Shaheen Bagh

فوٹو بہ شکریہ: مہربان ڈاز

شاہین باغ کے مظاہرے سے کیوں پریشان ہیں سرکار اور ان کے حمایتی؟

مودی حکومت اور بی جے پی حامیوں کے پریشان ہونے کی ایک اہم وجہ یہ ہے کہ اس تحریک سے کہیں نہ کہیں یہ پیغام گیا ہے کہ مسلم خواتین ان کے ہاتھ سے’ نکل’ گئی ہیں۔ دراصل تین طلاق کے خلاف قانون پاس کروانے کے بعد ان کو لگنے لگا تھا کہ مسلم عورتیں ان کے ساتھ آ گئی ہیں۔ ’

سپریم کورٹ (فوٹو : رائٹرس)

شہریت قانون کے مخالفین پر این ایس اے لگا نے کے خلاف وسیع حکم نہیں دے سکتے: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے شہریت ترمیم قانون کو لےکر چل رہی مخالفت کے دوران ہی کچھ ریاستوں اور قومی راجدھانی میں این ایس اے لگانے کے فیصلےکو چیلنج دینے والی عرضی پر کہا کہ ہم متفق ہیں کہ این ایس اے کا غلط استعمال نہیں کیا جانا چاہیے لیکن سبھی کے لئے کوئی حکم نہیں دیا جا سکتا۔ اس سے انتشار پیداہو جائے گا۔

AKI 22 Jan 2020.00_27_42_21.Still007

یوگی راج میں ’آزادی‘ اب ’ملک سے غداری‘

ویڈیو: اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا ہے کہ مظاہرہ کے نام پر آزادی کا نعرہ لگانا ملک سے غداری کی طرح ہے ۔ حکومت سخت کارروائی کرے گی ۔ اس مدعے پر دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی کا نظریہ۔

AKI 15 Jan.00_12_26_12.Still002

شہریت ترمیم قانون: شاہین باغ کی ایک خاص فیملی سے ملاقات

ویڈیو: شاہین باغ میں گزشتہ ایک مہینے سے زیادہ وقت سے شہریت ترمیم قانون کی مخالفت میں مظاہرہ ہو رہے ہیں۔ دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی نے شاہین باغ جاکر وہاں مظاہرہ میں شامل ایک فیملی سے بات کی۔

بھیم آرمی چیف چندرشیکھر آزاد، فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر/@BhimArmyChief

شہریت ترمیم قانون: بھیم آرمی چیف بو لے-آئندہ 10دنوں میں ملک میں 5 ہزار اور شاہین باغ ہوں گے

آئین کو ہاتھوں میں تھامے ہوئے شاہین باغ میں خطاب کرتے ہوئے چندرشیکھر آزاد نے کہا،ہم نے ابھی تک تاریخ میں جلیاں والا باغ سنا تھا۔ اب شاہین باغ سنا ہے۔ یہ غیر سیاسی تحریک ہے۔ ایسی تحریک باربار نہیں ہوتی۔

اتر پردیش کے وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ (فوٹو : پی ٹی آئی)

آزادی کے نعرے لگانا ملک سے غداری ہے، کریں گے سخت کارروائی: یوگی آدتیہ ناتھ

اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے شہریت ترمیم قانون کی حمایت میں منعقد ریلی کوخطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب تو ان لوگوں میں اتنی بھی ہمت نہیں رہی کہ خودتحریک کرنے کی حالت میں ہوں اس لیے اپنے گھر کی عورتوں کو چوراہے چوراہے پر بٹھاناشروع کر دیا ہے، بچوں کو بٹھاناشروع کر دیا ہے۔ اتنا بڑا جرم کہ مرد گھر میں سو رہا ہے رضائی اوڑھ کر اورعورتوں کو آگے کرکے چوراہے چوراہے پر بٹھایا جا رہا ہے۔

فوٹو: پی ٹی آئی

شاہین باغ کے مظاہرے میں موجود بچوں کی کاؤنسلنگ کی جائے: این سی پی سی آر

نیشنل کمیشن فار پروٹیکشن آف چائلڈ رائٹس نے ساؤتھ ایسٹ دہلی کے ضلع مجسٹریٹ کو ہدایت جاری کرکے کہا ہے کہ ممکن ہے کہ مظاہروں میں موجود رہے بچوں کو افواہوں اور غلط جانکاری کی وجہ سے ذہنی استحصال کا سامنا کرنا پڑ رہا ہو۔کمیشن کے مطابق، ضرورت پڑی تو ان کے والدین کو بھی کاؤنسلنگ کے لیے بھیجا جائےگا۔

Synced Sequence.00_22_23_06.Still003

شہریت ترمیم قانون: کشمیری پنڈتوں کے ساتھ آیا شاہین باغ

ویڈیو: شہریت ترمیم قانون(سی اے اے)کی مخالفت میں گزشتہ ایک مہینے سے نئی دہلی کے شاہین باغ میں مظاہرہ کر رہے لوگوں نے کشمیری پنڈتوں کے ساتھ بھی مظاہرہ کیا۔ اس مدعے پر قلمکار بدری رینا سے دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی نے بات کی۔

فوٹو: پی ٹی آئی

شاہین باغ: پیسے لے کر مظاہرے میں شامل ہونے کے الزام پر بی جے پی آئی ٹی سیل چیف کو نوٹس

دہلی کے شاہین باغ میں سی اے اے اور این آرسی کے خلاف خواتین کی قیادت میں ایک مہینے سے زیادہ وقت سے مظاہرہ ہو رہا ہے۔ بی جے پی آئی ٹی سیل چیف امت مالویہ نے ایک ویڈیو شیئر کر کے دعویٰ کیا تھا کہ مظاہرہ کر رہی خواتین کو 500 روپے روزانہ کے حساب سے ادائیگی کی جاتی ہے۔

فائل فوٹو: پی ٹی آئی

دہلی میں تین مہینے کے لیے نیشنل سکیورٹی ایکٹ، پولیس کو ہوگا شک کی بنیاد پر حراست میں لینے کا اختیار

دہلی کے ایل جی انل بیجل کی ہدایت کے مطابق19 جنوری سے 18 اپریل 2020 تک دہلی پولیس کمشنر کو یہ اختیار ہے کہ وہ کسی بھی فرد جس کو وہ قومی سلامتی اور نظم ونسق کے لیے خطرہ مانتے ہیں،نیشنل سکیورٹی ایکٹ کے تحت حراست میں لے سکتے ہیں۔

maxresdefault (15)

سی اے اے مظاہرہ: دہلی پولیس نے آدھی رات کو کہا-جگہ خالی کرو، ورنہ انجام اچھا نہیں ہوگا

ویڈیو: شہریت ترمیم قانون اور این آر سی کے خلاف مشرقی دہلی کے کھریجی میں خواتین گزشتہ کچھ دنوں سے پر امن مظاہرہ کر رہی ہیں۔ ان خواتین نے بتایا کہ منگل کی رات تقریباً 2 بجےدہلی پولیس نے مظاہرین کو وہاں سے ہٹانے کی کوشش کی، ان کے ٹینٹ اکھاڑ دیے اور ان کو دھمکی دی۔ اس کے بعد آس پا س کے مقامی لوگ اور خواتین کی مخالفت کے بعد پولیس وہاں سے چلی گئی۔ ان مظاہرین سے سنتوشی مرکام کی بات چیت۔

Don`t copy text!