Lokpal And Lokayuktas Act 2013

لوک پال جسٹس پیناکی چندر گھوش  اور اس کے ممبران(فوٹوبہ شکریہ: پی آئی بی)

لوک پال: ایک سال بعد اصول و ضوابط جاری، پی ایم کے خلاف ملی شکایت پر سماعت کرے‌ گی پوری بنچ

اگر وزیر اعظم کے خلاف شکایت کو خارج کیا جاتا ہے تو اس کی کوئی وجہ نہیں بتائی جائے‌گی۔ وہیں مرکزی وزیر یا قانون سازمجلس کے ممبروں کے خلاف معاملہ ہے تو اس بارے میں لوک پال کے کم سے کم تین ممبروں کی بنچ فیصلہ لے‌گی۔

وزیر اعظم نریندر مودی(رائٹرس)

کیا مودی حکومت نے انتخابی فائدے کے لئے ایک آزاد اور قابل اعتماد لوک پال کی قربانی دے دی

لوک پال کے صدر اور ا س کے ممبروں کی تقرری میں اقتدار میں موجود ممبروں کی تعداد زیادہ تھی اور انتخاب میں پوری طرح سے رازداری برتی گئی۔ ایسا کرنا لوک پال قانون کے اہتماموں کی پوری طرح سے خلاف ورزی ہے۔ انتخابی عمل سے سمجھوتہ کرکے مودی حکومت نے کام کاج شروع کرنے سے پہلے ہی لوک پال ادارہ کو کمزور کر دیا ہے۔

 (فوٹو : پی ٹی آئی)

لوک پال : گزستہ 4 سالوں میں سرچ کمیٹی کی ایک بھی میٹنگ نہیں

آر ٹی آئی کے ذریعے پتا چلا ہے کہ لوک پال سلیکشن کمیٹی کی پہلی میٹنگ مودی حکومت کے اقتدار میں آنے کے 45 مہینوں کے بعد مارچ، 2018 میں ہوئی تھی ۔ حکومت نے غیر قانونی طریقے سے میٹنگ کے منٹس کی کاپی دینے سے انکار کر دیا۔

Don`t copy text!