Uttarakhand govt

بابا رام دیو اور آچاریہ بال کرشنن۔ (فوٹو: رائٹرس)

کبھی نہیں کہا کہ پتنجلی کی کورونل سے کورونا کا علاج ہو سکتا ہے: آچاریہ بال کرشنن

بابا رام دیو نے گزشتہ23 جون کو‘کورونل’نام کی دوا لانچ کرتے ہوئے اس کے کووڈ 19 کے علاج میں صد فیصدکارگر ہونے کا دعویٰ کیا تھا۔ اس کے بعد وزارت آیوش نے دوا کےاشتہار پر روک لگاتے ہوئے کمپنی سے اس کے کلینیکل ٹرائل اور ریسرچ کی تفصیلات فراہم کرنے کو کہا تھا۔

ہری دوار میں کورونل دوا لانچ کرتے یوگ گرو رام دیو اور آچاریہ بال کرشنن(فوٹو:ٹوئٹر/پتنجلی آیوروید)

پتنجلی کورونا کٹ: چنڈی گڑھ میں رام دیو کے خلاف معاملہ درج، جئے پور کے نمس ہاسپٹل کو نوٹس

پتنجلی آیوروید کی کورونا کٹ کو لےکر چنڈی گڑھ کی ایک عدالت میں ملاوٹی دوا بیچنے اور دھوکہ دھڑی کی مختلف دفعات میں معاملہ درج کروایا گیا ہے۔ وہیں راجستھان حکومت نے اس دوا کے ‘کلینیکل ٹرائل’ کو لےکرنیشنل انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز اینڈ ریسرچ سے وضاحت طلب کی ہے۔

2402 Rtu.00_25_29_00.Still005

کورونا وائرس کی دوا بنانے کا پتنجلی کا دعویٰ سوالوں کے گھیرے میں کیوں ہے؟

ویڈیو: بابا رام دیو کی پتنجلی آیوروید نے کووڈ 19 کے علاج میں صدفیصدمؤثر ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے دوا لانچ کی ہے۔حالانکہ وزارت نے ان کے دعووں کی جانچ ہونے تک اس دوا کی تشہیراورفروخت پر روک لگادی ہے۔

ہری دوار میں کورونل دوا لانچ کرتے یوگ گرو رام دیو اور آچاریہ بال کرشنن(فوٹو:ٹوئٹر/پتنجلی آیوروید)

پتنجلی کی ’کورونل‘ نہ سائنسی طور پر تصدیق شدہ ہے، نہ ہی اس کو متعلقہ محکموں سے اجازت ملی ہے

پتنجلی آیوروید کی کورونا کٹ کی صداقت پرسنگین سوالات اٹھ رہے ہیں۔کمپنی نے کورونا کےصد فیصد علاج کادعویٰ کرنے والی اس دوا سے متعلق کچھ دستاویزوزارت آیوش کو سونپے ہیں، لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ ثابت نہیں ہوتا ہے کہ اس سے کووڈ 19 ٹھیک ہو جائےگا۔

(فائل فوٹو : رائٹرس)

کیدارناتھ سانحہ میں لاپتہ 3322 لوگوں کو تلاش کرنے کے لئے حکومت نے کیا قدم اٹھائے: اتراکھنڈ ہائی کورٹ

ایک پی آئی ایل میں الزام لگایا گیا ہے کہ جون 2013 میں کیدارناتھ میں بھاری بارش اور لینڈ سلائڈ کے بعد لاپتہ ہونے والے لوگوں کو ڈھونڈنے کے لئے چھے سال بعد بھی اتراکھنڈ حکومت نے کوئی خاص قدم نہیں اٹھایا ہے۔

Don`t copy text!