دہلی کورٹ

کانگریس رہنما پی چدمبرم (فوٹو : پی ٹی آئی)

آئی این ایکس میڈیا معاملہ: ای ڈی نے سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کو گرفتار کیا

آئی این ایکس میڈیا منی لانڈرنگ معاملے میں دہلی کی ایک عدالت نے ای ڈی کو سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم سے پوچھ تاچھ کرنے اور گرفتار کرنے کی اجازت دی تھی۔ حالانکہ، عدالت نے ای ڈی کو چدمبرم سے راؤز ایونیو عدالت کے احاطے میں پوچھ تاچھ کی اجازت دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا تھا کہ عوامی طور سے گرفتار کرنا ان کی عزت کے لحاظ سے ٹھیک نہیں ہے۔

فوٹو: رائٹرس

سونیا گاندھی اور منموہن سنگھ نے تہاڑ جیل میں سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم سے ملاقات کی

سابق وزیر خزانہ اور کانگریس کے سینئر رہنما پی چدمبرم آئی این ایکس میڈیا معاملے میں مبینہ منی لانڈرنگ کے الزام میں عدالتی حراست میں ہیں۔ سی بی آئی نے ان کو 21 اگست کو گرفتار کیا تھا۔

فوٹو: رائٹرس

آئی این ایکس میڈیا معاملہ: سپریم کورٹ نے چدمبرم کو پیشگی ضمانت دینے سے انکار کیا

سابق وزیر خزانہ اور کانگریسی رہنما پی چدمبرم کو 21 اگست کی رات کو سی بی آئی نے آئی این ایکس میڈیا معاملے میں گرفتار کیا تھا۔ اس کے بعد سے وہ سی بی آئی کی حراست میں ہیں۔ چدمبرم کو پیشگی ضمانت دینے سے سپریم کورٹ کے انکار کے کے بعد اب ای ڈی ان کو حراست میں لے سکتی ہے۔

جسٹس سنیل گوڑ (فوٹو بہ شکریہ : دہلی ہائی کورٹ)

چدمبرم کی ضمانت عرضی خارج کرنے والے جج منی لانڈرنگ ٹریبونل کے چیئر پرسن بنے

دہلی ہائی کورٹ کے سابق جج جسٹس سنیل گوڑ نے آئی این ایکس میڈیا بد عنوانی معاملے میں پچھلے ہفتے کانگریس کے سینئر رہنما پی چدمبرم کی پیشگی ضمانت عرضی خارج کر دی تھی، جس کے بعد سی بی آئی نے ان کو گرفتار کیا تھا۔

سپریم کورٹ (فوٹو : پی ٹی آئی)

آئی این ایکس میڈیا : سپریم کورٹ نے سی بی آئی معاملے میں چدمبرم کی پیشگی ضمانت عرضی خارج کی

کورٹ نے کہا کہ اس عرضی کا اب کوئی مطلب نہیں ہے کیونکہ چدمبرم کو پہلے ہی گرفتار کیا جا چکا ہے اور وہ سی بی آئی کی حراست میں ہیں۔ وہ باقاعدہ ضمانت کے لئے ٹرائل کورٹ کے سامنے عرضی دائر کر سکتے ہیں۔

ٖفوٹو: پی ٹی آئی

ای ڈی معاملے میں چدمبرم کو ملی عبوری راحت، سی بی آئی معاملے میں حراست برقرار

سپریم کورٹ نے آئی این ایکس میڈیا معاملےمیں ای ڈی کے ذریعے درج منی لانڈرنگ کےمعاملے میں 26 اگست تک گرفتاری سے چھوٹ دے دی۔اسی معاملے میں چدمبرم کو 26 اگست تک پوچھ تاچھ کے لیے سی بی آئی کی حراست میں بھیجا گیا ہے۔

ٖفوٹو: پی ٹی آئی

سی بی آئی نے آئی این ایکس میڈیا معاملے میں سابق وزیر خزانہ چدمبرم کو ان کے گھر سے گرفتار کیا

آئی این ایکس میڈیا معاملے میں دہلی ہائی کورٹ سے پیشگی ضمانت عرضی خارج ہونے کے بعد سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کو سی بی آئی نے بدھ کو دیر رات ان کے گھر سے گرفتار کیا۔ اس سے پہلے کانگریس ہیڈکوارٹر پر ایک پریس کانفرنس کرکے چدمبرم نے دعویٰ کیا کہ وہ قانون سے بھاگ نہیں رہے ہیں اور ان کے خلاف لگائے گئے الزام جھوٹے ہیں۔

فوٹو: رائٹرس

چدمبرم نے سی بی آئی سے کی اپیل، سپریم کورٹ میں سماعت تک کوئی جبراً  کارروائی نہ کریں

آئی این ایکس میڈیا معاملے میں دلی ہائی کورٹ سے پیشگی ضمانت عرضی خارج ہونے کے بعد سی بی آئی افسر سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کی دلی واقع رہائش گاہ پہنچے، لیکن وہاں ان سے ملاقات نہیں ہونے پر افسروں نے نوٹس جاری کر کےان کو دو گھنٹے میں پیش ہونے کی ہدایت دی ہے۔

سپریم کورٹ/ فوٹو: پی ٹی آئی

1984 سکھ مخالف فسادات: سپریم کورٹ نے 33 لوگوں کو ضمانت دی

سپریم کورٹ نے دہلی ہائی کورٹ کے حکم کے خلاف دائر کی گئی عرضی پر یہ فیصلہ دیا ہے۔ اس سے پہلے نچلی عدالت کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہوئے دہلی ہائی کورٹ نے ان لوگوں کو مجرم قرار دیا تھا اور پانچ سال جیل کی سزا سنائی تھی۔

فوٹو: اے این آئی

سپریم کورٹ نے سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کے بیٹے کارتی چدمبرم کو دی نصیحت کہا ؛ قانون سے نہ کھیلیں

غور طلب ہے کہ آئی این ایکس میڈیا معاملے میں سی بی آئی کے ریڈ کارنر نوٹس کی وجہ سے کارتی چدمبرم کو ہر بار ملک سے باہر جانے سے پہلے سپریم کورٹ سے اجازت لینی پڑتی ہے۔

جواہر لال نہرو یونیورسٹی (فوٹو : پی ٹی آئی)

جے این یو سیڈیشن معاملہ: وزیر قانون نے کہا، لاء سکریٹری نے مجھے دکھائے بنا فائل ہوم ڈپارٹمنٹ کو کیسے بھیجی

جواہر لال نہرو یونیورسٹی سیڈیشن معاملے میں دہلی ہائی کورٹ نے پولیس کے ذریعے دائر چارج شیٹ کو منظور کرنے سے انکار کر دیا تھا اور دہلی حکومت کے وزارت قانون سے اجازت لینے کو کہا تھا۔

Apporvanand

اپوروانند کی ماسٹر کلاس: 1984 معاملے میں سجن کمارکو سزا ،2002 کے ملزموں کو وارننگ؟

دہلی ہائی کورٹ نے 1984 کے سکھ مخالف فسادات میں 34 سال بعد کانگریس رہنما سجن کمار کو عمر قید کی سزا سنائی ہے ۔ لیکن انصاف ایک ہی خاندان کو ملا ہے ۔ کیوں انصاف کے لیے غیر معمولی کوشش کرنی پڑتی ہے اور ایک جمہوریت میں انصاف ملنا عام بات نہیں ہے ۔ کیاہم قاتل کے ساتھ رہنے کے عادی ہوگئے ہیں ؟ پروفیسر اپوروانند کی پہلی ماسٹر کلاس۔

علامتی فوٹو: پی ٹی آئی

1993،1984، 2002 کے فسادات میں اقلیتوں کو نشانہ بنانے میں سیاسی رہنماؤں اور پولیس کی تھی ملی بھگت: ہائی کورٹ

دہلی ہائی کورٹ نے کانگریس رہنما سجن کمار کو عمر قید کی سزا دیتے ہوئے کہا کہ انسانیت کے خلاف جرم اور قتل عام ہمارے گھریلو قانون کا حصہ نہیں ہیں۔ ان کمیوں کو ختم کرنے کی جلد سے جلد ضرورت ہے۔