Loksabha

وزیر اعظم نریندر مودی (فوٹو : پی ٹی آئی)

وزیر اعظم نے عوام سے 60 مہینے مانگے تھے، 50 ہوابازی میں گزرا دیے!

‘ چتر ‘وزیر اعظم نے انتخاب کے لئے طےشدہ وقت سے پہلے ہی خود کو اپنی پارٹی کےانتخابی مہم کی قیادت والے لیڈر کی صورت میں بدل لیا ہے۔ سرکاری نظام اور حمایتی میڈیا کی ہمنوائی کے ذریعے عوام کو یہ یقین کرنے پر مجبور کیا جا رہا ہے کہ ان کی حکومت خوب کام کر رہی ہے۔

وی پی سنگھ (فائل فوٹو : پی ٹی آئی)

وی پی سنگھ : سیاست میں سماجی انصاف نافذ کرنے والا شخص

یوم پیدائش پر خاص : وی پی سنگھ کہا کرتے تھے کہ سماجی تبدیلی کی جو مشعل انہوں نے جلائی ہے اور اس کے اجالے میں جو آندھی اٹھی ہے، اس کا منطقی عروج تک پہنچنا ابھی باقی ہے۔ ابھی تو سیمی فائنل ہوا ہے اور ہو سکتا ہے کہ فائنل میرے بعد ہو۔ لیکن اب کوئی بھی طاقت اس کا راستہ نہیں روک پائے‌گی۔

مودی کے لندن دورے کے وقت ویدانتا  گروپ نے وہاں کے اخبار میں ان کے استقبال کے  اشتہار چھپوائے تھے (فوٹو بشکریہ : ٹوئٹر)

ویدانتا کے ذریعے ماحولیاتی اصولوں کی دھجیاں اڑانے میں مودی حکومت کا پورا تعاون رہا ہے

مودی حکومت کے ذریعے دسمبر 2014 میں ماحولیاتی قانون میں ایسی تبدیلی کی گئی، جس سے ویدانتا کے توتی کورن پروجیکٹ جیسے کچھ اسپیشل پلانٹ کو ان سے متاثر ہونے والے لوگوں کی رائے کے بغیر بنانے کی منظوری ملی۔

اسٹرلائٹ کاپر کا توتی کورن یونٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

ویدانتا اسٹرلائٹ:حکومت نے دوسرے پلانٹ کے لیے زمین کا الاٹمنٹ کیا رد

گزشتہ دنوں احتجاج کے دوران  13 لوگوں کی موت کے بعد ریاستی حکومت نے ویدانتا اسٹرلائٹ کو دی گئی زمین کا الاٹمنٹ رد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ریاست کے ڈپٹی سی ایم  نے سوموار کو پلانٹ کو ہمیشہ کے لیے بند کیے جانےکا اعلان کیا تھا۔ نئی دہلی: […]

اسٹرلائٹ کاپر کا توتی کورن یونٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

توتی کورن : تمل ناڈو حکومت نے دیا ویدانتا اسٹرلائٹ پلانٹ کو ہمیشہ کے لیے بند کرنے کا حکم

ریاست کے ڈپٹی سی ایم پنیر سیلوم نے سوموار کو جانکاری دیتے ہوئے کہا،’ آج لوگوں کی سب سے بڑی مانگ ہے کہ پلانٹ کو ہمیشہ کے لیے بند کر دیا جائے۔اس کو دھیان میں رکھتے ہوئے پلانٹ کو بند کر دیا گیا ہے۔

فوٹو : فیس بک

مودی کتنے ہی خواب دیکھ لیں، اسکیموں کا زمین پر اترنا ضروری:بی جے پی رکن پارلیامنٹ

مدھیہ پردیش کے مُرینا سے رکن پارلیامنٹ انوپ مشرا نے پارلیامنٹ میں کہا کہ مرکز کی مودی حکومت کی اسکیموں کی عمل آوری پر نگرانی کی کمی ہے۔ نگرانی ضروری ہے تبھی عوام کو ان کا فائدہ ملے‌گا۔