قرآن

(فوٹو: دی  وائر)

قرآن کی 26 آیات کو ہٹانے سے متعلق عرضی کو سپریم کورٹ نے ’فضول‘ بتایا

اتر پردیش شیعہ وقف بورڈ کے سابق سربراہ وسیم رضوی کی جانب سے دائر اس عرضی کو خارج کرتے ہوئے عدلیہ نے ان پر 50 ہزار روپے کا جرمانہ بھی لگایا۔ رضوی نے اپنی عرضی میں دعویٰ کیا تھا کہ قرآن کی انہی26 آیات کا حوالہ دےکر اسلامی دہشت گرد گروپ دوسرے مذہب کے لوگوں پر حملہ کرتے ہیں اور اسے جائز ٹھہراتے ہیں۔

علامتی تصویر، فوٹو: رائٹرس

سپریم کورٹ میں قرآن سے متعلق عرضی پر فیضان مصطفیٰ نے کہا-وسیم رضوی کو اگرکسی کو فریق بنانا ہی تھا، تو وہ اللہ کو فریق بناتے

ماہرین قانون کا خیال ہے کہ سپریم کورٹ نہ صرف یہ درخواست یکسر مسترد کر دے گی بلکہ اپنے آئینی حق کا غلط استعمال کرنے پر درخواست گزار کو بھاری جرمانہ بھی کر سکتی ہے۔

Don`t copy text!