Rafale Fighter Aircraft

Modi-Ambani-1200x593

رافیل سودے کے بعد انل امبانی کی کاغذی کمپنی کو 284 کروڑ کا فائدہ

دی وائر کی اسپیشل رپورٹ:رافیل سودے میں شراکت داری کے بعد فرانس کی داسو کمپنی نے انل امبانی گروپ کی ایک غیر فعال کمپنی میں35 فیصد حصےداری خرید‌کراس کوتقریباً284 کروڑ روپے کا منافع پہنچایا۔

طارق انور (فائل فوٹو: فیس بک)

رافیل تنازعے کی وجہ سے این سی پی چھوڑنے والے طارق انور کانگریس میں شامل ہوئے

بہار کے کٹیہار سے ایم پی اور سابق این سی پی جنرل سکریٹری طارق انور نے گزشتہ ستمبر میں رافیل سودے پر شرد پوار کے وزیر اعظم نریندر مودی کے دفاع میں اترنے کا الزام لگانے کے بعد اعلان کیا تھا کہ وہ پارٹی اور اپنی لوک سبھا رکنیت چھوڑ رہے ہیں ۔

TariqAnwar_PTI

کانگریس میں طارق انور کی واپسی کے کیا معنی ہیں ؟

طارق انور کی کانگریس میں واپسی ہو رہی ہے۔ 2014 کے مقابلے اس بار کانگریس کی حالت اچھی دکھ رہی ہے۔ ایسے میں ان کا کانگریس سے جڑنا، نہ صرف ان کے اپنے صوبے بہار میں بلکہ ملک بھر میں خاص طور سے مسلمانوں کے درمیان ایک مثبت پیغام ہے۔