ناگپور

سدھا بھاردواج ، فوٹو ،دی وائر

ماؤوادیوں سے تعلقات کے الزام میں گرفتار وکیل سدھا بھاردواج کو ملا ہارورڈ سے اعزاز

بھیما کورے گاؤں معاملے میں گرفتاری کے 7 مہینے بعد سدھا بھاردواج کو ہارورڈ لاء اسکول کی ایک پورٹریٹ ایکزبٹ میں جگہ ملی ہے۔کالج کے ذریعے یہ اعزاز دنیا بھر سے قانون کے شعبہ میں کار ہائے نمایاں انجام دینے  والی خواتین کو دیا جاتا ہے۔ نئی دہلی:وکیل […]

خط لکھنے والے یورپ کے رکن پارلیامان (وکی میڈیا کامنس اور ٹوئٹر)

یورپ کے رکن پارلیامان نے حکومت ہند سے کہا، انسانی حقوق کے کارکنوں پر کارروائی بند کریں

20 ممبرآف پارلیامنٹ نے حکومت ہند اور نیشنل ہیومن رائٹس کمیشن کو خط لکھ‌کر انسانی حقوق اور سماجی حقوق کے لیے کام کرنے والوں کے خلاف لگے الزامات ہٹانے اور جیل میں بند لوگوں کو رہا کرنے کی درخواست کی ہے۔

نتن گڈکری/فوٹو: پی ٹی آئی

انسانوں کے  پیشاب جمع کرنے سے ہمیں یوریا امپورٹ نہیں کرنا پڑے گا: نتن گڈکری

ناگپور میونسپل کارپوریشن کے ایک پروگرام میں مرکزی وزیر نتن گڈکری نے کہا کہ لوگ میراتعاون نہیں کرتے کیونکہ میرے تمام خیالات شاندار ہوتے ہیں۔ گڈکری نے دعویٰ کیا کہ انسان کے بالوں کے استعمال سے کسانوں کی پیداوار 25 فیصد بڑھ جاتی ہے۔

فوٹو: دی وائر

ہرین پانڈیا قتل معاملہ: نئے سرے سے جانچ سے متعلق عرضی پر سپریم کورٹ نے فیصلہ محفوظ رکھا

گجرات میں نریندر مودی حکومت میں وزیر داخلہ رہے ہرین پانڈیا کا 26 مارچ 2003 کو احمد آباد میں لاء گارڈین علاقے میں اس وقت گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا، جب وہ صبح کی سیر کر رہے تھے۔

نتن گڈکری/ فوٹو: پی ٹی آئی

میرے حلقے میں ذات پات کی بات کی، تو پٹائی کر دوں گا: نتن گڈکری

پونے کے پنپڑی چنچواڑ میں ایک پروگرام میں بولتے ہوئے مرکزی وزیر نتن گڈکری نے کہا کہ اقتصادی اور سماجی مساوات کی بنیاد پر سماج کو ایک ساتھ لانے کی ضرورت ہے اور اس میں ذات پات اور فرقہ واریت کی جگہ نہیں ہے۔

ہرین پانڈیا (فائل فوٹو، السٹریشن : دی وائر)

ہرین پانڈیا قتل معاملہ: سپریم کورٹ از سر نو جانچ کے لیے عرضی پر 11 فروری کو کرے گا شنوائی

غیر سرکاری تنظیم سی پی آئی ایل نے گزشتہ مہینے عدالت میں عرضی دائر کرکے کورٹ کی نگرانی میں اس قتل معاملے کی جانچ کرانے کی گزارش کی تھی۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ سامنے آئی کچھ نئی جانکاریاں ، ڈی جی ونجارہ سمیت کچھ آئی پی ایس افسروں کے پانڈیا کے قتل کی سازش میں شامل ہونے کےامکانات کی طرف اشارہ کرتی ہیں۔

سماجی کارکن آنند تیلتمبڑے (فوٹو بشکریہ : ٹوئٹر)

آنند تیلتمبڑے کی حمایت میں آئے 600 غیر ملکی ماہر تعلیم، کہا-بند کی جائیں سبھی قانونی کارروائی

سماجی کارکن آنند تیلتمبڑے پر بھیما کورےگاؤں تشدد اور ماؤوادیوں سے مبینہ تعلقات کے الزامات کو امریکہ اور یورپ کے ماہر تعلیم نے قانون کا غلط استعمال بتاتے ہوئے کہا کہ یہ جمہوریت پر سنگین حملہ ہے۔

فوٹو: ٹوئٹر

عدالت نے آنند تیلتمبڑے کی گرفتاری کو غیر قانونی کہا، رہا کرنے کا حکم

پونے پولیس نے بھیما – کورے گاؤں تشدد اور ماؤوادیوں سے مبینہ تعلق رکھنے کے الزم میں سپریم کورٹ سے ملے عبوری تحفظ کے باوجود سنیچر کو سماجی کارکن اوراسکالر آنند تیلتمبڑے کو گرفتار کرلیا تھا۔

 آنند تیلتمبڑے (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک)

سپریم کورٹ کے ذریعے گرفتاری سے تحفظ کے باوجود آنند تیلتمبڑے گرفتار

بھیما-کورےگاؤں تشدد میں مبینہ کردار اور ماؤوادیوں سے مبینہ تعلقات کے معاملے میں سپریم کورٹ نے گزشتہ14 جنوری کو دلت اسکالر اور سماجی کارکن آنند تیلتمبڑے کی گرفتاری سے عبوری تحفظ کی مدت4 ہفتے اور بڑھا دی تھی۔

ہرین پانڈیا (فائل فوٹو، السٹریشن : دی وائر)

سابق وزیر ہرین پانڈیا قتل معاملے کی نئے سرے سے جانچ کے لیے عرضی

غیر سرکاری تنظیم سی پی آئی ایل کے ذریعے سپریم کورٹ میں دائر عرضی میں کہا گیا ہے کہ سامنے آئی کچھ نئی جانکاریاں ، ڈی جی ونجارہ سمیت کچھ آئی پی ایس افسروں کے پانڈیا کے قتل کی سازش میں شامل ہونے کےامکانات کی طرف اشارہ کرتی ہیں۔

ہرین پانڈیا (فائل فوٹو، السٹریشن : دی وائر)

ہرین پانڈیا قتل معاملہ : شروعاتی جانچ کرنے والے پولیس افسر اس کی دوبارہ تفتیش کیوں چاہتے ہیں؟

بطور وزیراعلیٰ نریندر مودی کے 13 سال کی مدت کے دوران ہوئے ان سلجھے قتلوں اور انکاؤنٹروں میں ہرین پانڈیا کا قتل کئی معنوں میں سب سے بڑی پہیلی ہے۔ اس معاملے کی دوبارہ جانچ کئے جانے میں جتنی تاخیر کی جائے‌گی، ا س کے سراغوں کے پوری طرح سے تباہ ہو جانے کے امکانات بڑھتے جائیں گے۔

سہراب الدین اور کوثر بی، بی جے پی صدر امت شاہ اور جج برج گوپال لویا (فوٹو بشکریہ : فیس بک / پی ٹی آئی / دی کارواں)

رویش کا بلاگ: کیا امت شاہ کبھی سوچتے ہوں‌گے کہ ہرین پانڈیا کا قتل اور انکاؤنٹرکی خبریں زندہ کیسے ہو جاتی ہے؟

کیا امت شاہ کبھی سوچتے ہوں‌گے کہ ہرین پانڈیا کا قتل اور سہراب الدین-کوثر بی-تلسی رام انکاؤنٹر کی خبر زندہ کیسے ہو جاتی ہے؟ امت شاہ جب پریس کے سامنے آتے ہوں‌گے تو اس خبر سے کون بھاگتا ہوگا؟ امت شاہ یا پریس؟

Judge-Loya

وکیل کا دعویٰ، ریڈیوایکٹیو آئسوٹوپ زہر دینے سے ہوئی تھی جج لویا کی موت

ناگ پور کے ایک وکیل ستیش اوکے نے سی بی آئی جج بی ایچ لویا کی موت کو مشتبہ بتاتے ہوئے بامبے ہائی کورٹ کی ناگ پور بنچ میں عرضی دائر کر کے کہا ہے کہ جج لویا کو زہر دیا گیا تھا اور ان کی موت سے متعلق تمام دستاویز مٹا دئے گئے ہیں۔

سدھا بھاردواج، فوٹو: دی وائر

بھیما کورے گاؤں تشدد : سماجی کارکن اور وکیل سدھا بھاردواج کو پونے پولیس نے حراست میں لیا

پونے کی ایک عدالت نے گزشتہ جمعہ کو سدھا بھاردواج ، ورنان گونجالوس اور ارن فریرا کی ضمانت عرضی خارج کر دی ، جس کے بعد دیر شام ورنان گونجالوس اور ارن فریرا کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔

ماؤوادیوں سے مبینہ تعلقات کو لےکر نظربند کئے گئے شاعر وراورا راؤ، سماجی کارکن اور وکیل ارون فریرا، وکیل سدھا بھاردواج، گوتم نولکھا، ورنن گونجالوس۔ (بائیں سے دائیں)

بھیما کورے گاؤں معاملہ: بامبے ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ پہنچی مہاراشٹر حکومت

بھیما کورے گاؤں تشدد کی جانچ پوری کرنے کی مدت بڑھانے کو لے کر نچلی عدالت کے فیصلے کو بامبے ہائی کورٹ نے رد کر دیا تھا ۔ معاملے میں گرفتار 5 میں سے 4سماجی کارکنوں کو نظر بند رکھا گیا ہے ۔ ایک سماجی کارکن گوتم نولکھا کی نظربندی ختم کردی گئی ہے۔

فوٹو: پی ٹی آئی

برہموس کی جانکاری پاکستانی ایجنسیوں کو دینے کے شک میں ڈی آر ڈی او کا ایک ملازم حراست میں

اتر پردیش پولیس اور مہاراشٹر اے ٹی ایس نے ایک مشترکہ کارروائی میں نشانت کو حراست میں لیا گیا ہے ۔جاسوسی کے شک میں حراست میں لیے گئے نشانت اگروال ناگپور واقع برہموس میزائل پروڈکشن سینٹر میں گزشتہ 4 سالوں سے کام کر رہا تھا۔

ماؤوادیوں سے مبینہ تعلقات کو لےکر نظربند کئے گئے شاعر وراورا راؤ، سماجی کارکن اور وکیل ارون فریرا، وکیل سدھا بھاردواج، گوتم نولکھا، ورنن گونجالوس۔ (بائیں سے دائیں)

بھیما کورے گاؤں معاملہ: سپریم کورٹ نے ایس آئی ٹی جانچ کی مانگ خارج کی

بھیما کورے گاؤں میں ہوئے تشدد کے معاملے میں ماؤوادیوں سے مبینہ تعلقات کو لے کر شاعر وراوراراؤ، وکیل سدھا بھاردواج ، سماجی کارکن ارون فریرا ، گوتم نولکھا اور ویرنان گونجالوس گزشتہ 29 اگست سے نظر بند ہیں۔

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

سماجی کارکنوں کی نظر بندی 19ستمبر تک برقرار،مرکز نے عدالت کی’دخل اندازی‘پر اٹھایا سوال

مرکزی حکومت نے عدالت کی دخل اندازی اور شنوائی کی مخالفت کی ہے ۔مرکزی حکومت کا کہنا ہے کہ نکسل ازم ایک سنگین مسئلہ ہے جو پورے ملک میں پھیل رہا ہے۔اگر اس طرح کی عرضی پر شنوائی ہوگی تو یہ ایک خطرناک مثال بن جائے گی ۔

ماؤوادیوں سے مبینہ تعلقات کو لےکر نظربند کئے گئے شاعر وراورا راؤ، سماجی کارکن اور وکیل ارون فریرا، وکیل سدھا بھاردواج، گوتم نولکھا، ورنن گونجالوس۔ (بائیں سے دائیں)

سماجی کارکنوں کی گرفتاری : یہ غیراعلانیہ ایمرجنسی ہے، جو ایمرجنسی سے زیادہ خطرناک ہے

بھیما کورےگاؤں تشدد اور وزیر اعظم نریندر مودی کے قتل کی مبینہ سازش کے الزام میں سماجی کارکنوں کی گرفتاری کے بعد سے ایلگار پریشد چرچہ میں ہے۔ ایلگار پریشد کے ماؤوادی کنیکشن سمیت تمام دوسرے الزامات پر اس کے کنوینر اور بامبے ہائی کورٹ کے ریٹائرڈ جسٹس بی جی کولسے پاٹل کا نظریہ۔

SudhaBhardwaj_Mahtab

سدھا بھاردواج کی بیٹی کا خط ؛ مما سہی کہتی تھیں کہ’بیٹا میں نے پیسے نہیں کمائے لوگ کمائے ہیں‘

گزشتہ دنوں حقوق انسانی کی وکیل اور ٹریڈ یونین ایکٹیوسٹ سدھا بھاردواج کو پونے پولیس نے ماؤنوازوں سے تعلق رکھنے کے الزام میں ان کے گھر فریدآباد سے گرفتار کیا تھا ۔پڑھیے ان کی بیٹی مائشہ کا خط۔

فوٹو: پی ٹی آئی

ارن دھتی رائے : میں بھی’اربن نکسل‘ہوں!

آج کے ہندوستان میں کسی اقلیتی گروپ میں ہونا ایک گناہ ہے۔ مار دیا جانا ایک جرم ہے۔ پیٹ پیٹ کر مار دیا جانا (لنچ کر دیا جانا) ایک جرم ہے۔ غریب ہونا جرم ہے۔ غریبوں کے حق میں کھڑا ہونے اور اس کی پیروی کرنے کا مطلب حکومت کا تختہ پلٹ کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔

دہلی میں سماجی کارکنوں کی گرفتاری کے خلاف مظاہرہ کرتے ہوئے ایکٹیوسٹ

سماجی کارکنوں کی گرفتاری کے خلاف ملک بھر میں مظاہرہ ،سپریم کورٹ نے لگائی 6ستمبر تک ٹرانزٹ ریمانڈ پر روک

سپریم کورٹ نے ان 5 سماجی کارکنوں کے ٹرانزٹ ریمانڈ پر اگلی سماعت،6ستمبر تک روک لگادی ہے ۔ساتھ ہی اسی معاملے میں این ایچ آر سی نے مہاراشٹر حکومت اور مہاراشٹر پولیس چیف کو نوٹس جاری کیا ہے ۔

(فوٹو : پی ٹی آئی)

سماجی کارکنوں کی گرفتاری کے خلاف رومیلا تھاپر اور دیگر 4 پہنچے سپریم کورٹ

سپریم کورٹ کے سامنے عرضی پر بدھ کو ہی شنوائی کرنے کی گزارش کی گئی تھی۔ عدالت دوپہر پونےچار بجے شنوائی کرے گی۔ وہیں ہیومن رائٹس ایکٹیوسٹ گوتم نولکھا کی گرفتاری کو چیلنج کرنے والی عرضی پر دوپہر سوادو بجے دہلی ہائی کورٹ میں شنوائی ہوگی۔

FakeNews_AirPort

ایئر پورٹ پر سیلاب، مندسور میں کسانوں پر ظلم اور برطانیہ رائل ایئر فورس کے جہازوں کا سچ 

گزشتہ ہفتے ایک ویڈیو وہاٹس ایپ پر بہت عام ہوا جس کے تعلق سے یہ دعویٰ کیا گیا کہ یہ 1919 کے جلیاں والا باغ کی یاد دلاتا ہے جہاں بے قصور شہریوں پر انگریزی حکومت نے گولیاں چلائی تھیں اور انکو قتل کیا تھا۔ ویڈیو کے ساتھ یہ بھی دعویٰ کیا گیا کہ یہ ویڈیو مدھیہ پردیش کے مندسور ضلع کا ہے جہاں شیوراج سنگھ چوہان کی حکومت کسانوں پر ظلم کر رہی ہے ۔