Modi Govt

HBB 21 June.00_27_17_15.Still005

ویڈیو: ایک ملک ایک انتخاب؛ کیا آئینی ڈھانچے پر حملہ ہے؟

ویڈیو: ہم بھی بھارت کے اس ایپی سوڈ میں ایک ملک ایک انتخاب کے مدعے پر الیکشن کمیشن کے سابق قانونی صلاح کار ایس کے میندی رتا، سوراج انڈیا پارٹی کے قومی صدر یوگیندر یادو اور دی وائر کے پالیٹیکل ایڈیٹر اجئے آشیرواد سے عارفہ خانم شیروانی کی بات چیت۔

آر بی آئی کے ڈپٹی گورنر ویرل آچاریہ (فوٹو : رائٹرس)

آر بی آئی کے ڈپٹی گورنر ویرل آچاریہ نے استعفیٰ دیا

ریزرو بینک آف انڈیا کے ڈپٹی گورنر ویرل آچاریہ نے اپنی مدت کار پوری ہونے سے 6 مہینے پہلے ہی استعفیٰ دے دیا ہے۔ اس سے پہلے دسمبر 2018 میں آر بی آئی کے گورنر ارجت پٹیل نے حکومت کے ساتھ اختلافات کی وجہ سے اپنی مدت کار پوری ہونے سے 9 مہینے پہلے استعفیٰ دے دیا تھا۔

anupamkher

رویش کا بلاگ: انوپم کھیر کو صحیح غلط کم ہندو اور مسلمان زیادہ دکھتا ہے

انوپم کھیر جیسے کچھ فنکار تختی لےکر میڈیا کو مدعا دیتے ہیں۔ ان کی تصویر اسکرین پر دکھاکر گھر بیٹھے لوگوں کے ذہن میں زہر بھرا جاتا ہے۔ اس عمل میں مسلمان کو دوئم درجے کا شہری بنایا جاتا ہے۔ لیکن اس سے پہلے جن کے ذہن میں یہ کچرا بھرا جاتا ہے ان کو دوئم درجے کا شہری بنایا جا چکا ہوتا ہے۔ اس لئے وسیع ہندو مفاد میں یہ ضروری ہے کہ تمام نیوز چینل دیکھنا بند کر دیں۔ کیونکہ چینلوں میں مذہب کے نام پر ہندوؤں سے جھوٹ بولا جا رہا ہے۔

فوٹو: رائٹرس

میڈیا بول:اپوزیشن کا ٹی وی  چینلوں کا بائیکاٹ کتنا جائز

ویڈیو: کانگریس نے اپنے پارٹی ترجمانوں سے آئندہ ایک مہینے تک ٹی وی چینلوں سے دور رہنے کو کہا ہے۔ میڈیا بول کے اس ایپی سوڈ میں کانگریس کے اس قدم پر پروفیسر اپوروانند، سینئر صحافی مکیش کمار اور قلمکار اور صحافی انل یادو سے ارملیش کی بات چیت۔

(فوٹو : رائٹرس)

پانچ سال کی سب سے نچلی سطح پر پہنچی جی ڈی پی شرح نمو، چین سے پچھڑا ہندوستان

مالی سال 2018سے19 کی چوتھی سہ ماہی میں جی ڈی پی شرح نمو 5.8 فیصد رہی جو چین کی جنوری-مارچ 2019 کو ختم سہ ماہی میں 6.4 فیصد اضافہ کے مقابلے کم ہے۔ قومی آمدنی پر سی ایس او کے اعداد و شمار کے مطابق مالی سال 2018سے19 میں پورے سال کے دوران جی ڈی پی کی شرح نمو بھی گھٹ‌کر پانچ سال کے کم از کم سطح 6.8 فیصد رہی ہے۔

علامتی تصویر / فوٹو : پی ٹی آئی

مودی حکومت کی واپسی: مسلمان فکرمند ہیں، خوفزدہ نہیں…

ہمارے لبرل صحافی اور روشن خیال دانشوران فاشزم اورکمیونلزم کے خلاف اپنی لڑائی کو مسلمانوں کے کندھوں پر رکھ کر کیوں لڑنا چا ہتے ہیں؟ ڈر کو مسلمانوں کے ساتھ کیوں چپکا دینا چاہتے ہے؟ جہاں تک مسلمانوں کے ڈر جانے کا سوال ہے تو یہ محض ایک فیک نیوز ہے۔ متھ ہے۔ اور کچھ نہیں۔ مسلمان فکر مند ضرور ہیں، خوف زدہ با لکل نہیں۔تقسیم کے بعد جن مسلمانوں نے پاکستان کو ٹھکرا دیا کم از کم ان کے بارے میں تو ایسا ہر گز نہیں کہا جا سکتا۔

(فوٹو : پی ٹی آئی)

لوک سبھا میں5 فیصد سے کم ہوئی مسلمانوں کی نمائندگی، بی جے پی سے ایک بھی مسلم ایم پی نہیں

لوک سبھا انتخاب میں جیت درج کرنے والی پارٹیوں میں سے بی جے پی واحد ایسی پارٹی ہے جس کی طرف سے ایک بھی مسلم ایم پی لوک سبھا نہیں پہنچا ہے۔ 542 سیٹوں پر ہوئے لوک سبھا انتخاب میں بی جے پی نے 303 سیٹوں پرجیت درج کی ہے۔

وزیر خزانہ ارون جیٹلی(فوٹو : پی ٹی آئی)

پرائیویسی کا حوالہ دےکر سوئٹزرلینڈ سے ملی بلیک منی کی جانکاری عام کرنے سے مرکز کا انکار

آر ٹی آئی کے تحت سوئٹزرلینڈ سے بلیک منی کے معاملوں میں ملی جانکاری کے بارے میں تفصیل مانگی گئی تھی جس میں کمپنیوں اور لوگوں کے نام شامل ہیں۔ اس کے علاوہ انفارمیشن کی بنیاد پر کی گئی کارروائی کے بارے میں بھی جانکاری مانگی گئی تھی۔

علامتی تصویر / فوٹو : پی ٹی آئی

کیا اب مسلمان سیاسی پارٹیوں کی مجبوری نہیں ہیں؟

کسی بھی پارٹی نے اپنے انتخابی منشور میں بھولے سے بھی مسلمانوں کا ذکر نہیں کیا۔کانگریس نے تو انتخابی منشور کی رسم اجراء کی تقریب میں غلام نبی آزاد اور احمد پٹیل جیسے قدآور لیڈروں کو بھی دوررکھا۔ بہار کی راشٹریہ جنتا دل ،جس کی پوری سیاست مسلمانوں اوریادو پر منحصر ہے اس نے بھی اپنے منشور میں ایک جگہ بھی مسلم لفظ نہیں لکھا۔

علامتی تصویر،فوٹو: رائٹرس

رام چندر گہا کا کالم : کیا ہندوستان ایک ہندو پاکستان بننے کی راہ پر گامزن ہے؟

2019 میں بی جے پی کی مہم خصوصی طور پر ہندو اکثریت کے لیے ہے۔ پارٹی ان کے خوف اور عدم تحفظ کے احساسات کو بنیاد بنا کر ووٹ مانگ رہی ہے۔ اسی لیے امت شاہ مسلمانوں کو ‘دیمک’ بتا چکے ہیں، آدتیہ ناتھ بجرنگ بلی کو علی کے بالمقابل کھڑا کر چکے ہیں اور مودی یہ الزام لگا چکے ہیں کہ مغربی بنگال میں ہندو ‘جئے شری رام‘ کا نعرہ بھی بلند نہیں کر سکتے۔

وزیر اعظم نریندر مودی اور سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ (فوٹو: پی ٹی آئی)

مودی حکومت کو باہر کا راستہ دکھایا جانا چاہیے: منموہن سنگھ

سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کا کہنا ہے کہ 2014 میں مودی اچھے دن کے وعدے کے ساتھ اقتدار میں آئے تھے۔ ان کے پانچ سال کی مدت ہندوستان کے نوجوانوں، کسانوں، کاروباریوں اور ہر جمہوری‎ ادارہ کے لئے سب سے زیادہ خوفناک اور تباہ کن رہا ہے۔

نوٹ بندی کے دوران لائی گئی پردھان منتری غریب کلیان یوجنا کے پیسے کا کیا ہوا، حکومت کو نہیں پتہ

نوٹ بندی کے دوران لائی گئی پردھان منتری غریب کلیان یوجنا کے پیسے کا کیا ہوا، حکومت کو نہیں پتہ

پردھان منتری غریب کلیان یوجنا کے تحت فرد کو غیراعلانیہ آمدنی کا 30 فیصدی کی شرح سے ٹیکس، ٹیکس کی رقم کا 33 فیصدی سر چارج اور غیراعلانیہ آمدنی کا 10 فیصدی جرمانے کے طور پر دینا تھا۔ اس اسکیم کو دسمبر 2016 سے 10 مئی 2017 تک کے لئے لایا گیا تھا

رافیل طیارہ(فائل فوٹو : پی ٹی آئی)

رافیل سودے میں پی ایم او کی نگرانی کو دخل کے طور پر نہیں دیکھا جاسکتا: مرکزی حکومت

رافیل سودے کو لے کر دائر عرضی کے تناظر میں سرکار نے سپریم کورٹ میں ایک نیا حلف نامہ دائر کرکے کہا ہے کہ غیر مصدقہ میڈیا رپورٹس سے سودے پر دوبار ہ غور کرنے کی بنیاد فراہم نہیں ہوتی۔

(فوٹو : رائٹرس)

اس انتخاب میں مسلمانوں کے لئے کیا ہے؟

آج ہندوستانی سیاست ایک ایسے دور میں ہے جب کوئی بھی سیاسی پارٹی مسلم کمیونٹی کی بات نہیں کرنا چاہتی۔ وہ سیاسی طور پر اچھوت بنا دئے گئے ہیں۔ اب ان کا استعمال اکثریتی آبادی کو ووٹ بینک میں تبدیل کرنے کے لئے کیا جا رہا ہے۔

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

کشمیر: قومی شاہراہ پر شہریوں کی آمدورفت پر پابندی، عدالت نے مرکز اور ریاست سے جواب مانگا

پلواما حملے کے بعد گزشتہ 3 اپریل کو جموں و کشمیر حکومت نے لوک سبھا انتخابات کے دوران سکیورٹی فورسز کی آمد ورفت کے مدنظر ہفتے میں دو دن قومی شاہراہ نمبر 44 پر شہریوں کی آمدورفت پر پابندی لگا دی ہے۔ سپریم کورٹ میں داخل عرضی میں کہا گیا ہے کہ ایسا قدم کارگل جنگ کے وقت بھی نہیں اٹھایا گیا تھا۔

(فوٹو بہ شکریہ : وکی پیڈیا)

دوردرشن نے سی پی آئی کی انتخابی تقریر سے’ آر ایس ایس‘ لفظ ہٹانے کو کہا، پارٹی نے کیا انکار

سی پی آئی کی طرف سے کہا گیا ہے کہ دوردرشن نے تقریر سے آر ایس ایس اور فاشزم جیسے الفاظ کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی بتاتے ہوئے ہٹانے کے لئے کہا ہے۔ پارٹی نے کہا کہ مودی حکومت کے اشارے پر ایسی متعصب کارروائی ہو رہی ہے۔

فوٹو: رائٹرس

این اے پی ایس : 20 لاکھ نوجوانوں کو کرنا تھا روزگار کے لئے تیار، ہوئے صرف 2.90 لاکھ

مودی حکومت کے دعوے اور ان کی زمینی حقیقت پر اسپیشل سریز: 2016 میں مرکزی حکومت کے ذریعے شروع کی گئی اس اسکیم کا مقصد روزگار کے مواقع پیدا کرنا اور نوجوانوں کو تربیت دے کر ان کو روزگار دینا تھا۔ آر ٹی آئی سے ملی جانکاری کے مطابق 31 مارچ 2018 تک 20 لاکھ ٹرینی کو تیار کرنے کا ہدف تھا، جس میں سے صرف 2.90 لاکھ ٹرینی تیار ہوئے۔ ان میں سے بھی محض 17493 کو اس اسکیم کا فائدہ ملا۔

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

نماز کے لیے مسجدوں میں مسلم عورتوں کے داخلے کی عرضی پر مرکزی حکومت کو نوٹس

پونے کے ایک جوڑے نے عدالت میں دائر عرضی میں عورتوں کو مسجد میں نماز پڑھنے کی اجازت دینے کی گزراش کرتے ہوئے مسجد میں ان کے داخلے پر پابندی کو غیر قانونی اور غیر آئینی قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

رافیل ہوائی جہاز (فوٹو : پی ٹی آئی)

رافیل تنازعہ: سپریم کورٹ نے خفیہ دستاویز سے متعلق مرکز کے اعتراضات کو خارج کیا

درخواست گزاروں نے ریویو پیٹیشن میں ’دی ہندو‘اخبار کے ذریعے شائع رافیل ڈیل سے متعلق دستاویز پیش کئے تھے۔ اس پر اعتراض ظاہر کرتے ہوئے اٹارنی جنرل نے کہا کہ ایسی جانکاری کو شنوائی میں شامل نہیں کیا جا سکتا کیونکہ ان کو’خصوصی اختیارات ‘کے تحت تحفظ حاصل ہے۔

علامتی تصویر (فوٹو بہ شکریہ : ڈی ڈی نیوز)

مہیلا شکتی کیندر: 2019 تک بنانے تھے 440 مرکز، لیکن اب تک صرف 24 ہی بنے

مودی حکومت کے دعوے اور ان کی زمینی حقیقت پر اسپیشل سیریز: نومبر 2017 میں مودی حکومت نے وومین امپاورمنٹ کے لئے مہیلا شکتی کیندر نام کی ایک اسکیم شروع کی، جس کے تحت ملک کے 640 ضلعوں میں مہیلا شکتی کیندر بنائے جانے تھے۔ 2019 تک ایسے 440 مرکز بنانے کا ہدف تھا، لیکن اب تک صرف 24 مرکز ہی بنے ہیں۔ ساتھ ہی کسی بھی ریاست نے ان مراکز میں کام شروع ہونے کی رپورٹ نہیں دی ہے۔

(علامتی تصویر : رائٹرس)

نوٹ بندی والے سال میں 88 لاکھ ٹیکس دہندگان نے نہیں فائل کیا تھا انکم ٹیکس ریٹرن

سال17-2016 میں انکم ٹیکس ریٹرن داخل نہیں کرنے والوں کی تعداد16-2015 میں 8.56 لاکھ سے 10 گنابڑھ‌کر 88.04 لاکھ ہو گئی۔ ٹیکس افسروں کا ماننا ہے کہ نوٹ بندی کی وجہ سے نوکریوں میں کمی اس کی وجہ ہو سکتی ہے۔

فوٹو : پی ٹی آئی

رشوت کے معاملوں سے نپٹنے کے لیے الیکشن کمیشن کے مطالبات کو مرکز ی حکومت نے نہیں مانا

الیکشن کمیشن نے عوامی نمائندگی قانون(Representation of the People Act)، 1951 میں ترمیم کرکے دفعہ 58بی کو شامل کرنے کا مطالبہ کیا تھا، تاکہ سیاسی جماعتوں کے ذریعے رائےدہندگان کو رشوت دینے پر انتخاب کو ملتوی یا رد کیا جا سکے۔ لیکن حکومت نے اس کو خارج کر دیا۔

سپریم کورٹ/ فوٹو: پی ٹی آئی

رام کی جنم بھومی–فلم کی ریلیز پر روک لگانے سے سپریم کورٹ کا انکار

درخواست گزار نے دعویٰ کیا تھا کہ فلم کی ریلیز  ایودھیا زمینی تنازعہ میں چل رہی ثالثی کی کارروائی کو متاثر کرے گی ۔ ا س پر عدالت نے کہا ، ثالثی کی کارروائی اور فلم ریلیز کے درمیان کوئی تعلق نہیں ہے۔ نئی دہلی: سپریم کورٹ نے […]

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

رافیل ڈیل: مرکز نے سپریم کورٹ میں کہا، ریویو پیٹیشن سے قومی سلامتی کو خطرہ

وزارت دفاع کے سکریٹری سنجے مترا کے ذریعے داخل یہ حلف نامہ اس لئے اہم ہو گیا ہے کیونکہ اٹارنی جنرل کے کے وینو گوپال نے  6 مارچ کو الزام لگایا تھا کہ ریویو پیٹیشن ان دستاویزوں پر مبنی ہے جو وزارت دفاع سے چرائے گئے ہیں۔ حالانکہ […]

کرشچین مشیل، فوٹو: پی ٹی آئی

اگستا ویسٹ لینڈ: کرشچین مشیل کا دعویٰ، راکیش استھانا نے دی تھی زندگی جہنم بنانے کی دھمکی

اگستا ویسٹ لینڈ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر گھوٹالہ میں 6 کروڑ یورو کی دلالی کے ملزم برٹش نژاد مشیل نے کہا کہ میرے بغل والا قیدی چھوٹا راجن ہے۔ مجھے سمجھ نہیں آ رہا ہے کہ میں نے کیا جرم کیا ہے کہ مجھے ان لوگوں کے ساتھ رکھا جا رہا ہے جنہوں نے کئی قتل کئے ہیں۔

فائل فوٹو : رائٹرس

ریزروبینک نے کہا،پیٹرول پمپ وغیرہ پر استعمال ہوئے 500اور1000 روپے کے پرانے نوٹوں کا اعداد و شمار نہیں

نوٹ بندی کے بعد پیٹرول پمپ، سرکاری ہاسپٹل، ریل، عوامی نقل وحمل اور بجلی-پانی وغیرہ کے بل کی ادائیگی کے لئے پانچ سو اور ہزار روپے کے پرانے نوٹ دینے کی چھوٹ دی گئی تھی۔ ایک آر ٹی آئی کے جواب میں آر بی آئی نے بتایا ہے کہ اس طرح جمع ہوئے نوٹوں کا کوئی اعداد و شمار نہیں ہے۔

رافیل ہوائی جہاز (فوٹو : پی ٹی آئی)

ویڈیو: رافیل پر صحافیوں کو دھمکی، کیا چھپا رہی ہے مودی حکومت؟

ہم بھی بھارت کے اس ایپی سوڈ میں سنیےرافیل معاملے کی شنوائی کے دوران مرکزی حکومت کے ذریعے دی ہندو کی رپورٹ کو چوری کے دستاویز کے حوالے سے چھاپنے کے الزام اور اخبار پر آفیشیل سیکریٹس ایکٹ کے تحت کارروائی کی بات پر دی وائر کے بانی مدیر ایم کے وینو اور وکیل صارم نوید سے عارفہ خانم شیروانی کی بات چیت۔

فوٹو: دی وائر

حکومت کا میڈیا کے خلاف آفیشیل سیکریٹس ایکٹ کے استعمال کی کوشش قابل مذمت : میڈیا ایسو سی ایشن

رافیل معاملے کی سماعت کے دوران مرکزی حکومت کے ذریعے دی ہندو کی رپورٹ کو چوری کے دستاویز کے حوالے سے چھاپنے کے الزام اور اخبار پر کارروائی کی بات کہنے کی ایڈیٹرس گلڈ سمیت مختلف پریس تنظیموں نے تنقید کی ہے۔

وزیر اعظم نریندر مودی اور رافیل(فوٹو : پی ٹی آئی)

رویش کا بلاگ: وزیر اعظم چاہیں تو پاتال میں جا کر رافیل کی فائل تلاش کر سکتے ہیں

سیکریٹ آؤٹ ہونے پر ہی گھوٹالہ آؤٹ ہوتا ہے۔ گھوٹالہ آؤٹ ہونے پر فائل کو سیکریٹ بتانے کا فارمولہ پہلی بار آؤٹ ہوا ہے۔ وزیر اعظم کو ہر بات میں خود کو چوکیدار نہیں کہنا چاہیے۔ خود کو چوکیدار اور پردھان سیوک کہتےکہتے بھول گئے ہیں کہ وہ ہندوستان کے وزیر اعظم ہیں، اس لئے جاگتے رہو، جاگتے رہو بول‌کر کچھ بھی بول جاتے ہیں۔

N._Ram_Photo_Credit_The_Hindu

رافیل ڈیل: دستاویز’چوری‘کے الزام کے بعد دی ہندو کے چیئر مین نے کہا-اپنے ذرائع کے تحفظ  کے لئے پرعزم ہوں

د ی ہندو کے چیئر مین اور سینئر صحافی این رام نے کہا کہ رافیل ڈیل سے جڑی جانکاریاں دباکر یا چھپاکر رکھی گئی تھیں جس کی وجہ سے ہی ان سے متعلق دستاویز مفاد عامہ کے لئے شائع کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ آپ اس کو چوری ہو گئے دستاویز کہہ سکتے ہیں لیکن ہم اس کو لےکر فکرمند نہیں ہیں۔

رافیل (فوٹو : رائٹرس)

رافیل ڈیل: مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ کو بتایا، وزارت دفاع سے چوری ہوئے ڈیل  سے متعلق دستاویز

رافیل ڈیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف دائر ریویو پیٹیشن پر سماعت کے دوران درخواست گزار پرشانت بھوشن کے دی ہندو کی خبر کا حوالہ دینے پر اٹارنی جنرل نے اس کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ یہ مضمون چوری کئے گئے خفیہ دستاویزوں پر مبنی ہے، جو پرائیویسی کے قانون کی خلاف ورزی ہے۔