UrduNews

فوٹو بشکریہ : دی شیلانگ ٹائمس ای پیر

میگھالیہ: سپریم کورٹ نے شیلانگ ٹائمس ہتک عزت معاملے میں ہائی کورٹ کے فیصلے پر روک لگائی

گزشتہ 8 مارچ کو میگھالیہ ہائی کورٹ نے دی شیلانگ ٹائمس کے مدیر پیٹریشیا موکھیم اور ناشر شوبھا چودھری کو ہتک عزت کا مجرم مانتے ہوئے ایک ہفتے کے اندر دو لاکھ روپے جرمانہ جمع کرنے کو کہا تھا۔ ایسا نہ کرنے پر 6 مہینے کی قید اور اخبار پر پابندی لگانے کی بات کہی گئی تھی۔

میگھالیہ ہائی کورٹ (فوٹو: وکی پیڈیا)

میگھالیہ ہائی کورٹ نے ’دی شیلانگ ٹائمس‘ کے مدیر اور ناشر کو ہتک عزت کا مجرم قرار دیا

دی شیلانگ ٹائمس کے مدیر پیٹرسیا موکھم اور ناشر شوبھا چودھری پر دو-دو لاکھ روپے کا جرمانہ لگایا گیا ہے۔ ایک ہفتے کے اندر جرمانے کی رقم ادا نہیں کرنے پر چھے مہینے کی جیل کا اہتمام ہے۔

Credit: PTI/Ravi Choudhary

سپریم کورٹ نے 16سال سے جیل میں بند 6 لوگوں کو 10سال بعد بے گناہ قرار دیا

سپریم کورٹ نے ایک ہی فیملی کے 5 لوگوں کے قتل اور خاتون اور اس کی بیٹی سے ریپ کے معاملے میں اپنے دس سال پرانے فیصلے کو بدلتے ہوئے کہا کہ جیل میں بند لوگ خانہ بدوش کمیونٹی سے تھے اور ان کو غلط طریقے سے پھنسایا گیا تھا۔

علامتی تصویر: رائٹرس

اتراکھنڈ: راستے میں مندر ہونے کی وجہ سے ماہواری کے دوران لڑکیوں کے اسکول جانے پر روک

مقامی لوگوں کا ماننا ہے کہ ماہواری کے دوران اگر عورتیں یا لڑکیاں ادھر سے گزریں تو مندر ناپاک ہو جائے گا۔والدین کو ڈر ہے کہ اگر انھوں نے ماہواری کے وقت لڑکیوں کو اسکول بھیجا تو ان کو کمیونٹی سے نکال دیا جائے گا۔