Farmers Protest

 (علامتی فوٹو : رائٹرس)

پردھان منتری فصل بیمہ یوجنا: کمپنیوں نے کسانوں کے2800 کروڑ روپے کا دعویٰ نہیں چکایا

بیمہ کمپنیوں کو اکتوبر 2018 تک 66242 کروڑ روپے کا پریمیم مل چکا ہے۔ ایک طرف کمپنیوں کو وقت پر پریمیم مل رہا ہے، وہیں دوسری طرف کسانوں کے دعوے کی ادائیگی کئی مہینوں سے زیر التوا ہے۔

خراب ہوئی فصل کو دیکھتا کسان (فوٹو : پی ٹی آئی)

مودی حکومت کی فصل بیمہ یوجنا سے کمپنیوں کے پریمیم میں 350 فیصدی کا اضافہ

وائر کی اسپیشل رپورٹ: آر ٹی آئی سے ملی جانکاری کے مطابق پردھان منتری فصل بیمہ یوجنا کے تحت کمپنیوں کو پہلے کی بیمہ اسکیموں کے مقابلے میں36848 کروڑ روپے کا زیادہ پریمیم ملا ہے جبکہ کور کئے گئے کسانوں کی تعداد میں صرف 0.42 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

پی سائی ناتھ اور نریندر مودی۔  (فوٹو : پی ٹی آئی/فیس بک)

رافیل سے بھی بڑا گھوٹالہ ہے پردھان منتری فصل بیمہ یوجنا: پی  سائی ناتھ

سینئر صحافی اور کسان کارکن سائی ناتھ نے دعویٰ کیا کہ مہاراشٹر کے ایک ضلع‎ میں فصل بیمہ یوجنا کے تحت کل 173 کروڑ روپے ریلائنس انشیورنس کو دئے گئے۔ فصل برباد ہونے پر ریلائنس نے کسانوں کو صرف 30 کروڑ روپے کی ادائیگی کی اور بنا ایک پیسہ لگائے 143 کروڑ روپے کا منافع کما لیا۔

Episode 40

میڈیا بول : کسانوں کا درد اور ٹی وی میں پارٹی اینکر

میڈیا بول کے اس ایپی سوڈ میں سنیے کسان ریلی اور نیوز چینل آج تک پر اینکرنگ کرنے والے بی جے پی کے ترجمان سنبت پاتراپر نیشنل ہیرالڈ کی سینئر ایڈیٹر بھاشا سنگھ اور آج تک کے سابق ایگزکیٹوایڈیٹر امیتابھ سریواستوا کے ساتھ ارملیش کی بات چیت

فوٹو: پتریکا

راجستھان : فصلوں کے لئے پانی کی مانگ کو لےکر درختوں سے الٹا لٹک کر کسان کر رہے ہیں مظاہرہ 

راجستھان کے بوندی ضلع‎ کے کسانوں کا کہنا ہے کہ کئی بار انتظامیہ سے نہر کا پانی پہنچانے کی مانگ کی، لیکن کوئی شنوائی نہیں ہو رہی۔ فصلوں کو پانی کی ضرورت ہے۔ اگر پانی نہیں ملا تو وہ سوکھ جائیں‌گی۔

Photo : PTI

بجٹ کسانوں کو چکمہ دینے کے لئے ہوگا، وعدے لبالب اور نتیجے ٹھن ٹھن 

آپ کے ملک میں اکتوبر سے لےکر آدھی جنوری تک ایک فلم کو لےکر بحث ہوئی ہے۔ ساڑھے تین مہینے بحث چلی۔ نوکری پر اتنی لمبی بحث ہوئی؟ بہتر ہے آپ بھی تنخواہ کی نوکری چھوڑ کرہندومسلم ڈبیٹ کی نوکری کر لیجئے۔

farmers-3

کیا لبرلائزیشن کی وجہ سے بد حال ہیں کسان؟

 اس ملک میں زراعت اور ان داتا کے بحران پر ہماری سیاست نے کبھی بھی ایمانداری نہیں دکھائی۔ آزادی کے بعد زراعت سال در سال خستہ ہوتی چلی گئی۔ حکومتوں نے ترقی کے نام پر جتنے بھی خواب اس ملک کو دکھائے ان سب کے مرکز میں زراعت […]

farmers-1

کارپوریٹ قرض معافی بنام کسان قرض معافی:آخر ترقی کا پیمانہ کیا ہے؟

کسان اپنی پیداواربہت کم قیمت پر بیچنےکو مجبور ہیں،لیکن سیاست اور حکمراں  طبقے نے ان کے مسائل کو اپنی بیان بازیوں تک محدود کر رکھا ہے ۔ ملک کے سیاستداں اکثر ہندوستان کی کل آبادی کے ساٹھ فیصد حصے یعنی کسانوں کے تئیں اپنی اثرانگیز تقریر میں کسان […]