Police

جسٹس بی این سری کرشنا (تصویر: پی ٹی آئی)

پولیس آپ کی رضامندی کے بغیر آپ کے کمپیوٹر ڈیٹا کو نہیں چھو سکتی: جسٹس بی این سری کرشنا

انٹرویو: سپریم کورٹ کے سابق جسٹس بی این سری کرشنا کا کہنا ہے کہ اگر پولیس رضامندی کے بغیر ڈیٹا اکٹھا کرتی ہے تو اسے لازمی طور پراس کی وجہ بتانی ہوگی۔ صرف یہ کہنا کافی نہیں ہوگا کہ ایسا کرنے کا مقصد مجرمانہ جانچ ہے۔

(علامتی تصویر: اسد رضوی)

یوپی: قرآن کو نذر آتش کرنے پر احتجاجی مظاہرہ، پولیس نے مسلمان شخص کو گرفتار کرکے اس کوذہنی مریض بتایا

واقعہ اتر پردیش کے شاہجہاں پور کی ایک مسجد کا ہے۔ 2 نومبر کی شام جب امام مسجد پہنچے تو انہوں نے قرآن کو جلایا ہوا پایا۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی مسلم کمیونٹی کے سینکڑوں لوگ مسجد کے باہر جمع ہوگئے اور احتجاجی مظاہرہ شروع کردیا۔

(علامتی تصویر: رائٹرس)

جانکاری کے باوجود نابالغ کے خلاف جنسی ہراسانی کی اطلاع نہ دینا سنگین جرم: سپریم کورٹ

مہاراشٹر کے ایک ڈاکٹر نے ہاسٹل میں نابالغ طالبات کے ساتھ جنسی زیادتی کے بارے میں علم ہونے کے باوجود اتھارٹی کو مطلع نہیں کیا تھا، جس کے لیے پولیس نے اس کے خلاف پاکسو کے تحت معاملہ درج کر لیا تھا۔ ہائی کورٹ کے ڈاکٹر کے خلاف کیس کو ردکرنے کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا۔

(تصویر: پی ٹی آئی)

فرضی خبریں مسئلہ بن سکتی ہیں، کوئی بھی پیغام بھیجنے سے پہلے 10 بار سوچیں: مودی

وزارت داخلہ کے ‘چنتن شور پروگرام’ کے دوران وزیر اعظم نریندر مودی نے پولیس کے لیے ‘ون نیشن– ون یونیفارم’ کی پالیسی اپنانے کو کہا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ملک کے نوجوانوں کو گمراہی سے روکنے کے لیے نکسل ازم کی ہر شکل کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنا ہوگا، وہ چاہے بندوق کا ہو یا پھرقلم کا۔

rakesh-tikait-PTi

سرکار پر کوئی بھروسہ نہیں، یہ ملک کو غریب اور کچھ لوگوں کو امیر بنا رہی ہے: راکیش ٹکیت

ویڈیو: لکھیم پور کھیری واقعے کے ایک سال پورے ہونے پر راکیش ٹکیت وہاں پہنچے تھے۔ ٹکیت نے حکومت کو کسان مخالف اور غریب مخالف بتایا، ساتھ ہی متاثرہ خاندانوں کو درپیش چیلنجز، مہنگائی، ایم ایس پی اور چارے کی قلت جیسے موضوعات پر دی وائر کے لیے اندر شیکھر سنگھ سےبات کی۔

(فوٹو: پی ٹی آئی)

لکھیم پور واقعہ کے ایک سال بعد بھی اجئے مشرا کا وزیر بنے رہنا شرمناک: کانگریس

گزشتہ سال 3 اکتوبر کو لکھیم پور کھیری ضلع کے تکونیہ گاؤں میں کسانوں کے احتجاج کے دوران ہوئے تشدد میں چار کسانوں سمیت آٹھ افراد مارے گئے تھے۔ اس معاملے میں وزیر مملکت برائے داخلہ اجئے کمار مشرا ‘ٹینی’ کے بیٹے آشیش مشراکلیدی ملزم ہیں۔

سیما پاترا۔ (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک)

جھارکھنڈ: گھریلو ملازمہ پر تشدد کرنے کے الزام میں بی جے پی کی معطل لیڈر سیما پاترا گرفتار

گھریلو ملازمہ پر تشدد کرنے کاایک ویڈیو وائرل ہونے کے بعد منگل کو بی جے پی نے سیما پاترا کو سسپنڈکر دیا تھا۔ پاترا جھارکھنڈ بی جے پی کی خواتین ونگ کی نیشنل ورکنگ کمیٹی کی رکن تھیں۔ ان پر گھریلو ملازمہ کو یرغمال بنانے، لوہے کی راڈ سے ان کا دانت توڑنے اور انہیں بھوکارکھنے کا الزام ہے۔

(تصویر: پی ٹی آئی)

پیغمبر پر تبصرہ: راجہ سنگھ کی ضمانت کے خلاف حیدرآباد میں احتجاجی مظاہرہ، پارٹی سے سسپنڈ

پیغمبر اسلام کے بارے میں قابل اعتراض تبصرہ کرنے کے بعدگوشا محل کے ایم ایل اے راجہ سنگھ کوگرفتار کیا گیا تھا۔ بعد میں ایک مقامی عدالت نے انہیں ضمانت دے دی تھی، جس کے خلاف رات بھر شہر کے کئی حصوں میں احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ بی جے پی نے انہیں وجہ بتاؤ نوٹس دے کر پارٹی سےسسپنڈ کر دیا ہے۔

مرکزی وزیر اجئے مشرا 'ٹینی'۔ (فوٹوبہ شکریہ: ٹوئٹر)

مرکزی وزیر اجئے مشرا نے کسانوں کو ’بھونکنے والے کتے‘ اور ٹکیت کو ’دو کوڑی کا آدمی‘ کہا

لکھیم پور کھیری تشدد معاملے میں اپنے بیٹے کی مبینہ شمولیت کے سلسلے میں مسلسل تنقید کی زد پر رہے مرکزی وزیر اجئے مشرا ‘ٹینی’ ایک ویڈیو میں بالواسطہ طور پر احتجاج کرنے والے کسانوں کے بارے میں یہ کہتے نظر آ رہے ہیں کہ تیز رفتار گاڑی پر کئی بار کتے بھونکا کرتے ہیں، وہ گاڑی کے پیچھے دوڑنے لگتے ہیں ، یہ ان کی فطرت ہے۔

بی جے پی ایم ایل اے ٹی راجہ سنگھ (فوٹوبہ شکریہ: فیس بک)

تلنگانہ: بی جے پی ایم ایل اے نے پیغمبر اسلام کے بارے میں نوپور شرما جیسا تبصرہ کیا، احتجاج کے بعد گرفتار

حیدرآباد میں گزشتہ دنوں اسٹینڈ اپ کامیڈین منور فاروقی کا شو ہوا تھا، جس کے خلاف گوشہ محل سے بی جے پی ایم ایل اے ٹی راجہ سنگھ کا ایک ویڈیو یوٹیوب پر سامنے آیا ہے، جس میں مبینہ طور پر انہیں پیغمبر اسلام کے خلاف تبصرہ کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

(السٹریشن: دی وائر)

آر ایس ایس کے خلاف ایف آئی آر درج نہ کرنے پر ناگپور پولیس کو عدالت کا نوٹس: رپورٹ

ایک میڈیا رپورٹ کے مطابق، مہاراشٹر میں ناگپور ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ نے ہتھیاروں کے ‘غیر قانونی قبضے’کے سلسلے میں راشٹریہ سویم سیوک سنگھ کے خلاف شکایت موصول ہونے کے باوجود مقدمہ درج کرنے میں مبینہ ناکامی کے لیے یہ نوٹس جاری کیا ہے اور چار ہفتے کے اندر جواب داخل کرنے کو کہا ہے۔

rr-e1659275618641

اتر پردیش کے کاس گنج میں ’لو جہاد‘ کے نام پر مسلم نوجوان کو پھنسایا

ویڈیو: اتر پردیش کے کاس گنج میں ایک ہندو خاتون نے مسلم نوجوان کے خلاف الزام لگاتے ہوئے کہا تھاکہ نوجوان نے نام بدل کر اور اپنی پہچان چھپا کر اس کے ساتھ ریپ کیا تھا۔ اس معاملے میں الزام لگانے والی خاتون اب اپنے بیان سے پلٹ گئی ہے۔

(علامتی تصویر: پی ٹی آئی)

یوپی: لو جہاد-ریپ کے معاملے میں مسلم شخص کو پھنسانے کے الزام میں دو گرفتار

واقعہ اتر پردیش کے کاس گنج ضلع کا ہے۔ 16 جولائی کو ایک خاتون نے ایک مسلم شخص کے خلاف لو جہاد اورریپ کا الزام لگاتے ہوئے ایف آئی آر درج کرائی تھی۔ اب خاتون نے کہا ہے کہ اس کو اس کام کے لیے دو افراد نے پیسہ دے کر کام پررکھا تھا۔ سازش کرنے والے دونوں ملزمین میں سے ایک کو مبینہ طور پر بھارتیہ جنتا پارٹی کے یوتھ ونگ کا لیڈر بتایا جا رہا ہے۔

پٹنہ کے ایس ایس پی مانوجیت سنگھ ڈھلوں۔ (ScreenGrab Credits: Twitter/@UtkarshSingh_)

بہار: پولیس افسر نے پی ایف آئی کا موازنہ آر ایس ایس سے کیا، تنازعہ

بہار پولیس کے ذریعے مبینہ طور پر پاپولر فرنٹ آف انڈیا سے وابستہ مشتبہ دہشت گردوں کی گرفتاری کے بارے میں جانکاری دیتے ہوئے پٹنہ کے سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ نے کہا کہ ‘جس طرح آر ایس ایس اپنی شاکھامنعقد کرتی ہے اور لاٹھی کی تربیت دیتی ہے، اسی طرح یہ لوگ نوجوانوں کو بلا کر جسمانی تربیت دیتے تھے اور ‘برین واش’ کرکےان کے توسط سےاپنے ایجنڈے کو لوگوں تک پہنچانےکا کام کرتے تھے۔

(علامتی تصویر: پی ٹی آئی)

یوپی: مسلمان شخص پر حملہ کیا اور ’بھارت ماتا کی جئے‘ کے نعرے لگوائے، دو گرفتار

یہ واقعہ متھرا ضلع کا ہے، جہاں فرح نگر میں رہنے والے مبین قریشی جب 10 جولائی کو مویشیوں کے لیے چارہ اکٹھا کرنےاپنے کھیت میں گئے تو کچھ لوگوں نے مبینہ طور پر انہیں ‘اینٹی نیشنل’ بتا کر یہ کہتے ہوئے حملہ کر دیا کہ ،’تمہارے لوگوں نے ادے پور میں کنہیا لال کا قتل کیا ہے۔’

بجرنگ منی۔ (فوٹو بہ شکریہ: اے این آئی)

زبیر کیس: اے ایس جی کے ذریعے ’قابل احترام‘ کہے گئے بجرنگ منی نے مسلمانوں عورتوں کے ساتھ ریپ کی اپیل کی تھی

سپریم کورٹ میں صحافی محمد زبیر کی عرضی کی سماعت کے دوران حکومت کی طرف سے پیش ہوئے ایڈیشنل سالیسٹر جنرل ایس وی راجو نے کہا کہ بجرنگ منی ایک ‘قابل احترام ‘ مذہبی رہنما ہیں، جن کے بہت سے پیروکار ہیں۔بجرنگ منی کی مسلمانوں کے خلاف ہیٹ اسپیچ کی ایک طویل تاریخ ہے، جس کی وجہ سے انہیں ایک بار گرفتار بھی کیا گیا تھا۔

بی جے پی کے اعلیٰ رہنماؤں کے ساتھ مبینہ طورپر طالب کی یہ تصویر سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہے۔ دی وائر کی طرف سے آزادانہ طور پر اس کی تصدیق نہیں کی گئی ہے۔ (بہ شکریہ: ٹوئٹر)

جموں و کشمیر: گرفتار لشکر کمانڈر کو بی جے پی نے حال ہی میں بنایا تھا سوشل میڈیا انچارج

تین جولائی کو جموں و کشمیر پولیس نے ‘وانٹیڈدہشت گرد’ اور ‘لشکر طیبہ کا کمانڈر’ بتاتے ہوئے طالب حسین شاہ کو گرفتار کیا ہے، جنہیں گزشتہ مئی میں بی جے پی کے اقلیتی سوشل میڈیا ونگ کا انچارج بنایا گیا تھا۔ اب طالب کو بے دخل کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے بی جے پی نے دعویٰ کیا کہ وہ پارٹی کی اعلیٰ قیادت کو قتل کرنے کا منصوبہ بنا رہا تھا۔

Prophet

گڑگاؤں میں پیغمبر اسلام کے بارے میں قابل اعتراض نعرے لگائے گئے

ویڈیو: پیغمبر اسلام کے بارے میں بی جے پی کی معطل ترجمان نوپور شرما کے بیان کے بعد ملک میں تنازعہ اب تک جاری ہے۔ گزشتہ روز بجرنگ دل، وی ایچ پی اور آر ایس ایس کے ارکان نے ہریانہ کے گڑگاؤں میں مسلمانوں کو ہراساں کرنے کی کوشش میں پیغمبر اسلام کے خلاف نعرے لگائے۔

نوپور شرما (تصویر: پی ٹی آئی)

ملک کے جذبات کو بھڑکانے کے لیے نوپور شرما ذمہ دار، انہیں معافی مانگنی چاہیے: سپریم کورٹ

ٹی وی بحث کے دوران پیغمبر اسلام کے بارے میں تبصرے کی وجہ سے معطل بی جے پی لیڈر نوپور شرما کی جانب سے ملک کے مختلف حصوں میں ان کے خلاف درج ایف آئی آر کو دہلی منتقل کرنے کے لیے دائر عرضی پر سپریم کورٹ کی بنچ سماعت کر رہی تھی۔ بنچ نے اس ٹی وی مباحثے کی میزبانی کے لیے نیوز چینل ٹائمس ناؤ کے خلاف بھی سخت موقف اختیار کیا۔ عدالت نے پوچھا کہ ٹی وی پر یہ بحث کس لیے تھی؟ صرف ایک ایجنڈے کے فروغ دینے کے لیے؟ انہوں نے عدالت میں زیر غور معاملے کا انتخاب کیوں کیا؟

SV Apoorvanand.00_29_33_19.Still002

کیا حکومت ہی ملک میں انارکی پھیلا رہی ہے؟

ویڈیو: اگنی پتھ سے لے کر سی اے اے، زرعی قانون اور نوٹ بندی کی وجہ سے ملک میں احتجاجی مظاہروں کے سلسلے میں مودی کی حکومت کے بارے میں دی وائر کے بانی ایڈیٹر سدھارتھ وردراجن اور دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر اپوروانند کی بات چیت۔

سی جے آئی این وی رمنا۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

سابق نوکرشاہوں نے یوپی کے ’بلڈوزر جسٹس‘ کو ختم کرنے کے لیے سی جے آئی سے مداخلت کی اپیل کی

سابق نوکر شاہوں کے کانسٹی ٹیوشنل کنڈکٹ گروپ نے ملک کے چیف جسٹس کے نام ایک کھلے خط میں کہا ہے کہ مسئلہ اب صرف مقامی سطح پر پولیس اور انتظامیہ کی ‘زیادتیوں’ کا نہیں ہے بلکہ یہ حقیقت یہ ہے کہ قانون کی حکمرانی ہے، قانونی کارروائی اور’قصوروار ثابت نہ ہونے تک بے قصور ماننے’کے نظریہ کو بدلا جا رہا ہے۔

رام مادھو/ فوٹو: بہ شکریہ فیس بک

آر ایس ایس کا مسلمانوں کے لیے تین نکاتی فارمولہ

آر ایس ایس کے ایک مرکزی لیڈر او ر نظریہ سازشری رام مادھو نے مسلمانوں کو ایک تین نکاتی فارمولہ پیش کیا ہے جس سے وہ ہندوستان میں سکون کے ساتھ زندگی گزار سکتے ہیں۔ یہ شرطیں کچھ اس طرح کی ہیں کہ مسلمان غیر مسلموں کو کافر نہ کہیں، مسلمان خود کو امت اسلام یا مسلم امت کا حصہ سمجھنا ترک کردیں اور مسلمان جہاد کے نظریے سے خودکو الگ کریں۔

(علامتی تصویر: پی ٹی آئی)

یوپی: علی گڑھ میں مسجد کی دیوار پر پیغمبر محمد کے خلاف قابل اعتراض تبصرہ لکھنے کے معاملے میں کیس درج

اتر پردیش کے علی گڑھ ضلع کے مہوا کھیڑا تھانہ حلقہ میں واقع ایک مسجد کی دیوار پر ‘پیغمبر اسلام’ کے خلاف ریمارکس لکھنے پر پولیس نے ایک نامعلوم شخص کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہے۔ پولیس نے کہا کہ اس سلسلے میں کئی لوگوں سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

SV Blank

پیغمبر محمد پر تبصرہ: ہندو کب مسلمانوں کے ساتھ کھڑے ہوں گے؟

ویڈیو: بی جے پی کے معطل رہنماؤں- نوپور شرما اور نوین جندل کے پیغمبر اسلام کے بارے میں تبصرے کے بعد ہندوستان کی کئی ریاستوں میں پرتشدد مظاہرے ہوئے تھے۔ عرب ممالک نے بھی احتجاج درج کرایا تھا۔ اتر پردیش میں انتظامیہ نے تشدد کے ملزمین کے گھرتک بلڈوزر سے گروا دیے۔ دی وائر کے بانی ایڈیٹر سدھارتھ وردراجن نے دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر اپوروانند سے اس موضوع پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

نوپور شرما کی گرفتاری کے سلسلے میں  کولکاتہ میں منعقد ایک مظاہرہ ۔ (تصویر: رائٹرس)

آج کے فرنج کل کے بڑے لیڈر ہیں …

نوپور شرما اسی طرح کھیل رہی تھیں جس طرح انہیں سکھایا گیا تھا۔ ماضی میں انہیں یا بی جے پی کی جانب سے بولنے والے ان کے کسی بھی ساتھی کو کبھی مسلمانوں کے خلاف پرتشدد تبصروں کے لیے سرزنش نہیں کی گئی۔ ایسا لگتا ہے کہ یہ پارٹی کے سرکردہ رہنماؤں کی نظر میں آنے کا اچھا طریقہ رہا ہے۔

(علامتی تصویر: پی ٹی آئی)

چھتیس گڑھ: بے قصور شخص کو 9 ماہ تک نکسلائٹ بتا کر جیل میں رکھا، اصل ملزم کی خود سپردگی کے بعد رہائی

معاملہ سکما ضلع کا ہے۔ بتایا گیا کہ جولائی 2021 میں پولیس نے منپا گاؤں سے 42 سالہ پوڑیام بھیما کو نکسلائٹ بتاکر گرفتار کیا تھا۔ غلط پہچان کا معاملہ اس وقت سامنے آیا جب پولیس ریکارڈ میں درج اسی نام کے نکسلی نے مارچ 2022 میں اپنے چھ ساتھیوں کے ساتھ دنتے واڑہ عدالت میں خودسپردگی کی۔ عدالت نے کیس کے تفتیشی افسر اور قصوروار پولیس اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا حکم دیا ہے۔

جھارکھنڈ کے رانچی میں تشدد کے بعد تعینات ریپڈ ایکشن فورس اور پولیس اہلکار ۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

پیغمبر پر تبصرہ: پرسنل لاء بورڈ اور جمعیۃ نے مظاہرین پر پولیس کارروائی کی مذمت کی

مسلم پرسنل لا بورڈ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ پیغمبر اسلام کے بارے میں متنازعہ تبصرے پر پرامن احتجاج کرنے والوں کے خلاف مقدمات درج کیے جا رہے ہیں، لاٹھی چارج کیا جا رہا ہے اور ان کے گھروں کو مسمار کیا جا رہا ہے۔ جب تک کہ کوئی شخص عدالت میں مجرم ثابت نہیں ہوتا، وہ صرف ایک ملزم ہوتاہے۔ وہیں جمعیۃ نے کہا ہے کہ پولیس نے مظاہرے میں شامل لڑکوں کے ساتھ دشمنوں جیسا سلوک کیا۔ یہ بہت ہی افسوسناک ہے۔

نویکا کمار کے شو میں نوپور شرما اور دیگر مقررین۔ (اسکرین گریب کریڈٹس: ٹائمس ناؤ)

پیغمبر اسلام کے بارے میں نوپور شرما کے تبصرہ والے معاملے میں ٹائمس ناؤ کی نویکا کمار کے خلاف ایف آئی آر

نوپور شرما نے پیغمبر اسلام کے خلاف ‘ٹائمس ناؤ’ کے پرائم ٹائم شو میں تبصرہ کیا تھا۔ نویکا کمار اس شو کو ہوسٹ کر رہی تھیں۔ مہاراشٹر کے پربھنی میں درج ایف آئی آر میں نویکا پر مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کا الزام لگایا گیا ہے۔

کویت کا قومی پرچم۔ (علامتی تصویر: رائٹرس)

پیغمبر پر تبصرہ: کویت احتجاجی مظاہرہ کرنے والے تارکین وطن کو ملک بدر کرے گا

کویت کے قوانین کے مطابق خلیجی ملک میں تارکین وطن کی طرف سے دھرنا دینا یا مظاہرہ کرنا منع ہے۔ یہاں 10 جون کو تارکین وطن نے پیغمبر اسلام کی حمایت میں مظاہرہ کیا تھا۔ کویت ان چند ممالک میں سے ایک ہے جس نے بی جے پی کے سابق رہنما نوپور شرما اور نوین جندل کے تبصرے پر ہندوستانی سفیر کو طلب کیا تھا۔

نصیر الدین شاہ(فوٹو : پی ٹی آئی)

نصیر الدین شاہ نے پی ایم مودی سے مسلمانوں کے خلاف نفرت کو روکنے کی اپیل کی

سیاسی معاملات پر شاہ رخ، سلمان اور عامر خان کی خاموشی پر اداکار نصیر الدین شاہ نے کہا کہ، میں ان کے لیے نہیں بول سکتا۔ مجھے لگتا ہے کہ وہ سوچتے ہوں گے کہ وہ بہت زیادہ خطرہ مول لے رہے ہیں، لیکن پھر میں نہیں جانتا کہ وہ اپنے ضمیر کو کیسے تسلی دیتے ہیں۔ میرے خیال میں وہ اس پوزیشن میں ہیں جہاں ان کے پاس کھونے کے لیے بہت کچھ ہے۔

نوین جندل، نوپور شرما، یتی نرسنہانند۔ (فوٹو بہ شکریہ: پی ٹی آئی/فیس بک)

نوپور شرما، نوین جندل، اویسی، نرسنہانند سمیت کئی کے خلاف نفرت پھیلانے کے الزام میں کیس درج

دہلی پولیس کی انٹلی جنس فیوژن اینڈ اسٹریٹیجک آپریشن (آئی ایف ایس او) یونٹ نے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے، لوگوں کو اکسانے اور نفرت پھیلانے کے الزام میں سوشل میڈیا کے کئی معروف صارفین کے خلاف دو ایف آئی آر درج کی ہیں، جن میں صحافی صبا نقوی، ہندو مہا سبھا کی پوجا شکن پانڈے، راجستھان کے مولانا مفتی ندیم اور دیگر کےنام شامل ہیں۔

القاعدہ سے وابستہ جنگجو۔ (فائل فوٹو: رائٹرس)

پیغمبر اسلام کے بارے میں متنازعہ تبصرہ: القاعدہ نے ہندوستانی شہروں پر خودکش حملے کی دھمکی دی

القاعدہ ان انڈین سب کانٹیننٹ (اے کیو آئی ایس) نے پیغمبر اسلام کے بارے میں بی جے پی رہنماؤں کے متنازعہ تبصرے پر دہلی، ممبئی، اتر پردیش اور گجرات میں حملوں کی دھمکی دی ہے۔

نوپور شرما اور نوین جندل۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

بی جے پی کے حامیوں کی نظر میں پارٹی سے ہٹائے گئے لیڈر قصوروار نہیں، بلکہ مظلوم ہیں

بی جے پی کی آٹھ سالہ حکومت نے ایک بڑی آبادی ایسی پیدا کی ہے جو مانتی ہے کہ پارٹی لیڈر کے بگڑے بول کی وجہ سے ہوئی بین الاقوامی شرمندگی کے لیے پارٹی کے ‘شعلہ بیاں مقرر’ ذمہ دار نہیں ہیں، بلکہ وہ لوگ ذمہ دار ہیں جو اس موضوع پر اتنی دیر تک چرچہ کر تے رہے کہ بات ہندوستان سے باہر پہنچ گئی۔

کانپور میں فرقہ وارانہ تشدد کے ملزمین کا پوسٹر لگاتا ایک پولیس اہلکار۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

اترپردیش: کانپور تشدد معاملے میں بی جے پی لیڈر سمیت 13 اور گرفتار

کانپور میں 3 جون کو بی جے پی کی سابق ترجمان نوپور شرما کے ذریعے پیغمبراسلام کے بارے میں کیے گئے متنازعہ تبصرےکے خلاف احتجاج کے دوران تشدد پھوٹ پڑا تھا۔ اس معاملے میں پولیس نے بی جے پی یووا مورچہ کے سابق ضلع اکائی سکریٹری ہرشیت سریواستو کو سوشل میڈیا پر اشتعال انگیز مواد پوسٹ کرنے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

پیوش گوئل/ (فوٹو : پی ٹی آئی)

پیغمبر اسلام کے بارے میں متنازعہ تبصرہ: خلیجی ممالک کی مذمت کے بعد وزیر نے کہا – حکومت پر کوئی اثر نہیں، اچھے تعلقات بنے رہیں گے

مرکزی وزیر پیوش گوئل نے کہا کہ بی جے پی کی سابق ترجمان نوپور شرما کی طرف سے پیغمبر اسلام پر کیے گئے متنازعہ تبصرے کا مرکز میں حکمراں این ڈی اے پر کوئی اثر نہیں پڑا ہے، کیونکہ وہ سرکاری عہدیدار نہیں تھیں۔

علامتی تصویر، اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل۔ (فوٹو کریڈٹ: فلکر)

پیغمبر اسلام کے بارے میں متنازعہ تبصرہ: اقوام متحدہ نے کہا – ہم تمام مذاہب کے احترام اور رواداری کی بھرپور حوصلہ افزائی کرتے ہیں

ایک صحافی نے پیغمبر اسلام کے خلاف ہندوستانی حکمران جماعت کے رہنماؤں کے تبصرےکے سلسلے میں متعدد ممالک کی مذمت پراقوامِ متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوترس کے ردعمل کے بارے میں پوچھا تھا، جس کے جواب میں ان کے ترجمان اسٹیفن نے یہ بیان دیا۔

مجلس تعاون برائے خلیجی عرب ممالک (جی سی سی) کے سکریٹری جنرل ڈاکٹر نائف فلاح ایم الحجراف۔ (فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر/جی سی سی)

پیغمبر اسلام کے بارے میں متنازعہ تبصرہ: کئی اور ممالک کی جانب سے مذمت کا سلسلہ جاری

بی جے پی لیڈر نوپور شرما اور نوین جندل کے پیغمبر اسلام کے بارے میں کیے گئے مبینہ قابل اعتراض بیانات کی بین الاقوامی سطح پر مذمت جاری ہے۔ خلیجی ممالک کے بعد مالدیپ، عمان، انڈونیشیا، اردن، متحدہ عرب امارات، مصر اور لیبیا جیسے ممالک نے بھی متنازعہ تبصرےپر اپنی ناراضگی ظاہر کی ہے۔

ملت ٹائمز کے ایڈیٹر شمس تبریز قاسمی۔ (تصویر: Twitter/@Millat_English)

یوپی: کانپور تشدد سے متعلق ویڈیو ٹوئٹ کرنے پر ’ملت ٹائمز‘ کے ایڈیٹر کے خلاف کیس درج

میڈیا آؤٹ لیٹ ‘ملت ٹائمز’ کے ایڈیٹر شمس تبریز قاسمی نے اپنے خلاف الزامات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ انہیں خاموش کرنے کی یوپی پولیس کی یہ کوشش کامیاب نہیں ہوگی۔ اقتدار سے سوال پوچھنے کے لیے وہ صحافت کرتے رہیں گے۔

(بائیں سے دائیں) کویت میں ہندوستانی سفیر سبی جارج، قطر میں ہندوستانی سفیر دیپک متل اور ایران میں ہندوستانی سفیر جی دھرمیندر۔ (فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر)

بی جے پی رہنماؤں کا پیغمبر اسلام پر تبصرہ: خلیجی ممالک نے ہندوستان کو تنقید کا نشانہ بنایا، سفارت کاروں کو طلب کیا

بی جے پی لیڈر نوپور شرما کی طرف سے پیغمبر اسلام کے بارے میں کیے گئے مبینہ قابل اعتراض تبصرے اور پارٹی ترجمان نوین جندل کے اسی طرح کے ‘توہین آمیز’ ٹوئٹس کی مذمت کرتے ہوئے خلیجی ممالک–قطر، کویت، ایران اور سعودی عرب کے علاوہ  پاکستان نے بھی […]

Don`t copy text!