چیف جسٹس

فوٹو: پی ٹی آئی

جسٹس ایس اے بوبڈے نے ہندوستان کے 47 ویں چیف جسٹس کے طور پر حلف لیا

ایس اے بوبڈے مدھیہ پردیش ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس رہ چکے ہیں۔ وہ کئی اہم بنچ کا حصہ رہے ہیں۔ اس کے علاوہ وہ ممبئی میں مہاراشٹر نیشنل لاء یونیورسٹی اور ناگپور میں مہاراشٹر نیشنل لاء یونیورسٹی کے چانسلر بھی ہیں۔

سپریم کورٹ کے جج جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ، فوٹو بہ شکریہ:Increasing Diversity by Increasing Access

جج قانون سے اوپر نہیں ہیں، عدالتی تقرری کا عمل شفاف ہونا چاہیے: جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ

جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ نے کہا کہ ایسا کرنے سے تقرری کے عمل میں لوگوں کا اعتماد بڑھے‌گا اور فیصلے لینے میں عدلیہ اور حکومت کی تمام سطحوں پر بلند سطح کی شفافیت اور جوابدہی طے ہو سکے‌گی۔

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

آر ٹی آئی کے دائرے میں آیا سی جے آئی دفتر، سپریم کورٹ نے دہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کو صحیح  ٹھہرایا

دہلی ہائی کورٹ نے سال 2010 میں اپنے فیصلے میں سپریم کورٹ کی اس دلیل کو خارج کر دیا تھا کہ سی جے آئی دفتر کو آر ٹی آئی کے دائرے میں لائے جانے سے عدلیہ کی آزادی متاثرہوگی۔

 جسٹس شرد ارویند بوبڈے۔ (فائل فوٹو : پی ٹی آئی)

کالجیئم میں خاطر خواہ شفافیت، اس کے انکشاف کی ضرورت نہیں: متوقع سی جے آئی بوبڈے

ملک کے اگلے چیف جسٹس شرد ارویند بوبڈے نے یہ بھی کہا کہ حکومت ججوں کی تقرری میں دیری نہیں کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی معاملے کی سماعت سے ہٹنے سےمتعلق سے جج کو کوئی وجہ بتانے کی ضرورت نہیں ہے۔

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

چیف جسٹس ہی ماسٹر آف روسٹر، اس میں کوئی شک نہیں : سپریم کورٹ

چیف جسٹس کے ذریعے معاملوں کے مختص پر سابق وزیر قانون شانتی بھوشن کی عرضی پر جواب دیتے ہوئے سپریم کورٹ نے کہا کہ سی جے آئی کا رول ہم منصبوں کے درمیان سربراہ کا ہوتا ہے، ان کو مختلف بنچ کو معاملے باٹنے کاخصوصی اختیار ہوتا ہے۔

Credit: Reuters/Yuri Gripas/Files

ٹرمپ کےمسلم اکثریتی ممالک پر پابندی کے فیصلے کو سپریم کورٹ کی حمایت

ٹرمپ نے اس کو امریکہ کے لوگوں کے ساتھ آئین کی جیت قرار دیا ہے،وہیں اس فیصلے کے خلاف ووٹ دینے والوں ججوں نے کہا کہ کورٹ تاریخی غلطی کر رہا ہے کیوں کہ ایسا کرکے وہ مسلمانوں کے خلاف امتیازی سلوک کو صحیح ٹھہرا رہے ہیں۔

high-court-delhi_pti-1

بغیر چیف جسٹس کے چل رہے ہیں ملک کے چھ ہائی کورٹ

مرکزی حکومت نے کالجیئم  کے ذریعے چھ مہینے پہلے منتخب امیدواروں کی تقرری نہیں کی ہے۔ حکومت اور عدلیہ کے درمیان تعطل کی وجہ سے ملک کی مختلف عدالتوں میں 3 کروڑ سے زیادہ معاملے زیر التوا ہیں۔  نئی دہلی: ملک کے 6ہائی کورٹ گزشتہ چھ مہینے سے بغیر […]

dipak-misra

بد عنوانی کے سنگین الزام کے بعد بھی کسی شخص کو چیف جسٹس بنایا جا سکتا ہے ؟

جسٹس دیپک مشرا کو ملک کا چیف جسٹس بنائے جانے پر سوال اٹھا رہے ہیں سابق وزیر قانون شانتی بھوشن۔ نوٹ : یہ مضمون جسٹس دیپک مشرا کے چیف جسٹس بننے کے اعلان کے بعد مرتب کیا گیا تھا ۔جسسٹس دیپک مشرا نے پیر کو 45ویں چیف جسٹس […]

Don`t copy text!