Muslim family

29 اگست کے حملے کا اسکرین شاٹ۔ (تصویر: اسپیشل ارینجمنٹ)

اتراکھنڈ: جائیداد کے جھگڑے میں پڑوسیوں نے مبینہ طور پر مسلم فیملی پر حملہ کیا

یہ واقعہ اتراکھنڈ کے ہری دوار ضلع کے جھبریڑا قصبے کا ہے۔ ایک مسلم فیملی کا اپنے پڑوسیوں کے ساتھ جائیداد کو لے کر تنازعہ چل رہا ہے، جس کو لے کر انہیں پہلے بھی دھمکیاں مل چکی ہیں، جس کی شکایت انہوں نے پولیس میں بھی درج کرائی تھی۔ شکایت پر کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ 29 اگست کو پڑوسیوں نے ہتھیاروں کے ساتھ فیملی پر مبینہ طور پر حملہ کیا تھا۔

Cow-Vigilante-Nuh-Muslims

ہندو مہاپنچایت میں ہریانہ حکومت کو ایک مہینے میں گائے کی اسمگلنگ اور گئو کشی ختم کرنے کا الٹی میٹم

ہریانہ کے نوح ضلع میں ‘ہندو مہاپنچایت’ بلائی گئی تھی، جس میں گئو رکشکوں کے خلاف درج ایف آئی آر کو واپس لینے اور انہیں لائسنسی اسلحہ دینے سمیت کئی مطالبات کیے گئے۔ یہ مہاپنچایت نوح میں ان واقعات کے بیچ بلائی گئی تھی جن میں مبینہ طور پر گئو رکشکوں کے گروپوں نے مسلم نوجوانوں کو پیٹنے کے ساتھ ان اغوا کیا اور ان پرمویشیوں کی اسمگلنگ اور گئو کشی کا الزام لگایا گیا تھا۔

0205 Akanksha GR.00_04_06_04.Still008

گائے کا دودھ بیچنے والے مسلم خاندان پر کون کر رہا ہے حملہ؟

ویڈیو: روزی روٹی کے لیے دودھ بیچنے والے مسلم ڈیری فارمر کے ساتھ مبینہ گئو رکشکوں کے ذریعے مارپیٹ اور بدتمیزی کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ ان کا الزام ہے کہ ڈیری فارمر ہریانہ کے شیخ پور گاؤں میں گائے کا گوشت فروخت کر رہے تھے۔

Don`t copy text!