف آئی آر درج کرنے کی مانگ والی سماجی کارکن ہرش مندر کی عرضی پر سماعت کو 13 اپریل تک کے لئے ملتوی کر دیا تھا۔

(فوٹو: رائٹرس)

برٹن نے شہریت قانون کے ممکنہ اثرات پر تشویش کا اظہار کیا

برٹش سکھ لیبر پارٹی کے ایم پی تن من جیت سنگھ ڈھیسی نے کہا کہ دہلی تشدد نے 1984 کے سکھ مخالف فسادات کی تکلیف دہ یادوں کو تازہ کر دیا ہے، جب وہ ہندوستان میں پڑھ رہے تھے اور ان کی ساتھی ایم پی پریت کور گل نے بھی 1984فسادت کے تناظر کو پیش کیا۔

فوٹو: پی ٹی آئی

سی اے اے کے خلاف یو این ہیومن رائٹس چیف نے سپریم کورٹ میں عرضی داخل کی

یونائیٹڈ نیشن ہائی کمشنر فار ہیومن رائٹس کے ذریعے شہریت ترمیم قانون پر سپریم کورٹ میں مداخلت کی عرضی دائر کرنے پر وزارت خارجہ نے کہا کہ سی اے اے ہندوستان کا اندرونی معاملہ ہے اور یہ قانون بنانے والی ہندوستانی پارلیامنٹ کی خودمختاریت کے دائرے سے متعلق ہے۔

فوٹو: رائٹرس

دہلی فسادات: مرنے والوں کی تعداد 47 پہنچی ،369 ایف آئی آر درج، تقریباً 1300 لوگ حراست میں

نارتھ ایسٹ دہلی میں تشدد کے معاملے میں اب تک 33 لوگوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ سی سی ٹی وی فوٹیج کی بنیاد پر فساد میں ملوث لوگوں کو حراست میں لینا آسان ہے لیکن قتل کے معاملوں میں اتنی آسانی سے لوگوں کو گرفتار نہیں کیا جا سکتا۔

0203 Media Bol Master.00_32_35_03.Still005

میڈیا بول: دہلی تشدد، ’گولی مارو…‘ کا  نعرہ اور میڈیا

ویڈیو: گزشتہ اتوار سے دہلی میں شروع ہوئے فساد کی زد میں اب تک 40 سے زیادہ لوگوں کی موت ہو چکی ہے جبکہ 300 سے زیادہ لوگ زخمی ہیں۔ اس پر دی وائر کے ڈپٹی ایڈیٹر اجئے آشیرواد، سماجی کارکن شبنم ہاشمی،جن چوک ویب سائٹ کے رپورٹر سشیل مانو کے ساتھ سینئر صحافی ارملیش کی بات چیت۔

اتوار کو کولکاتا کے شہید مینار میدان میں ہوئی ریلی میں مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ (فوٹو : پی ٹی آئی)

مغربی بنگال: امت شاہ کی ریلی سے پہلے لگا ’گولی مارو…‘ کا نعرہ، 3 بی جے پی کارکن گرفتار

اتوار کو شہید مینار میدان میں ہوئی وزیر داخلہ امت شاہ کی ریلی میں جاتے ہوئے بی جے پی حامیوں کے ذریعے ’دیش کے غداروں کو، گولی مارو…‘ کے نعرے لگاتا ہوا ایک ویڈیو سامنے آیا ہے۔ وزیراعلیٰ ممتا بنرجی نے اس کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ دہلی نہیں ہے، یہاں یہ برداشت نہیں کیا جائے‌گا۔

سبھدرا مکھرجی، فوٹو: بہ شکریہ فیس بک

دہلی میں ہو ئے فسادات سے ناراض بنگالی اداکارہ نے بی جےپی سے دیا استعفیٰ

بنگلہ فلموں کی اداکارہ سبھدرا مکھرجی نے بی جےپی سے استعفیٰ دیتے ہوئے کہا کہ مجھے ایسی پارٹی میں نہیں ہونا چاہیے جو اپنی ہی پارٹی کے رہنماؤں کے خلاف کارروائی کرنے میں امتیاز کرتی ہو۔ میں ایسی پارٹی سے دوری بنانا پسند کروں گی، جس میں انوراگ ٹھاکر اور کپل مشراجیسے لوگ ہوں۔

فوٹو : اے این آئی

شاہین باغ میں احتیاط کے طور پر بڑی تعداد میں پولیس فورس کی تعیناتی

پولیس کی یہ تعیناتی تب کی گئی ہے جب رائٹ ونگ گروپ ہندو سینا نے ایک مارچ کو شاہین باغ روڈ خالی کرانے کی اپیل کی۔ حالانکہ سنیچر کو پولیس کی دخل اندازی کے بعد انہوں نے شاہین باغ میں سی اےاے مخالف مظاہرے کے خلاف اپنامجوزہ احتجاج واپس لے لیا۔

کرن تھاپر اور اجئے راج شرما، فوٹو: دی وائر

میں کمشنر ہوتا تو کپل مشرا اور انوراگ ٹھاکر کو گرفتار کر چکا ہوتا: دہلی کے سابق کمشنر

بی ایس ایف کے ڈائریکٹر جنرل اور دہلی کے کمشنر رہ چکے اجئے راج شرما نے سینئر صحافی کرن تھاپر سے بات کرتے ہوئے دہلی میں ہوئے حالیہ تشدد کے دوران پولیس کے رول پر سوال اٹھائے اور کہا کہ وہ فسادات کو سنبھالنے میں ناکام رہی۔

 جی ٹی بی ہاسپٹل کی مورچری کے باہر اپنے رشتہ داروں کی لاش کے لئے انتظارکرتے لوگ۔ (فوٹو : پی ٹی آئی)

دہلی فسادات میں جان گنوانے والے لوگ کون ہیں؟

شمال مشرقی دہلی میں تشدد میں جان گنوانے والوں کی تعداد 40 سے زیادہ ہوگئی ہے۔ دہلی کے کئی ہاسپٹل میں بھرتی زخمیوں کا علاج جاری ہے۔ جان گنوانے والوں میں ایک حاملہ خاتون کے آٹو ڈرائیور شوہر، ایک نوشادی شدہ نوجوان، سول سروس کےامتحانات کی تیاری کر رہا طالب علم، ایک بڑھئی جیسے لوگ شامل ہیں۔

فوٹو: اسکرین گریب

دہلی: راجیو چوک میٹرو اسٹیشن پر بھگوا پہنے ایک گروپ نے لگایا ’دیش کے غداروں کو گولی مارو…‘ کا نعرہ

بھگوا رنگ کی ٹی شرٹ اور کرتے پہنے پانچ سے چھ لوگوں نے اس وقت  نعرے لگانے شروع کر دیے، جب ٹرین راجیو چوک اسٹیشن پر رکنے ہی والی تھی۔ ٹرین سے اترنے کے بعد بھی ان لوگوں نے سی اے اے کی حمایت میں اور ’دیش کے […]

PTI2_26_2020_000231B

دہلی فسادات کے دوران پولیس کو دیکھ‌ کر لگا مانو اس کو لقوہ مار گیا ہو: سابق ڈی جی پی پرکاش سنگھ

انٹرویو : گزشتہ  اتوار سے دہلی میں شروع ہوئے فساد کی آگ میں اب تک40 سے زیادہ لوگوں کی موت ہو چکی ہے جبکہ 300 سے زیادہ لوگ زخمی ہیں۔ اس دوران دہلی پولیس کے رول پر لگاتار اٹھ رہے سوالوں پر سابق ڈی جی پی پرکاش سنگھ […]

2802 Vishal Interview.00_20_27_01.Still001

’سیاسی دباؤ کی وجہ سے فساد روکنے میں ناکام ہوئی دہلی پولیس‘

ویڈیو: گزشتہ اتوار سے دہلی میں شروع ہوئے فسادات میں اب تک 40 سے زیادہ لوگوں کی موت ہو چکی ہے جبکہ 300سے زیادہ لوگ زخمی ہو چکے ہیں۔ اس دوران قومی راجدھانی دہلی میں مرکزی وزارت داخلہ سے لے کر دہلی پولیس تک پورا انتظامیہ خا موش تماشائی بنا رہا۔ فساد روکنے میں ناکام رہی دہلی پولیس پچھلے کچھ وقت سے اپنے کام کو لے کر مسلسل سوالوں کے گھیرے ہے۔فرقہ واریت، فساد اور پولیس کے رول پر سابق آئی پی ایس افسر اور’ شہر میں کرفیو‘، گجرات: دی میکنگ آف ٹریجڈی کے مصنف وبھوتی نرائن رائے سے وشال جیسوال کی بات چیت۔

سکریٹری جنرل سکریٹری انتونیو گوتریس(فوٹو: رائٹرس)

دہلی تشدد پر یواین چیف نے کہا-مہاتما گاندھی کے نظریات کی پہلے سے کہیں زیادہ ضرورت ہے

یواین سکریٹری جنرل انتونیو گوتریس کے ترجمان اسٹیفن دوجارک نے کہا کہ دہلی کے نارتھ-ایسٹ علاقے میں فرقہ وارانہ تشددمیں کئی لوگوں کے ہلاک ہونے سے یو این چیف ‘بہت غمزدہ’ہیں اور انہوں نےصبروتحمل سے کام لینے کی اپیل کی ہے۔

AKI 28 Feb 2020.00_25_21_17.Still003

’میری داڑھی ٹوپی کی وجہ سے مجھ پر حملہ ہوا‘

ویڈیو: گزشتہ دنوں دہلی کے شمال مشرقی حصے میں بھڑکے تشدد میں 40 سے زیادہ لوگوں کی موت ہو چکی ہے اور 300 سے زیادہ لوگ زخمی ہیں۔ اس دوران چاند باغ کے محمد زبیر بھی شر پسندوں کی بربریت کا شکار بنے اور خون میں لت پت ان کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی۔ زبیر سے دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی کی بات چیت۔

سابق سی جے آئی کے جی بال کرشنن، فوٹو: پی ٹی آئی

جسٹس مرلی دھر کے تبادلہ کو لے کر حکم جاری کر تے ہوئے احتیاط برتنی چاہیے تھی: سابق سی جے آئی بال کرشنن

مرکزی حکومت نے گزشتہ26 فروری کو دہلی ہائی کورٹ کے جسٹس ایس مرلی دھر کے تبادلے کا حکم جاری کیا تھا۔ اسی دن جسٹس مرلی دھر کی صدارت والی بنچ نے مبینہ ہیٹ اسپیچ دینے کے لیے تین بی جےپی رہنماؤں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے میں دہلی پولیس کی ناکامی کو لےکر‘ناراضگی’ کااظہار کیا تھا۔

Don`t copy text!