national security

متنازعہ کمرے کے قریب پولیس اہلکار۔ (تمام تصویریں: رابعہ شیریں)

کرناٹک: ہندوتوا تنظیم جن جاگرتی سمیتی  نے اسٹیشن پر بنے نماز ہال کو ’قومی سلامتی کے لیے خطرہ‘ قرار دیا

بنگلورو واقع کے ایس آر ریلوے اسٹیشن پر قلیوں کےریسٹ روم میں طویل عرصے سےمسلمان کارکن نماز پڑھ رہے تھے۔ اب ہندو جن جاگرتی سمیتی نے اس پر اعتراض کرتے ہوئے اس کو ‘سازش کا حصہ’ قرار دیا ہے۔

cover-image@2x (1)

ٹیک فاگ ایپ کے سلسلے میں پارلیامانی کمیٹی نے وزارت داخلہ سے جواب طلب کیا

دی وائر نے ایک تفتیش میں خفیہ ایپ ٹیک فاگ کا انکشاف کیاہے، جس کےاستعمال سےسوشل میڈیاٹرینڈ میں ہیر پھیر اور وہاٹس ایپ فشنگ کیے جانے کی بات سامنے آئی ہے۔ داخلہ امور کی پارلیامانی کمیٹی کے چیئرمین آنند شرما نے وزارت داخلہ سےاس سلسلے میں متعلقہ وزارتوں کے ساتھ تال میل قائم کرکے 20 جنوری تک کمیٹی کے سامنے جواب پیش کرنے کو کہا ہے۔

(علامتی تصویر: رائٹرس)

رویش کمار کا بلاگ: ٹیک فاگ پروپیگنڈہ محض نہیں، قتل عام کو اکسانے کا ٹول ہے

آئی ٹی سیل کی پراسرار دنیا میں نیشن بلڈنگ کے نام پر کتنے نوجوانوں کو مجرم بنایا جا رہا ہے اس سےچوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔ ٹیک فاگ سرکار کا ٹول کٹ- بی جے پی کا، بی جے پی کے ذریعہ بی جے پی کے کام آنے والا ٹول کٹ ہے۔اس سے اکثریتی معاشرہ نے خود کو نہ بچایا تو گھر گھر میں ہتھیارےپیدا ہو جائیں گے۔

ترنمول کانگریس کے ایم پی ڈیرک اوبرائن۔ (فوٹو: پی ٹی آئی)

ٹیک-فاگ ایپ قومی سلامتی کو خطرے میں ڈال سکتا ہے: ڈیرک اوبرائن

دی وائر نے دو سالوں کی تفتیش کے بعدذرائع کی مدد سےایک خفیہ ایپ ٹیک-فاگ کا انکشاف کیا،جس کا استعمال مقتدرہ جماعت سے وابستہ افراد مصنوعی طور پر پارٹی کی مقبولیت کوبڑھانے، اس کے ناقدین کو ہراساں کرنے اور بڑے سوشل میڈیا پلیٹ فارموں پر بڑے پیمانے پرعوامی رائے کو گمراہ کرنے کے لیے کرتے ہیں۔

cover-image@2x (1)

ٹیک-فاگ: بی جے پی کا مددگار ایپ، جس نے سائبر آرمی کو نفرت پھیلانے اور ٹرینڈس سے چھیڑ چھاڑ کرنے کی طاقت دی ہے

دی وائر نے ان دعووں کی تفتیش کی ہے، جن میں کہاگیاہے کہ آن لائن کارکنوں کےذریعے اِنکرپٹیڈمیسجنگ پلیٹ فارموں کو ہائی جیک کرنے اور گھریلو صارفین کے بیچ رائٹ ونگ پروپیگنڈے کوفروغ دینے کے لیے ایک انتہائی نفیس ایپ ٹیک- فاگ کا استعمال کیا جا رہا ہے ۔

منیش تیواری اور سلمان خورشید کی کتابیں۔ (فوٹوبہ شکریہ: پی ٹی آئی/پی آئی بی/روپا اور پینگوئن پبلی کیشن)

کانگریس کامسئلہ سلمان خورشید یا منیش تیواری کی کتابیں نہیں اندرونی جمہوریت ہے

کوئی نہیں کہہ سکتا کہ لیڈر کےطور پرمنیش تیواری یا سلمان خورشید کےعزائم نہیں ہیں یا اس کو پورا کرنے کے لیے وہ کتاب لکھنے اور اس کے سوا جو کرتے ہیں، اس کی نکتہ چینی نہیں کی جانی چاہیے ۔ لیکن اس سے بڑا سوال یہ ہے کہ کیا کانگریس کےرہنماؤں کےطور پر انہیں اپنےخیالات کوپیش کرنے کی اتنی بھی آزادی نہیں ہے کہ وہ رائٹر کےطورپر پارٹی لائن سے ذرا سا بھی الگ جا سکیں؟

(السٹریشن: دی وائر)

ڈوبھال اور راوت کے حالیہ بیانات میں ملک  کو پولیس اسٹیٹ میں تبدیل کرنے کا منصوبہ نظر آتا ہے

گزشتہ ہفتے نریندر مودی حکومت کےدو ذمہ دارافرادقومی سلامتی مشیر اجیت ڈوبھال اور چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت نے وسیع تر قومی مفاد کے نام پر قانون کی حکمرانی کی خلاف ورزی کو جائز ٹھہرانے کے لیے نئی تھیوری کی تشکیل کی کوشش کی ہے۔

علامتی فوٹو:پی ٹی آئی

ہندوتوا کو سلامتی کے لیے خطرہ نہ مان کر ہم کس کو بچا رہے ہیں؟

ہندوتواکو ایک قومی خطرہ نہیں بلکہ مقامی یا انتخابی سیاست کا حصہ سمجھا جاتا ہے۔سادہ لفظوں میں ہمارے یہاں خطرے  کا مطلب؛ ایٹم بم،دشمن کے جنگی طیارےاور لمبی لمبی داڑھیوں والے آدمی تھے۔ دوسروں کو پیٹ کر جبراً جئےشری رام  بلوانے والے لوگ محض شر پسند نظر آتے […]

موہن بھاگوت(فوٹو : پی ٹی آئی)

سی اے اے، این آرسی کا ہندو مسلمان بٹوارے سے کوئی لینا دینا نہیں: موہن بھاگوت

آسام میں ایک کتاب کے اجرا کے دوران آر ایس ایس چیف موہن بھاگوت نے بدھ کو کہا کہ آزادی کے بعد ملک  کے پہلےوزیر اعظم  نے کہا تھا کہ اقلیتوں کا دھیان رکھا جائےگا اور اب تک ایسا ہی کیا گیا ہے۔ ہم ایسا کرنا جاری رکھیں […]

(علامتی تصویر، فوٹو: پی ٹی آئی)

سی اے اے: غیر مسلم پناہ گزینوں سے شہریت کی درخواست طلب کرنے پر مسلم لیگ نے عدالت کا رخ کیا

گزشتہ28 مئی کو مرکزی حکومت نے 13اضلاع میں رہ رہے افغانستان، بنگلہ دیش اور پاکستان کے غیرمسلموں سے ہندوستانی شہریت کے لیےدرخواست طلب کرنے سےمتعلق نوٹیفکیشن جاری کیا ہے۔ انڈین یونین مسلم لیگ کی جانب سے مانگ کی گئی ہے کہ جب تک سی اے اے کے آئینی جواز کوچیلنج دینے والی عرضی عدالت میں زیرالتواہے تب تک مرکز کو شہریت سے متعلق نئے فیصلے پر روک لگانے کی ہدایت دی جائے۔

(علامتی تصویر، فوٹو: پی ٹی آئی)

سی اے اے کے اصول و ضوابط ابھی طے نہیں، لیکن مرکز نے غیر مسلم پناہ گزینوں کی شہریت کا راستہ کھولا

مرکز کی مودی حکومت نے ایک نوٹیفکیشن جاری کرکے گجرات، چھتیس گڑھ، راجستھان، ہریانہ اور پنجاب کے 13اضلاع میں رہ رہے افغانستان، بنگلہ دیش اور پاکستان کے ہندو، سکھ، بودھ، جین، پارسی اور عیسائی کمیونٹی کے لوگوں کو ہندوستانی شہری کے طور پررجسٹر کرنے کی ہدایت دی ہے۔

سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس گوپال گوڑا۔ (فوٹو: Youtube/Precision Pro Events)

سی اے اے مذہبی بنیاد پر لوگوں میں امتیاز کرتا ہے، یہ غیرآئینی ہے: سابق سپریم کورٹ جج

سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس وی گوپال گوڑا نے ایک پروگرام میں کہا کہ اس وقت ہندوستانی شہری شدید بحران سے گزر رہے ہیں اور قانون کی حکومت کو داؤ پر لگا دیا گیا ہے۔ شہریت کا مسئلہ خوفناک ہو گیا ہے۔

آسام کے وزیر ہمنتا بسوا شرما (فوٹوبہ شکریہ: فیس بک/@himantabiswasarma)

سی اے اے پر ہمنتا بسوا شرما نے خاموشی توڑی، کہا-آسام میں قانون کے نفاذ کے لیےبی جے پی پر عزم

شہریت قانون کی مخالفت کا مرکز رہےآسام میں27 مارچ سے تین مرحلوں میں انتخابات ہیں اور سی اے اےمخالف مظاہروں سےابھرنےوالی جماعتوں کے ساتھ اپوزیشن پارٹیوں کا کہنا ہے کہ وہ کسی بھی قیمت پر ریاست میں سی اے اے کو نافذنہیں ہونے دیں گے۔

کانگریس رہنما گورو گگوئی(فوٹو: پی ٹی آئی)

اقتدار ملنے پر سپریم کورٹ میں سی اے اے سے متعلق معاملوں میں آسام حکومت بنے گی فریق: گگوئی

کانگریس رہنما گورو گگوئی نے شہریت قانون (سی اے اے)کو ووٹوں کے لیے سماج کو تقسیم کرنے والا بی جے پی کا سیاسی ہتھیار بتایا ہے۔ گگوئی نے کہا کہ اسمبلی انتخاب میں آسام کی پہچان اور ترقی دونوں داؤ پر ہیں۔ آسام میں پارٹی کے اقتدار میں آنے پرسی اے اے کو نافذ نہیں کرنے دیا جائےگا۔

آسام کے وزیراعلیٰ سربانند سونووال(فوٹو بشکریہ:فیس بک)

آسام اسمبلی انتخابات میں سی اے اے کوئی مدعا نہیں بنے گا: سربانند سونو وال

آسام اسمبلی انتخابات سے پہلے ریاست میں مقتدرہ بی جے پی پر شہریت قانون پر بولنے سے بچنے کا الزام لگ رہا ہے، جبکہ سی اے اے مخالف تحریکوں سے نکلی سیاسی پارٹیوں کے ساتھ اپوزیشن پارٹیاں اس کو بڑا مدعا بنانے میں لگی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ کسی بھی قیمت پر سی اے اے نافذ نہیں ہونے دیں گی۔

law-1063249_960_720

گجرات: سیمی کا ممبر ہو نے کے الزام میں یو اے پی اے کے تحت گرفتار 122 افرادکو 20 سال بعد عدالت نے بری کیا

گجرات میں سورت کی ایک عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ استغاثہ یہ ثابت کرنے کے لیے ٹھوس، قابل اعتماد اور تسلی بخش شواہد پیش کرنے میں ناکام رہا کہ ملزم سیمی سے وابستہ تھے اور کالعدم تنظیم کی سرگرمیوں کو رفتار دینے کے لیے جمع ہوئے تھے۔

فوٹو: پی ٹی آئی

ہندوستان کے دورے پر وزیراعظم نریندر مودی کے سامنے مذہبی آزادی کا مدعا اٹھائیں گے ڈونالڈ ٹرمپ

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے آئندہ دو روزہ ہندوستان کے دورے سے پہلے وہائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ دنیا اپنی جمہوری روایات اورمذہبی اقلیتوں کا وقار بنائے رکھنے کے لیے ہندوستان کی جانب دیکھ رہی ہے۔

(علامتی تصویر، فوٹو: پی ٹی آئی)

مذہبی آزادی پر نظر رکھنے والی امریکی ایجنسی نے کہا، ہندوستان کے لیے سی اے اے تشویش ناک

بین الاقوامی مذہبی آزادی پر نظر رکھنے والی ایجنسی یو ایس کمیشن (یو ایس سی آئی آر ایف)نے شہریت قانون کو لےکر جاری کی گئی ایک رپورٹ میں ہندو راشٹر بنانے کو لےکر بی جےپی کے کئی رہنماؤں کے بیانات کے مدنظرشدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔

فوٹو: فیس بک Himanta Biswa Sarma

شہریت قانون کے تحت شہریت پانے کے لیے مذہبی استحصال شرط نہیں: ہمنتا بسوا شرما

مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے پارلیامنٹ میں چرچہ کے دوران کہا تھا کہ شہریت ترمیم قانون کے تحت پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان سے 31 دسمبر 2014 تک ہندوستان آئے مذہبی استحصال کے شکار ہندو، جین، بودھ، پارسی، سکھ اور عیسائی کو شہریت دی جائےگی۔

اسدالدین اویسی، فوٹو:پی ٹی آئی

شہریت قانون: اویسی نے کہا اپنے گھروں پر ترنگا پھہرا کر بی جے پی کو کالے قانون کے خلاف پیغام دیں

اے آئی ایم آئی ایم چیف اسدالدین اویسی نے کہا کہ شہریت قانون صرف مسلمانوں کے لیے نہیں بلکہ سبھی ہندوستانیوں کے لیے باعث تشویش ہے۔ یہ لڑائی صرف مسلمانوں کی نہیں ہے بلکہ دلت، ایس سی، ایس ٹی کی بھی ہے اور قانون کے خلاف لگاتار جد جہد کرنا ہوگا۔

فوٹو: رائٹرس

امریکہ میں گزشتہ سال حراست میں لیے گئے تقریباً 10 ہزار ہندوستانی: رپورٹ

امریکی حکومت کی طرف سے جاری ایک رپورٹ کے مطابق،مختلف قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں نے نیشنل سکیورٹی یا پبلک سکیورٹی کے لیے خطرے کے طور پر تقریباً 10 ہزار ہندوستانیوں کی پہچان کی،ان میں سے 831 کو امریکہ سے باہر نکال دیا گیا۔

Protests in Assam opposing the Citizenship Amendment Bill. Photo: Special Arrangement

کیا شہریت بل این آر سی سے باہر ہوئے ہندوؤں کو خوش کرنے کی کوشش ہے؟

ویڈیو: گزشتہ 4 دسمبر کو مرکزی کابینہ نے تمام مخالفتوں کے باوجود شہریت ترمیم بل کو منظوری دےدی ۔ نارتھ ایسٹ کی ریاستوں بالخصوص آسام میں اس کو لے کر کافی احتجاج ہو رہا ہے۔ نارتھ ایسٹ ڈائری میں اسی موضوع پر دی وائر کی ڈپٹی ایڈیٹر سنگیتا بروآ پیشاروتی سے میناکشی تیواری کی بات چیت۔

فوٹو: پی ٹی آئی

شدید ہنگامے کے بیچ لوک سبھا میں پیش کیا گیا شہریت ترمیم بل

شہریت ترمیم بل کوغیر آئینی بتاتے ہوئے لوک سبھا میں اپوزیشن پارٹیوں نے اس کو پیش کیے جانے کی مخالفت کی۔ حالانکہ، لوک سبھا کے کل 293 ممبروں نے بل کو پیش کیے جانے کےحق میں ووٹنگ کی جبکہ 82 ممبروں نے اس کے خلاف ووٹنگ کی۔

آسام کے مختلف شہروں میں شہریت ترمیم بل کی مخالفت میں ان دنوں مظاہرہ چلارہا ہے۔ (فوٹو : پی ٹی آئی)

شہریت ترمیم بل کی مخالفت میں آسام میں مظاہرہ، 10 دسمبر کو نارتھ ایسٹ بند کا اعلان

آل آسام اسٹوڈنٹس یونین نے بل کے خلاف پورے آسام میں 30 مقامی تنظیموں کے ساتھ مظاہرہ کیا اور وزیر اعظم نریندر مودی، مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور ریاست کے وزیراعلیٰ سربانند سونووال کےپتلے پھونکے۔

AKI 4 Dec.00_17_48_15.Still002

مذہب کی بنیاد پر ہوگا ہندوستان میں رہنے کا حق؟

ویڈیو: شہریت ترمیم بل میں بنگلہ دیش،پاکستان اور افغانستان کے ہندو،جین،عیسائی،سکھ،بودھ ،پارسی کمیونٹی کے ان لوگوں کو ہندوستانی شہریت دینے کی تجویز ہے، جنھوں نے ملک میں 6 سال گزار دیے ہیں،لیکن ان کے پاس کوئی دستاویز نہیں ہے۔ اس مدعے پر تفصیل سے بتا رہی ہیں دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی اوردی وائر کی ڈپٹی ایڈیٹر سنگیتا بروآ پیشاروتی۔

اسد الدین اویسی، فوٹو: پی ٹی آئی

شہریت بل کے نام پر مسلمانوں کو ڈٹینشن سینٹر میں ڈالنا چاہتی ہے مودی حکومت؛ اسد الدین اویسی

اسد الدین اویسی نے کہا کہ ، اگر ہم اس بل کو پاس کر دیتے ہیں تو یہ مہاتما گاندھی اور آئین کے معمار بھیم راؤ امبیڈکر کی توہین ہوگی ۔ اس بل کو لانا مجاہد آزادی کی توہین ہوگی ۔ انہوں نے مرکزی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے یہ بھی کہا کہ ،آپ دو قومی نظریے کو زندہ کر رہے ہیں ۔ ایک ہندوستانی مسلمان ہونے کے ناطے میں جناح کے اس نظریے کو خارج کرتا ہوں ۔

فوٹو: پی ٹی آئی

مخالفت کے باوجود مرکزی کابینہ نے شہریت ترمیم بل کو منظوری دی

شہریت ترمیم بل میں بنگلہ دیش، پاکستان اور افغانستان کے ہندو، جین، عیسائی، سکھ، بودھ اور پارسی کمیونٹی کے ان لوگوں کوہندوستانی شہریت دینے کی تجویز ہے، جنہوں نے ملک میں چھ سال گزار دیے ہیں، لیکن ان کے پاس کوئی دستاویز نہیں ہے۔

 شہریت ترمیم بل کی مخالفت میں مظاہرہ کرتے آسام کے طالبعلم(فوٹو : پی ٹی آئی)

شہریت ترمیم بل: آسام کی دو یونیورسٹی میں بی جے پی اور آر ایس ایس رہنماؤں کے داخلے پر پابندی

شہریت ترمیم بل کی مخالفت میں آسام کے کاٹن یونیورسٹی اور ڈبروگڑھ یونیورسٹی کے اسٹوڈنٹ یونین نے یونیورسٹی کیمپس میں بی جے پی اور آر ایس ایس رہنماؤں کے داخلےے پر پابندی لگاتے ہوئےمظاہرہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

HBB 21 Nov.00_24_01_02.Still001

پورے ملک میں این آر سی کیوں نافذ کرنا چاہتے ہیں امت شاہ؟

ویڈیو: مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے بدھ کو کہا کہ این آر سی پروسیس کو پورے ملک میں نافذ کیا جائے گا۔اس دوران انھوں نے دعویٰ کیا کہ مذہب کی بنیاد پر کوئی امتیازی سلوک نہیں ہوگا۔ اس مدعے پر دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی کی دی وائر کے اجئے آشیرواد اور سنگیتا بروآ سے بات چیت۔

اسد الدین اویسی، فوٹو : پی ٹی آئی

پورے ملک میں این آر سی کا نفاذ اقلیتوں اور کمزور لوگوں کو مشکل میں ڈالے گا: اویسی

اویسی نے وزیراعظم کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ،نریندر مودی چاہتے ہیں کہ ہندوستانیوں کو ایک بار پھر لائن میں کھڑا کر دیا جائے،جن کے پاس کاغذ نہیں ہیں ان کو حراست میں لے لیا جائے اور اقلیتوں اور کمزوروں کو بابوؤں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا جائے۔

فوٹو : پی ٹی آئی

آسام میں این آرسی کا مقصد مذہبی اقلیتوں کو نشانہ بنانا تھا: یو ایس کمیشن

امریکہ میں مذہبی آزادی کے معاملوں پر بنی ایک فیڈرل ایجنسی یو ایس سی آئی آر ایف نے الزام لگایا ہے کہ آسام میں این آرسی مذہبی اقلیتوں کو نشانہ بنانے اور مسلمانوں کو ریاست سے ہٹانے کا ایک اوزار ہے۔

ہریانہ کے کیتھل میں مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ (فوٹو : ٹوئٹر)

2024 سے پہلے تمام گھس پیٹھیوں کو چن چن کر ملک سے باہر نکال دیں‌ گے: امت شاہ

مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے ہریانہ کے کیتھل میں ایک انتخابی ریلی کوخطاب کرتے ہوئے کہا کہ ستر سالوں سے گھس پیٹھیوں نےقومی سلامتی کو چیلنج دیا ہے۔این آر سی کے ذریعے بی جے پی حکومت تمام گھس پیٹھیو ں کو باہر نکالنے کے لئے پرعزم ہے۔

1 اکتوبر 2009 کو کولکاتہ میں ایک ریلی میں وزیر داخلہ امت شاہ کو ہار پہناتے بی جے پی رہنما(فوٹو: پی ٹی آئی)

مغربی بنگال میں این آر سی لانے سے پہلے شہریت ترمیم بل لائیں گے: امت شاہ

شہریت ترمیم بل میں ہندو،سکھ،جین اور عیسائی پناہ گزینو ں کو ہندوستانی شہریت دی جائے گی۔کولکاتہ میں ہوئی ایک ریلی میں مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ این آر سی سے گھس پیٹھیوں کی پہچان کر کے نکالنے سے پہلے یہ بل لایا جائے گا۔

Don`t copy text!