Holi

اتر پردیش کے سہارنپور کے آدیش(تصویر: ویڈیو گریب)

یوپی: ایک شخص کا دعویٰ – اس کی برادری کو نشانہ بناتے ہوئے توہین آمیز تبصرے کے بعد شرپسندوں نے تیزاب سے پیشانی پر ترشول کا نشان بنایا

اتر پردیش کے سہارنپور کا معاملہ۔ متاثرہ شخص نے الزام لگایا ہے کہ 18 مارچ کو ہولی کے دن شراب کا گلاس گرنے پر کچھ لوگوں نے زبردستی تیزاب سے اس کی پیشانی پر ترشول بنایا اور اس کی برادری کو نشانہ بناتے ہوئے توہین آمیز تبصرے کیے۔ حالاں کہ ،پولیس نے اسے جھوٹا معاملہ قرار دیا ہے۔

Photo : rajasthantoursindia.com

آج رنگ ہے…

کوئی بھی جشن اور تہوار مذہب سے زیادہ انسان کےعشق و محبت کے جذبے کو بیدار کرتا ہے۔ہولی بھی ایک تہوار سے زیادہ کچھ ہے اس لئے ہندومسلمان میں فرق کرنا مشکل ہوتا ہے۔

فوٹو: اے این آئی

علی گڑھ میں ہولی سے پہلے ڈھکی گئی مسجد، انتظامیہ نے کہا-امن و امان کی بحالی کے لیے ایسا کیا گیا

اتر پردیش پولیس کا کہنا ہے کہ امن و امان بنائے رکھنے کے لیے علی گڑھ کے حساس عبدالکریم چوراہا پر واقع ہلوائی یان مسجد کو شامیانےاور ترپال سے ڈھک دیا ہے، تاکہ ہولی کے دوران مسجد پر کوئی رنگ نہ پھینک دے۔

(فوٹو بشکریہ : ٹوئٹر /سنبت پاترا)

سنبت پاتراجی؛ ’سب ترے سوا کافر آخر اس کا مطلب کیا …؟‘

تو مسلمان نہیں ہے، تو مسلمان ہو ہی نہیں سکتا۔ ‘ شاید اس کو ‘ سوڈو ‘ لفظ پتہ نہیں تھا ورنہ وہ اس کا استعمال یہاں ضرور کرتا۔’تجھ کو اپنے آپ کو مسلمان بولنے میں شرم آنی چاہئے ‘، ‘ تو بال کٹاکر چوٹی رکھ لے ‘۔

Don`t copy text!