کشمیر پر ٹرمپ

 (فوٹو : پی ٹی آئی)

اقوام متحدہ کے ترجمان نے کہا، کشمیر پر ہماری تشویش قائم ہے

امریکہ میں’سینیٹ انڈیا کاکس’کے کو چیئرمین اور امریکی رکن پارلیامنٹ مارک وارنر نے کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت ہندسے اپیل کی ہے کہ وہ پریس، اطلاعات اور سیاسی شراکت داری کی آزادی دےکر جمہوری‎ اصولوں کی پابندی کرے۔

(فوٹو : رائٹرس)

امریکی کمیٹی نے کہا، وقت آگیا ہے کہ ہندوستان کشمیر سے پابندی ہٹالے

امریکی پارلیامنٹ کے خارجہ امور کی کمیٹی نے کہا کہ کشمیر میں مواصلاتی ذرائع پر پابندی کی وجہ سے کشمیریوں کی روزمرہ کی زندگی پر تباہ کن اثر پڑ رہا ہے۔ ہندوستان کے لئے ان پابندیوں کو اٹھانے اور کشمیریوں کو کسی بھی دیگر ہندوستانی شہری کی طرح یکساں حقوق اور خصوصی اختیارات دینے کا وقت ہے۔

مرکزی وزیر پرکاش جاویڈکر اور امریکی رکن پارلیامان کرس وان ہولن،فوٹو: ٹوئٹر

امریکی رکن پارلیامان کو حکومت سے نہیں ملی کشمیر جانے کی اجازت، اپنی آنکھوں سے دیکھنا چاہتے تھے حالات

ہندوستانی حکومت سے جموں و کشمیر جانے کی اجازت نہ ملنے کے باوجود امریکہ کی ڈیموکریٹک پارٹی کے رکن پارلیامان کریس وان ہولن اس ہفتے ہندوستان آئے۔انہوں نے افسروں اور سول سوسائٹی کےلوگوں سے ملاقات کی۔

(فوٹو : پی ٹی آئی)

امریکی اراکین پارلیامان نے کشمیر میں مواصلاتی ذرائع کو فوراً بحال کرنے کی مانگ کی

کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال کو لےکر امریکہ کے دو رکن پارلیامان نے اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وزیر خارجہ مائک پومپیو سے اپیل کی ہے کہ وہ کشمیر میں مواصلاتی ذرائع کو فوراً بحال کرنے اور حراست میں لئے گئے تمام لوگوں کو آزاد کرنےکے لئے حکومت ہند پر دباؤ ڈالیں۔

Don`t copy text!