Agnipath Scheme

سہسراؤں کا میدان۔ (تصویر: منوج سنگھ)

 گورکھپور: چار ہزار نوجوانوں کو فوجی بنانے والے گراؤنڈ میں اگنی پتھ کے بعد ہے ویرانہ آباد

گورکھپور کے جس سہسراؤں گراؤنڈ میں پسینہ بہانے کے بعد 3800 لڑکے اور 28 لڑکیوں کا انتخاب گزشتہ ڈھائی دہائیوں میں فوج اور نیم فوجی دستوں میں کیا گیا، وہاں آج ویرانہ آباد ہے۔ اگنی پتھ اسکیم کی وجہ سے نوجوانوں میں فوج کے لیے جوش و جذبہ ختم ہو گیا ہے۔

ایک فوجی دفتر کے باہر کی تصویر۔ (فوٹو: دیپک گوسوامی/دی وائر)

اگنی پتھ اسکیم پر اٹھنے والے سوالوں کے پیش نظر فوج اس کے اثرات کا جائزہ لے گی

اگنی پتھ اسکیم پر دی وائر کی جاری سیریز کے درمیان یہ بات سامنے آئی ہے کہ فوج ایک اندرونی سروے کر رہی ہے، جس کا مقصد فوج کی بھرتی کے عمل پر اس اسکیم کے اثرات کا جائزہ لینا ہے۔ فوج کے اس سروے میں تمام اسٹیک ہولڈروں سے ان کی رائے طلب کی گئی ہے۔

بانکا میں امیدواروں کو ریت پر ٹریننگ دیتے انسٹرکٹر مونو رنجن۔ (تصویر: اسپیشل ارینجمنٹ)

اگنی پتھ اسکیم: بہار میں منتخب ہونے کے بعد بھی نوکری چھوڑ رہے ہیں اگنی ویر

دیگر رپورٹس بھی بتاتی ہیں کہ اگنی پتھ اسکیم کے تحت منتخب ہونے والے بہت سے نوجوانوں نے ٹریننگ کے درمیان ہی نوکری چھوڑ دی تھی۔ یہ نوجوان فوج کی نوکری میں جانا تو چاہتے ہیں، لیکن اگنی پتھ نے ان کے جذبے پر پانی پھیر دیا ہے۔

اتر پردیش کے گہمر گاؤں میں فوج کی تیاری کرتے نوجوان۔ (تمام تصاویر: آشوتوش کمار پانڈے)

اگنی پتھ اسکیم کا فوج کی صلاحیت پر منفی اثر پڑے گا: سابق فوجی

سابق فوجیوں کا کہنا ہے کہ جب آپ لڑکوں کو چار سال کے معاہدے پر بھرتی کریں گےتو ممکن ہے کہ کہیں کم اورکمتر لڑکے فوج میں جائیں گے، جن کے اندر جنون کم ہوگا، اور ملک کے لیے جذبہ ایثار و قربانی بھی نہیں ہوگا۔ کیا فوج کو اس سطح اور معیار کے جوان مل پائیں گے جو انہیں مطلوب ہیں؟

ہندوستانی فوج کی ایک بھرتی ریلی میں نوجوان۔ (تصویر بہ شکریہ: ADGPI/Pixabay)

اگنی پتھ اسکیم کے بعد فوجیوں کے گاؤں میں فوج سے دوری، ویزا نہ ملنے پر ڈنکی مارنے سے بھی گریز نہیں

اس اسکیم سے ان گاؤں دیہات اور نوجوانوں کی زندگیوں پر کیا اثر پڑا ہے؟ کیا اب یہ فوجیوں کے گاؤں نہیں کہلائیں گے؟ زندگی کا واحد خواب چکنا چور ہونے کے بعد یہ نوجوان اب کیا کر رہے ہیں؟ کیا فوج کو اس اسکیم کی ضرورت ہے؟ کیا یہ فوج کی جدید کاری کے لیے ضروری قدم ہے؟ ان سوالوں کی چھان بین کے لیے دی وائر نے ملک کے کئی ایسے علاقوں کا دورہ کیا۔ اس سلسلے میں پہلی قسط ہریانہ سے۔

Yaqut 2

اگنی پتھ ملٹری بحالی اسکیم: کیلاش وجے ورگیہ کے ’چوکیدار‘ والے تبصرے پر طلبا کا جواب

ویڈیو: اگنی پتھ اسکیم کے سلسلے میں نوجوانوں کے احتجاج کے بیچ مرکزی وزیر جی کشن ریڈی نے کہا تھا کہ اگنی پتھ کے رنگ روٹوں کو ‘ڈرائیور، الیکٹریشن، دھوبی اور نائی کی مہارت’ کے ساتھ تربیت دی جائے گی۔ وہیں، بی جے پی کے جنرل سکریٹری کیلاش وجے ورگیہ نے کہا تھا کہ اگر انہیں پارٹی دفتر میں سیکورٹی رکھنی ہے تو وہ کسی سابق ‘اگنی ویر’ کو ترجیح دیں گے۔

SV Apoorvanand.00_29_33_19.Still002

کیا حکومت ہی ملک میں انارکی پھیلا رہی ہے؟

ویڈیو: اگنی پتھ سے لے کر سی اے اے، زرعی قانون اور نوٹ بندی کی وجہ سے ملک میں احتجاجی مظاہروں کے سلسلے میں مودی کی حکومت کے بارے میں دی وائر کے بانی ایڈیٹر سدھارتھ وردراجن اور دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر اپوروانند کی بات چیت۔

yaqut

’جب مودی جی اپنی ماں کی سالگرہ منا رہے تھے تب ہم سب کی ماں گھر میں رو رہی تھی‘

ویڈیو: وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے 14 جون 2022 کو تینوں فوج کے سربراہوں کی موجودگی میں اگنی پتھ اسکیم کا اعلان کیا تھا۔ اسکیم کے آنے کے بعد سے ملک بھر میں احتجاجی مظاہرہ جاری ہے، آخر کیوں حکومت کے اس اسکیم کی مخالفت کی جا رہی ہے۔ دی وائر کی یہ رپورٹ دیکھیے۔

جمعہ کو دھنباد میں ریلوے ٹریک پر اگنی پتھ اسکیم  کے خلاف احتجاج میں بیٹھے نوجوان۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

رویش کمار کا بلاگ: اگنی ویروں! ’آپ لڑنے لائق نہیں بچے ہیں، فرقہ پرستی آپ کے اندر کی شہری زبان ختم کر چکی ہے‘

نوکریوں کے سلسلے میں نوجوانوں کا کوئی بھی مظاہرہ صرف ان کی اپنی نوکریوں کے لیے ہے۔ اس لیے نوکری اور نوجوانوں کا مبینہ غصہ سیاسی ایشو ہوتے ہوئے بھی ووٹ کا ایشو نہیں۔ جس لڑائی کو آپ لڑنے چلے ہیں، اس کو آپ بہت پہلے روند چکے ہیں۔ آپ نےدوسروں کی ایسی بہت سی لڑائیاں ختم کی، میدان تک ختم کر دیے۔ اب جب کہ میدان دلدل میں بدل گیا ہے، تب اس میں لڑائی کے لیے اتر ے ہیں۔ آپ پھنستے چلے جائیں گے۔