Delhi

Capture

منکی پوکس کے بڑھتے ہوئے معاملوں پر ڈاکٹر چندرکانت سے خصوصی بات چیت

ویڈیو: ملک میں منکی پوکس کے کیس بڑھ رہے ہیں۔ کیرالہ میں تین معاملات کے علاوہ دارالحکومت دہلی میں بھی ایک کیس سامنے آیا ہے۔ اس وائرل بیماری کی علامات اور علاج کے بارے میں ڈاکٹر چندرکانت سے دی وائر کے یاقوت علی کی بات چیت۔

Pox

منکی پوکس: آخر کیا ہے یہ بیماری، اور اس سے نمٹنے کے لیے کیا کر رہی ہے ہندوستانی حکومت؟

ویڈیو: اس بیماری کی شروعات 1970 میں ایک افریقی ملک میں ہوئی۔ رواں سال کے قبل تک یہ بیماری صرف 11 افریقی ممالک تک محدود تھی۔ لیکن اب یورپ کے کئی ممالک سمیت 75 ممالک میں 19000 سے زائد افراد اس کا شکار ہو چکے ہیں۔ حالانکہ صرف 5 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ آخر ایسا کیا ہوا کہ یہ بیماری اتنے ممالک میں داخل ہو گئی؟ اس سے لڑنے کے لائحہ عمل کیا ہو سکتے ہیں؟ ہندوستانی حکومت اس سلسلے میں کیا کر رہی ہے؟ ان تمام سوالوں کا جواب جاننے کے لیےدی وائر کی یہ رپورٹ دیکھیں۔

(تصویر: رائٹرس)

دہلی میں منکی پوکس کامعاملہ سامنے آیا، ہندوستان میں مریضوں کی تعداد چار ہوئی

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) نےمنکی پوکس کو عالمی ایمرجنسی کا درجہ دے دیا ہے۔ عالمی سطح پر 75 ممالک میں منکی پوکس کے 16000 سے زیادہ معاملے رپورٹ ہوئے ہیں اور اس کی وجہ سے ابھی تک پانچ افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

water delhi

گزشتہ کئی سالوں سے دہلی میں پانی کی قلت، آخر  کون ہے ذمہ دار؟

ویڈیو: دہلی ملک کی راجدھانی ہے، لیکن ہر سال گرمیوں کے موسم میں مانسون شروع ہونے سے پہلے یہاں پانی کی قلت شروع ہو جاتی ہے۔ دہلی کو پانی کی جتنی ضرورت ہے، اتنی سپلائی نہیں ہوتی ۔ اس کی وجہ سے ہر سال دہلی میں پانی کا بحران پیدا ہوتا ہے۔

15 اپریل2021 کو سورت کے ایک شمشان میں کووڈ 19 سے جان گنوانے والوں کی لاشیں۔ (فوٹو: پی ٹی آئی)

کووڈ سے ہوئی اموات پر ڈبلیو ایچ او کے اندازے کو جھوٹا ثابت کرنے کے لیے حکومت نے غلط ڈیٹا کا استعمال کیا

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کا اندازہ ہے کہ 2020 میں ہی ہندوستان میں 8.30 لاکھ لوگ کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاک ہوئے۔دی رپورٹرز کلیکٹو کے ایک تجزیہ سے پتہ چلتا ہے کہ ان اندازوں کو حقائق سے پرے قرار دے کر مسترد کرنے کے لیے مرکزی حکومت نے جن اعداد وشمار کا استعمال کیا ، ان کی صداقت مشتبہ ہے۔

فوٹو بہ شکریہ: فیس بک

بی جے پی رہنماؤں کے خلاف ہیٹ اسپیچ  کے لیے ایف آئی آر کی درخواست والی عرضی خارج

دہلی ہائی کورٹ نے سی اے اے مخالف مظاہروں کے دوران مبینہ نفرت انگیز تقریر یعنی ہیٹ اسپیچ کے لیے مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر اور بی جے پی کے رکن پارلیامنٹ پرویش ورما کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کے سلسلے میں سی پی آئی (ایم) رہنما برندا کرات اور کے ایم تیواری کی طرف سے دائر ایک عرضی میں دعویٰ کیا گیا تھاکہ دونوں نے لوگوں کو اکسانے کی کوشش کی تھی، جس کے نتیجے میں دہلی میں دو مختلف احتجاجی مقامات پر فائرنگ کے تین واقعات پیش آئے۔

شرجیل امام، فوٹو بہ شکریہ: فیس بک

سیڈیشن پر سپریم کورٹ کے آرڈر کا حوالہ دیتے ہوئے شرجیل امام نے عبوری ضمانت کے لیے عرضی داخل کی

رواں سال جنوری میں دہلی کی ایک عدالت نے 2019 کے سی اے اے اور این آر سی مخالف مظاہروں کے دوران مبینہ طور پر اشتعال انگیز تقاریر کے الزام میں جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) کے طالبعلم شرجیل امام کے خلاف سیڈیشن کا الزام طےکیا تھا۔ اسی ماہ سپریم کورٹ نے سیڈیشن کے قانون پر غوروخوض ہونے تک اس سے متعلق تمام کارروائیوں پر روک لگانے کی ہدایت دی ہے۔

1005 r Clips.00_15_11_18.Still006

بلڈوزر کی سیاست پر کیوں خاموش ہیں دہلی کے ایل جی؟

ویڈیو: لیفٹ پارٹی، اسٹوڈنٹ گروپ اور خواتین تنظیم راجدھانی دہلی کے میونسپل کارپوریشنوں کے ذریعے چلائی جا رہی انسداد تجاوزات مہم کے خلاف نظر آ رہی ہیں۔ بائیں بازو کی جماعتوں نے اس معاملے پر لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کی خاموشی پر سوال اٹھائے ہیں۔

45

اتر پردیش: یوگی حکومت کا نیا ہتھیار، مندر اور مسجد سے ہٹائے گئے لاؤڈ اسپیکر

ویڈیو: اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے گزشتہ دنوں حکم دیا تھا کہ تمام مذہبی مقامات پر نصب لاؤڈ اسپیکر کم آواز میں چلائے جائیں تاکہ کسی کو پریشانی نہ ہو۔ یوگی آدتیہ ناتھ کے اس فیصلے کو ان کے سیاسی کریئر کا اگلا قدم ماناجا رہا ہے، جو کہ دہلی ہے۔

(علامتی تصویر: رائٹرس)

سال 2020 میں مرنے والے 82 لاکھ افراد میں سے 45 فیصد کو کوئی طبی سہولت نہیں ملی: رجسٹرار جنرل

رجسٹرار جنرل آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق سال 2020 میں رجسٹرڈ کل اموات میں سے تقریباً 1.3 فیصد لوگوں کو ایلوپیتھی یا دیگر طبی شعبوں کے اہل پیشہ ور افراد سے طبی سہولیات ملی تھیں۔ مرنے والوں میں سے 45 فیصد کو ان کی موت کے وقت کوئی طبی سہولت نہیں مل پائی تھی۔ 2019 میں طبی سہولیات کے فقدان میں مرنے والوں کی تعداد 35.5 فیصد تھی۔

الہ آباد ہائی کورٹ۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

مسجدوں میں لاؤڈ اسپیکر کا استعمال بنیادی حق نہیں: الہ آباد ہائی کورٹ

الہ آباد ہائی کورٹ نے اتر پردیش کے بدایوں ضلع کے رہنے والے عرفان کی جانب سے دائرعرضی کو خارج کرتے ہوئے یہ تبصرہ کیا۔ اس عرضی میں ضلع انتظامیہ کے دسمبر 2021 کے فیصلے کو رد کرنے کی مانگ کی گئی تھی، جس کے تحت مسجد میں اذان کے وقت لاؤڈ اسپیکر کا استعمال کرنے کی گزارش کو مسترد کر دیا گیاتھا۔

(فائل فوٹو: رائٹرس)

کووڈ-19 سے دنیا میں ایک اندازے کے مطابق 1.5 کروڑ موتیں ہوئیں، ہندوستان میں 47 لاکھ لوگوں کی جان گئی: ڈبلیو ایچ او

ہندوستان نے ڈبلیو ایچ او کی جانب سے مصدقہ اعداد و شمار کی دستیابی کے باوجود کورونا وائرس کی وبا سے متعلق اموات کی اعلیٰ شرح کے تخمینے کو پیش کرنے کے لیے ریاضیاتی ماڈل کے استعمال پر شدید اعتراض کیا ہے اور کہا ہے کہ اس ماڈل اور ڈیٹا اکٹھا کرنے کا طریقہ کارمشکوک ہے۔

آدیش گپتا۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

بی جے پی نے کیجریوال کو خط لکھ کر دہلی کے 40 گاؤں کا نام تبدیل کرنے کا مطالبہ کیا

دہلی بی جے پی کے صدر آدیش گپتا نے اس سلسلے میں وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کو خط بھیجا ہے۔ ان 40 گاؤں میں ہمایوں پور، یوسف سرائے، مسعود پور، زمرد پور، بیگم پور، فتح پور بیری، حوض خاص اور شیخ سرائے وغیرہ کے نام شامل ہیں۔ بی جے پی کا کہنا ہے کہ ان کے نام مغلیہ دور کے ہیں جو غلامی کی یاد دلاتے ہیں۔

طاہر حسین۔ (فوٹو: دی وائر/ویڈیوگریب)

دہلی: عدالت نے 2015 کے ایک معاملے میں طاہر حسین کو بری کرتے ہوئے کہا – ان کے خلاف ثبوت نہیں

یہ طاہر حسین کی جانب سے نئے سال کی مبارکباد پیش کرنےکے لیے ایک ستون پر بورڈ لگا کر سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے کا معاملہ تھا۔ چیف میٹروپولیٹن مجسٹریٹ نے اپنے فیصلے میں کہا کہ استغاثہ کے پاس یہ ثابت کرنے کے لیے بالکل بھی ثبوت نہیں ہیں کہ حسین یا ان کی جانب سے کسی نے وہ ہورڈنگ لگائی تھی۔

جی ٹی بی اسپتال میں بھرتی ہونے کا انتظار کرتا ایک کووڈ مریض ۔ (فوٹو: رائٹرس)

کسی بھی ریاست نے مہاماری  کے دوران آکسیجن کی کمی سے موت کی تصدیق نہیں کی: مرکزی حکومت

مرکزی وزیر مملکت برائے صحت و خاندانی بہبود بھارتی پوار نے پارلیامنٹ میں بتایا کہ ملک میں کووڈ-19 کی وجہ سے اب تک مجموعی طور پر 521358 لوگوں کی موت ہو چکی ہے، جبکہ مرکز ی حکومت کی درخواست پر 20 ریاستوں اور یونین ٹریٹری کی جانب سے […]

فوٹو بہ شکریہ: فیس بک

دہلی فسادات: ہیٹ اسپیچ معاملے میں عدالت نے کہا – بیان مسکراتے ہوئے دیا جائے تو یہ جرم نہیں ہے

دہلی ہائی کورٹ دہلی فسادات سے پہلے ہیٹ اسپیچ کے الزام میں بی جے پی لیڈر انوراگ ٹھاکر اور پرویش ورماکے خلاف ایف آئی آر کے مطالبے کو خارج کرنے کے سلسلے میں چیلنج دینے والی ایک عرضی پر سماعت کر رہی ہے۔سماعت کے دوران عدالت نے کہا کہ انتخابی بیان بازی میں رہنما کئی طرح کی باتیں کرتے ہیں، لیکن ہمیں کسی بھی پیش رفت کی مجرمانہ نوعیت کو دیکھنا ہوگا۔

(علامتی تصویر: پی ٹی آئی)

دہلی: کشمیری ہونے کی وجہ سے ایک شخص کو ہوٹل میں کمرہ دینے سے منع کیا گیا، پولیس نے معاملہ درج کیا

گزشتہ 22 مارچ کو جموں و کشمیر کے سری نگر کے رہنے والے سید فیصل کو دہلی کے جہانگیر پوری واقع ایک ہوٹل میں ٹھہرنے سے منع کر دیا گیا۔ سوشل میڈیا پر وائرل ایک ویڈیو کے مطابق ہوٹل کی ایک خاتون ملازمہ نے انہیں جموں و کشمیر سے ہونے کی وجہ سے ہوٹل میں ٹھہرنےسے منع کیا۔ فیصل نے کہا یہ پہلا موقع ہے کہ انہیں اس طرح کے امتیازی سلوک کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

فوٹو: پی ٹی آئی

دہلی فسادات: ہیٹ اسپیچ معاملے میں عدالت نے سونیا گاندھی، راہل گاندھی، کپل مشرا سمیت کئی لیڈروں کو دوبارہ نوٹس بھیجا

دہلی ہائی کورٹ فروری 2020 میں شمال-مشرقی دہلی میں ہوئے فسادات سے متعلق مختلف عرضیوں کی سماعت کر رہی ہے، جن میں یہ مطالبہ کیا گیا ہے کہ سی اے اے مخالف مظاہروں کے بعد ہوئے فسادات میں مبینہ طور پر ہیٹ اسپیچ کے معاملے میں ان لیڈروں کی جانچ کی جائے۔

(فائل فوٹو: پی ٹی آئی)

کورونا کے دوران ہندوستان میں کسی بھی دوسرے ملک کے مقابلے زیادہ موتیں ہوئیں: رپورٹ

لانسیٹ جریدے کے ایک نئے تجزیے کے مطابق، 2020 اور 2021 میں کووڈ-19 کی وبا کے دوران ہندوستان میں ایک اندازے کے حساب سے 40.7 لاکھ افراد ہلاک ہوئے۔ یہ تعداد سرکاری طور پر ہندوستان میں کووڈ-19 سے ہونے والی اموات سے آٹھ گنا زیادہ ہے۔ حالاں کہ حکومت نے اس رپورٹ کو خارج کر دیا ہے۔

دہلی کے گوکل پوری علاقے میں سنیچر کی صبح  آگ لگنے سے لگ بھگ 60 جھگیاں متاثر ہوئی ہیں اور 30 ​​جل کر خاکستر ہو گئیں۔ (فوٹوبہ شکریہ: اے این آئی)

شمال-مشرقی دہلی کی جھگیوں میں آگ لگنے سے کم از کم سات افراد ہلاک

شمال-مشرقی دہلی کےگوکل پوری علاقے میں سنیچر کی صبح آگ لگنے کی جانکاری سامنے آئی۔ ایک اہلکار نے بتایا کہ سات جلی ہوئی لاشیں برآمد کی گئی ہیں، لگ بھگ 60 جھگیوں کو نقصان پہنچا ہے اور 30 ​​آگ میں جل کر راکھ ہو گئی ہیں۔

عام آدمی پارٹی کے وزیر اعلیٰ کے امیدوار بھگونت مان۔ (فوٹوبہ شکریہ: ٹوئٹر)

پنجاب اسمبلی انتخاب: دہلی سے باہر عام آدمی پارٹی کی تاریخ ساز کامیابی

عام آدمی پارٹی پنجاب کی 117 اسمبلی سیٹوں میں سے 92 سیٹیں جیت کر سب سے بڑی پارٹی بن کر ابھری۔ ان میں سے 18 سیٹوں پر کانگریس نے کامیابی حاصل کی ہے۔ اکالی دل کو 3 جبکہ بی جے پی کو 2 سیٹیں ملی ہیں۔ وزیر اعلیٰ چرن جیت سنگھ چنی کو دونوں سیٹوں پر شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

عآپ لیڈر اروند کیجریوال اور منیش سسودیا دہلی واقع پارٹی ہیڈکوارٹر میں۔ (فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر)

اروند کیجریوال نے کہا –دہلی میں انقلاب ہوا، پنجاب میں ہوا اور اب پورے ملک میں پہنچے گا

گزشتہ دنوں عام آدمی پارٹی کے سابق رہنما کمار وشواس نے الزام لگایا تھا کہ اروند کیجریوال ریاست کے وزیر اعلیٰ بننے کے لیے پنجاب میں علیحدگی پسندوں کی حمایت لینے کے لیے تیار ہیں۔ اس الزام کا حوالہ دیتے ہوئے کیجریوال نے کہا کہ اس مینڈیٹ سے عوام نے صاف کر دیا ہے کہ کیجریوال ‘دہشت گرد’ نہیں، بلکہ ملک کا سچاسپوت اور محب وطن ہے۔

یوگی آدتیہ ناتھ۔ (فوٹوبہ شکریہ: فیس بک/@CMO UP)

یوپی: سی اے اے مظاہرین کے خلاف وصولی کے نوٹس واپس لینے کے بعد حکومت کا یو ٹرن، پھر بھیجے نوٹس

دسمبر 2019 میں سی اے اے مخالف مظاہرین کواتر پردیش حکومت نے وصولی کے نوٹس جاری کیے تھے، اس سلسلے میں سپریم کورٹ نے گزشتہ ماہ اس کی سرزنش کی تو نوٹس واپس لے لیے گئے تھے، لیکن اب از سر نو دوبارہ یہ نوٹس کلیم ٹریبونل کےتوسط […]

(علامتی تصویر: پی ٹی آئی)

لاک ڈاؤن میں شہری جھگیوں کی 67 فیصد لڑکیاں آن لائن کلاسز میں شرکت نہیں کر سکیں: رپورٹ

دہلی، مہاراشٹر، بہار اور تلنگانہ کی شہری جھگیوں میں گزشتہ سال فروری میں ‘سیو دی چلڈرن’ نامی غیر سرکاری تنظیم کی جانب سے کیے گئے ایک سروے کے مطابق، کورونا کی وجہ سے 2020 میں لگائے گئے لاک ڈاؤن کے دوران 67 فیصد لڑکیاں آن لائن کلاسز میں شرکت نہیں کر سکیں۔اس سروے میں یہ بھی پتہ چلا ہے کہ 10 سے 18 سال کی عمر کے بیچ کی68 فیصد لڑکیوں کو ان ریاستوں میں صحت اور غذائیت کی سہولیات حاصل کرنے میں چیلنجز کا سامنا کرنا پڑا۔

یوگی آدتیہ ناتھ۔ (تصویربہ شکریہ : فیس بک)

یوپی: یوگی حکومت نے اینٹی-سی اے اے مظاہرین کے خلاف جاری 274 وصولی نوٹس واپس لیے

دسمبر 2019 میں سی اے اے مخالف مظاہرین کو جاری کیے گئے وصولی نوٹس پر 11 فروری کو سپریم کورٹ نے اتر پردیش حکومت کی سرزنش کی تھی، جس کے بعد یہ نوٹس واپس لیے گئے ہیں۔ حکومت نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ وہ مظاہرین سے وصول کیے گئے کروڑوں روپے واپس کرے گی۔

(علامتی فوٹو: رائٹرس)

دہلی: 87 سالہ بزرگ خاتون سے ریپ کے الزام میں صفائی اہلکار گرفتار

الزام ہے کہ دہلی کے تلک نگر کی ایک 87 سالہ خاتون جو بستر سے اٹھنے سے بھی قاصر ہیں ،ان کے ساتھ ایک شخص نے مارپیٹ کی اور ریپ کیا۔ اہل خانہ کا الزام تھا کہ پولیس نے اس معاملے میں کارروائی کرنے میں تاخیر کی اور ان کی شکایت درج نہیں کی۔ تاہم حکام نے اس الزام کی تردید کی ہے۔

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

سی اے اے مظاہرین کے خلاف وصولی نوٹس واپس لے یوپی حکومت یا ہم انہیں رد کر دیں گے: عدالت

سپریم کورٹ نے دسمبر 2019 میں سی اے اے کے خلاف احتجاج کرنے والوں کو وصولی نوٹس بھیجے جانے پر اتر پردیش حکومت کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ یہ کارروائی سپریم کورٹ کی جانب سے طے کیے گئے قانون کے خلاف ہے اور اس کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

اتر پردیش کے اناؤ میں کووڈ 19 کے بڑھتے معاملوں کے بیچ گنگا کنارے ریت میں دفن لاشیں ۔ (فوٹو: پی ٹی آئی)

کووڈ کی دوسری لہر کے دوران گنگا میں پھینکی گئی لاشوں کا کوئی ڈیٹا نہیں: مرکزی حکومت

جل شکتی کی وزارت نے راجیہ سبھا کو بتایا کہ گنگا ندی میں پھینکے گئے ممکنہ کووڈ لاشوں کی تعداد کے بارے میں کوئی معلومات دستیاب نہیں ہے۔ جل شکتی کے وزیر مملکت نے کہا کہ نیشنل مشن فار کلین گنگا اور ان کی وزارت نے اس سلسلے میں ریاستی حکومتوں سے رپورٹ طلب کی ہے۔

بجٹ اجلاس کے دوران ایوان میں نریندر مودی۔ (تصویر: اسکرین گریب/سنسد ٹی وی)

مودی بولے-اپوزیشن نے مزدوروں کو واپس بھیج کر کورونا پھیلایا، اپوزیشن نے کہا-انتخابی فائدے کے لیے جھوٹ بول رہے ہیں مودی

وزیر اعظم نریندر مودی نے سوموار کو پارلیامنٹ میں خطاب کرتے ہوئے مہاراشٹراور دہلی حکومتوں کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ لاک ڈاؤن کے دوران انہوں نے مزدوروں کو لوٹنے کے لیے اکسایا تھا، جس کی وجہ سے کورونا کا انفیکشن پھیلا۔

2401 HHK.00_36_01_17.Still017

اروند کیجریوال سے معاوضے کی فریاد کر رہے ہیں دہلی کے کسان

ویڈیو: گزشتہ سال 20 اکتوبر کو وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے دہلی کے کسانوں سے وعدہ کیا تھا کہ اگر ان کی کھیتی کی زمین برباد ہو جاتی ہے تو وہ انہیں 50000 روپے فی ہیکٹر کی شرح سے معاوضہ دیں گے۔ مہینوں بعد بھی اس رپورٹ کی اشاعت تک کسانوں کو معاوضہ نہیں ملا ہے۔

(علامتی تصویر، فوٹو: رائٹرس)

کووڈ: تین صوبوں میں سرکاری اعداد و شمار سے 3.5 لاکھ زیادہ موتیں، معاوضہ پانا ٹیڑھی کھیر

خصوصی رپورٹ: جنوری کے اوائل تک راجستھان، جھارکھنڈ اور آندھرا پردیش میں کووڈ-19 سے ہوئی اضافی موت حکومت کی گنتی سے 12 گنا زیادہ تھی۔ قابل ذکر ہے کہ غیر مرتب ریکارڈ اور لال فیتہ شاہی کی وجہ سے ہزاروں خاندان معاوضے سے محروم ہو سکتے ہیں۔

 (فوٹو: پی ٹی آئی)

گجرات: سرکاری اعداد و شمار میں کووڈ سے 10 ہزار موت، معاوضے کے لیے 90 ہزار درخواستیں

گجرات حکومت نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ اس نے کورونا متاثرین کے ذریعے معاوضے سےمتعلق 68370 دعووں کو منظوری دی ہے، حالانکہ اپنے سرکاری اعداد و شمار میں حکومت نے کووڈ 19 سے ہوئی موتوں کی تعداد 10094 ہی بتائی ہے۔

مئی2021 میں اتر پردیش کے زیور کے میولا گوپال گڑھ گاؤں میں اپنی بیمار ماں کے ساتھ دینیش کمار۔ (فوٹو: رائٹرس)

اتر پردیش حکومت کا دعویٰ-دوسری لہر کے دوران آکسیجن کی کمی سے کسی کی موت نہیں ہوئی

مرکز کی مودی حکومت نے گزشتہ ماہ جولائی میں پارلیامنٹ کو بتایا تھا کہ ریاستی حکومتوں اور یونین ٹریٹری نے بالخصوص آکسیجن کی کمی کی سے کسی بھی موت کی اطلاع نہیں دی ہے۔حالاں کہ ایک ماہ بعد اگست میں پہلی بار مرکز نے اعتراف کیا تھاکہ آکسیجن کی کمی کے باعث کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی موت ہوئی۔

1312 UPSC Protest.00_00_02_11.Still001

جنتر منتر پر ہڑتال پر بیٹھے یو پی ایس سی کے شرکاء

ویڈیو: کورونا وائرس کی وبا نے ملک کے ہر طبقے کو متاثر کیا ہے۔مقابلہ جاتی امتحانات میں حصہ لینے والے بھی اس سے اچھوتے نہیں ہیں۔ انہی میں سے ایک دہلی کے جنتر منتر پر احتجاج کر رہے ہیں اور حکومت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ امتحان میں شرکت کا ایک اور موقع دیا جائے۔ ان کا کہنا ہے کہ کورونا کی وجہ سے وہ امتحان کی تیاری نہیں کر سکے اور انہیں حکومت سے انصاف ملنا چاہیے۔

photo_2021-12-07_21-13-27

مدھیہ پردیش میں مشنری اسکول پر بھگوا غنڈوں کا حملہ: نشانے پر عیسائی کیوں؟

ویڈیو: مدھیہ پردیش کے ودیشا ضلع کے گنج باسودا میں سینٹ جوزف ہائی اسکول میں گزشتہ چھ دسمبر کو جب 12ویں کے طلباامتحان دے رہے تھے، عین اسی وقت بجرنگ دل اور وشو ہندو پریشد کے تقریباً 300 لوگ کیمپس میں گھس آئے۔ ان لوگوں نے الزام لگایا کہ ہندو بچوں کو اسکول میں زبردستی مذہب تبدیل کرکے عیسائی بنایا جا رہا ہے۔

(علامتی تصویر، فوٹو: پی ٹی آئی)

ہریانہ: رائٹ ونگ ہجوم   نے چرچ میں داخل ہونے کی کوشش کی، پولیس نے روکا

واقعہ روہتک کا ہے، جہاں رائٹ ونگ گروپوں کے ممبروں نے مبینہ طور پر آٹھ دسمبر کو چرچ میں داخل ہونے کی کوشش کی۔ ہندوتوا ہجوم کاالزام تھا کہ چرچ مذہب تبدیل کرا رہا ہے لیکن پولیس نے بتایا کہ انہیں ابھی تک ایسی کوئی شکایت نہیں ملی ہے۔

Don`t copy text!