romantic & revolutionary poetry

UmraoJan

ورق در ورق: مثنوی امراؤجان کو نئے تناطر میں منقلب کرتی ایک کتاب

مراؤ جان کے دلچسپ اور خیال انگیز نثری متن کو شعری اظہار کا محور بنانا اور اس کی تخلیقی دبازت کو ایک نئے حسی تناطر میں منقلب کرنا بہت دشوار گزار عمل ہے مگر مقام مسرت ہے کہ ایک ایسے عہد میں جب نئی نسل میں اپنے کلاسیکی سرمایہ، قدیم اصناف اور زبان و بیان کے مختلف پیرایوں بشمول بحور سے شناسائی مفقود ہوتی جا رہی ہے، نوجوان ناقد رشید اشرف نے مرزا رسوا کی بے مثال نثری کاوش کو عہد ماضی کی مقبول صنف ‘مثنوی’ کا پیرایہ عطا کیا ہے۔

sahir-ludhianvi

ساحر لدھیانوی : اقتدار، آئین ،سماج اور سیاست سے سوال کرنے والا شاعر

ساحر بڑا شاعر ہے اس لیے بھی کہ ان کی شاعری میں اقتدار، آئین،سماج اور سیاست سے سوال ہے۔ ساحر کو کسی سند کی ضرورت نہیں کہ ان کے کلام میں ماورائے زماں زندہ رہنے کی بھرپور قوت موجود ہے۔ وجودیاتی یا علمیاتی بیان کی حاجت بھی نہیں […]

poet

مجاز کی شاعری میں رباب بھی ہے اور انقلاب بھی

مجاز کی شاعری میں رباب بھی ہے انقلاب بھی کہ جس تہذیب کے میخانے سے ان کا رشتہ تھا وہاں شمشیر بھی ہے ‘ ساغر بھی ۔ شراب کسی فرد کے شخصی رویےکو بدل سکتی ہے مگر جبلت تبدیل نہیں کر سکتی ۔ شراب نے اسرارالحق مجاز(19اکتوبر1911-5دسمبر1955)کےحسی ادراک […]