Soldiers in Siachen

فوٹو: پی ٹی آئی

سیاچن میں فوج کو نہیں مل رہے ہیں ضروری کپڑے اور کھانے: کیگ

پارلیامنٹ میں پیش کیگ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ زیادہ اونچائی والے علاقوں میں تعینات فوجی دستوں کے لیے ضروری کپڑے، چشمے وغیرہ کی کمی دیکھی گئی ہے، ساتھ ہی انہیں دیے جانے والے کھانے کے معیارسے بھی سمجھوتا کیا گیا۔

شریپد یسو نایک(فوٹو: پی آئی بی)

وزارت دفاع میں دو لاکھ سے زیادہ عہدے خالی: مرکزی وزیر

وزیر مملکت برائے دفاع شریپد نایک نے راجیہ سبھا میں بتایا کہ جموں علاقے میں لائن آف کنٹرول پر 30 مئی 2019 سے 20 جنوری 2020 تک سیز فائر کی خلاف ورزی کے 2335 واقعات ہوئے ہیں۔ وہیں، سیاچن علاقے میں برف باری اور برفانی تودے گرنے کی وجہ سے سال 2019 میں 6فوجی اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔

Don`t copy text!