Bajrang Dal workers

اجمیر جارہی  ٹرین سے ایک مسلمان  مسافر کو گھسیٹ کراس کے ساتھ مارپیٹ کرتے وی ایچ پی کے کارکن ۔ (فوٹو: ویڈیو گریب)

ایم پی: بجرنگ دل کے کارکنوں نے ساتھ سفر کر رہے مسلمان مرد اور ہندو خاتون کو ٹرین سے اتارا

یہ واقعہ 14 جنوری کو اجین ریلوے اسٹیشن پر پیش آیا۔ الزام ہے کہ بجرنگ دل کے کارکنوں نے ایک مسلمان پر ‘لو جہاد’ کا الزام لگا کرمار پیٹ بھی کی۔ دونوں شادی شدہ ہیں اور فیملی فرینڈ ہیں۔

مراد آباد میں جوس کی دکان (فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر)

یوپی: ’لو جہاد‘ کا الزام لگاتے ہوئے بجرنگ دل کے کارکنوں نے ایک مسلمان کی دکان بند کروائی

یہ واقعہ مرادآباد کا ہے، جہاں 23 دسمبر کی شام بجرنگ دل کے کارکنوں نے الزام لگایا کہ علاقے میں مسلمان ہندو کے نام پر دکان چلا رہے ہیں۔اس دوران کارکنوں نے جوس سینٹر کوبند کرواتے ہوئے ہنگامہ بھی کیا اور ‘ہر ہر مہادیو’، ‘جئے شری رام’کےنعرے لگائے۔

احمدآباد میں بجرنگ دل کے کارکنان کاماسوتر کی کاپیاں جلاتے ہوئے۔ (فوٹو: اسکرین گریب)

گجرات: بجرنگ دل کارکنوں نے جلائی کاما سوتر کی کاپیاں، کہا-بھگوان کی قابل اعتراض عکاسی

معاملہ احمدآباد کے لیٹی ٹیوڈ گفٹ اینڈ بک اسٹور کا ہے، جہاں بجرنگ دل کے کچھ کارکنوں نے 28 اگست کو ہندو دیوی دیوتاؤں کی قابل اعتراض عکاسی کا الزام لگاتے ہوئے کاماسوتر کتاب کی کاپیاں جلادیں۔ کارکنوں نے کتاب کی فروخت جاری رکھنے پر اگلی بار پوری دکان جلانے کی وارننگ دی ہے۔

Don`t copy text!