death anniversary

raj-kapoor

راج کپور:ایک دل والا حقیقت پسند

یوم وفات پر خاص :سدا کا عاشق مزاج راج کپور اپنی فلموں میں سماجی برائیوں کے مد مقابل محبت کو لا کھڑا کرتا تھا۔ نا انصافیوں کے سامنے راج کپور کی فوج میں سپاہی نہیں بلکہ امن کا جھنڈا تھامے ، پیار کے ترانے گاتے عاشق ڈٹے نظر آتے ہیں۔

محکمہ آثار قدیمہ نے 2016 میں اس عمارت کو بحال کیا،اس عمارت کی تعمیر نو میں کوئی بڑی تبدیلی نہیں -کی گئی

فوٹو فیچر: نوبل انعام یافتہ عبدالسلام کے گھر،گلی اور محلے کی کہانی

یوم وفات پر خاص:نئی نسل تو شاید ان کے نام سے بھی واقف نہ ہو کیونکہ اسے کبھی بتایا ہی نہیں گیا کہ جھنگ کےپرانے محلے میں رہنے والا ا سکول ماسٹر کا بیٹا کون تھا،انہیں صرف یہ رٹایا جا رہا ہے کہ وہ ایک قادیانی تھا اور […]

faiz-ahmed-faiz-lit-club

فیض احمد فیض: اے خاک نشینوں اٹھ بیٹھو

آج اگر فیض کی قرٲت ہورہی ہے توکچھ توہے جوکلامِ فیض کو تعصبات سے پرے قبولیت عطاکررہی ہے۔ نئی پوپھٹی تورات کا خیال آیا۔داغ داغ اجالے اورشب گزیدہ سحرنے مایوس کیا۔ذہن جھنجلایا۔دل کوغصہ آیا۔سپاٹ صبح سے تو بہتر ہے کہ رات کی اتھاہ گہرائی اوراس کے تحیر میں […]

JaunEliaPoetry

جونؔ یاروں کے یار تھے ہم تو

جون کے یہاں وجود کا نشہ سر چڑھ کر بولتا ہوا محسوس ہوتا ہے۔انہوں نے انسان کے وجود اور خود اپنی ذات کے سراب کو کھنگالنے میں کوئی کسر نہیں اٹھارکھی۔ امروہہ صرف ایک قصبہ ہی نہیں تہذیب و تمدن کا گہواراہ بھی ہے۔یہاں ایک کہاوت سینہ بہ […]

salahuddin_parvez

’شعری اظہار صلاح الدین پرویز کی روح کا آسمان ہے‘

صلاح بھائی نے شوق گل بوسی میں کانٹوں پہ زباں رکھ دی ہے اورجتنی بھی اذیتیں اورعذاب ہیں،سب اسی وجہ سے ہیں۔فن کارجب دکھ اذیت،عذاب سے گزرتاہے تو اس کی چیخ وکراہ کو کوئی کیوں نہیں سنتا؟ 2000سے پہلے کے صلاح الدین پرویز کونجی حوالے سے میں بالکل […]

lohia

ہندو مسلم تنازعہ اور رام منوہر لوہیا

میں مسلمانوں کو الگ سے اہمیت نہیں دیتا۔ مسلمانوں کے اندر زیادہ تر پچھڑے (پسماندہ) لوگ ہیں جیسے جلاہے، دھنیے۔ پانچ کروڑ میں یہ چار ساڑھے چار کروڑ پچھڑے مسلمان میں۔ میں ان کو اہمیت دیتا ہوں، پڑھائی لکھائی میں، غریبی میں، ہر معاملے میں۔ آج سے ٹھیک […]

RaeesAmrohavi

خون دل میں انگلیاں ڈبولینے والے صحافی اور شاعر رئیس امروہوی

رئیس امروہوی بیسویں صدی کے سب سے بڑے قطعہ نگار شاعر تھے۔ نئی دہلی :آج ہی کے دن 1988کی شام جب رئیس امروہوی کراچی میں اپنے دولت کدےپرمطالعےمیں مصروف تھےتو انہیں ایک نامعلوم شخص نے گولی مار دی تھی۔قلم کے اس مجاہد نے کبھی کہا تھا : قلم […]