Uttarakhand

(علامتی تصویر بہ شکریہ: فیس بک)

پتنجلی آیوروید کے اشتہارات کے خلاف کارروائی نہ ہونے کے حوالے سے ڈاکٹر نے مرکز سے شکایت کی

کیرالہ کے ڈاکٹر کیوی بابو نے مرکز سے شکایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بذات خود مرکزی وزارت کی متعدد ہدایات اور وزیر اعظم کے دفتر کی مداخلت کے باوجود پتنجلی کی ہربل مصنوعات کے گمراہ کن اشتہارات کے سلسلے میں اتراکھنڈ کے حکام نے پتنجلی آیوروید کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی ہے۔

Atul-vid

یونیفارم سول کوڈ کے بارے میں کیا سوچتے ہیں اتراکھنڈ کے لوگ؟

ویڈیو: اتراکھنڈ اسمبلی نے یکساں سول کوڈ بل کو پاس کر دیا ہے، جو ریاست کی آدی واسی کمیونٹی کے علاوہ تمام برادریوں پر لاگو ہوگا۔ اس بل میں شادی، طلاق اور لیو ان ریلیشن شپ کے لیے مختلف اہتمام کیے گئے ہیں۔ اس بارے میں راجدھانی دہرادون کے لوگوں سے بات چیت۔

maxresdefault-2

بل سے کچھ برادریوں کو باہر رکھا گیا ہے تو یہ یکساں سول کوڈ کیسے ہوا: اتراکھنڈ کانگریس

ویڈیو: اتراکھنڈ میں بی جے پی کی قیادت والی پشکر سنگھ دھامی کی حکومت نے حال ہی میں اسمبلی میں یکساں سول کوڈ بل کو پاس کیا ہے۔ اس معاملے پر اتراکھنڈ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر کرن ماہرا سے دی وائر کے اتل ہووالےکی بات چیت۔

maxresdefault-3

عدالت کی اجازت کے بغیر گرایا گیا مدرسہ، کیوں چھپائی جا رہی ہے ہلدوانی کی سچائی؟

ویڈیو: اتراکھنڈ کے ہلدوانی شہر میں میونسپل کارپوریشن کی جانب سےبن بھول پورہ علاقے میں ایک مدرسہ کو ‘تجاوزات’ قرار دیتے ہوئے اس کو گرانے کی کارروائی کے بعد تشدد پھوٹ پڑا تھا۔ اس میں کم از کم پانچ افراد کی موت کی تصدیق ہو چکی ہے۔ اس معاملے پر دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی کا نظریہ۔

(تصویر بہ شکریہ: ایکس)

اتراکھنڈ: مدرسہ گرانے کو لے کر ہوئے تنازعہ کے بعد تشدد میں دو کی موت، شوٹ ایٹ سائٹ کے آرڈر

ہلدوانی میں میونسپل کارپوریشن کی جانب سے بن بھول پورہ علاقے میں ایک مدرسہ کو ‘تجاوزات’ قرار دیتے ہوئے توڑنے کی کارروائی کے بعد علاقے میں تشدد پھوٹ پڑا تھا۔ ضلع انتظامیہ نے دو افراد کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کی وجہ معلوم نہیں ہے۔ بتایا گیا ہے کہ 50 سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں۔

اتراکھنڈ اسمبلی میں وزیر اعلیٰ پشکر سنگھ دھامی۔ (تصویر: ویڈیو سے اسکرین گریب)

اتراکھنڈ یکساں سول کوڈ منظور کرنے کی طرف گامزن؛ غیر رجسٹرڈ لیو اِن ریلیشن شپ کے لیے ہوگی جیل

بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت کی طرف سے اتراکھنڈ اسمبلی میں پیش کیے گئے یکساں سول کوڈ بل کے حوالے سےاپوزیشن کانگریس کا الزام ہے کہ حکومت نے کانگریس کے اراکین اسمبلی کو ان دفعات کا مطالعہ کرنے یا ان کے جائزہ کے لیے وقت دیے بغیر بل پیش کر دیا اور بغیر بحث کے قانون کو منظور کرنا چاہتی ہے۔

(علامتی تصویر بہ شکریہ: فیس بک)

اتراکھنڈ وقف بورڈ نے کہا – اس کے مدارس بچوں کو بھگوان رام کی کہانی اور ان کے اقدار بھی پڑھائیں گے

اتراکھنڈ وقف بورڈ کے چیئرمین شاداب شمس نے کہا کہ بورڈ اس سال مارچ سے چار مدارس میں تبدیلیوں کو نافذ کرے گا اور بعد میں اسے اپنے زیر کنٹرول تمام 117 مدارس میں لاگو کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ مارچ سے چار جدید مدارس کام کرنا شروع کر دیں گے۔ وقف بورڈ فروری سے اس کے لیے اہل اساتذہ کی تلاش شروع کرے گا۔

گزشتہ 12 نومبر کو اتراکھنڈ کے سلکیارا میں زیر تعمیر سرنگ میں 41 مزدور پھنس گئے تھے۔ (تصویر بہ شکریہ: اے این آئی)

ہندو اور مسلمانوں نے مل کر سرنگ میں پھنسے 41 مزدوروں کو بچایا: ریسکیو کمپنی کے چیف

اتراکھنڈ کے سلکیارا میں 17 دنوں سے سرنگ میں پھنسے 41 مزدوروں کو بچانے والی کمپنی راک ویل انٹرپرائزز کے مالک وکیل حسن نے کہا کہ یہ کام کوئی اکیلا نہیں کر سکتا تھا۔ ہم سب کو یہی پیغام دینا چاہتے ہیں۔ ہم سب کو مل جل کر رہنا چاہیے اور نفرت کا زہر نہیں پھیلانا چاہیے۔

(تصویر بہ شکریہ: ٹوئٹر/@jayanta_malla)

اتراکھنڈ کی سُرنگ میں 41 مزدوروں کے پھنسنے کا ذمہ دار کون؟

اتراکھنڈ کے سلکیارا میں 12 نومبر کو زیر تعمیر سُرنگ کا ایک حصہ منہدم ہونے کے باعث پھنسے 41 مزدوروں کو بالآخر سترہ دنوں کی سخت جدوجہد کے بعد نکال لیا گیا۔ لیکن وہ کون سی غلطیاں تھیں، جن کی وجہ سے یہ صورتحال پیدا ہوئی؟

 (علامتی تصویر: اسپیشل ارینجمنٹ)

اتراکھنڈ: دائیں بازو کے لوگوں نے رشی کیش میں دو مزاروں میں توڑ پھوڑ کی، ایف آئی آر درج

اتراکھنڈ کے رشی کیش شہر میں دیو بھومی رکشا ابھیان نامی دائیں بازو کے ایک گروپ کے لوگوں نے گزشتہ ہفتے دو مزاروں میں توڑ پھوڑ کی اور مبینہ طور پر اس واقعہ کو سوشل میڈیا پر لائیو نشر کیا۔ اتراکھنڈ پولیس نے لوگوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے الزام میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے۔

یتی نرسنہا نند، فوٹو بہ شکریہ: فیس بک

عدلیہ کے خلاف مبینہ توہین آمیز تبصرے کے لیے نرسنہانند کو نوٹس جاری

سپریم کورٹ میں دائر توہین عدالت کی عرضی میں کہا گیا ہے کہ کٹر ہندوتوا لیڈر یتی نرسنہانند نے جنوری 2022 میں ایک انٹرویو کے دوران کہا تھا کہ ہمیں سپریم کورٹ اور آئین پر کوئی بھروسہ نہیں ہے۔ جو لوگ سپریم کورٹ آف انڈیا پر بھروسہ کرتے ہیں ، وہ کتے کی موت مریں گے۔

15 جون کو مجوزہ 'مہاپنچایت' کے وقت پرولا میں بند مقامی بازار ۔ (تصویر: اتل ہووالے/دی وائر)

اتراکھنڈ: کیو ں پرولا کے مسلمان بی جے پی لیڈر ٹھگا ہوا محسوس کر رہے ہیں؟

اترکاشی ضلع کے پرولامیں ہندوتوا تنظیموں کے ذریعےمسلمانوں اور ان کی املاک کو نقصان پہنچائے جانے کے بعد متعددمسلم خاندان قصبے سےجا چکے ہیں۔ ان میں بی جے پی کے اقلیتی محاذ سے وابستہ لیڈران بھی شامل ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ اگر ریاستی حکومت مسلمانوں کی مدد کرنا چاہتی تو ایسا نہیں ہوتا۔

purola-video-thumb

اتراکھنڈ: پرولا میں مہاپنچایت ملتوی ہونے کے بعد دکانداروں نے کہا – میڈیا نے گمراہ کیا

ویڈیو: اتراکھنڈ کے پرولا میں دائیں بازو کی تنظیموں کی طرف سے مجوزہ ‘مہاپنچایت’ کے ملتوی ہونے کے ایک دن بعد مقامی بازار کھلے ہوئے نظر آئے۔ دی وائر سے بات چیت میں دکانداروں کا کہنا ہے کہ اس علاقے نے پہلے ہندو اورمسلم کے درمیان دشمنی نہیں دیکھی اور اب میڈیا کے ذریعے کچھ لوگوں نے یہ مشتہر کیا کہ یہاں کچھ غلط ہو رہا ہے۔

Arfa-ji-thumb

’لو جہاد‘ کے نام پر اسلام کو بدنام کیا جا رہا ہے: مولانا محمود مدنی

ویڈیو: اتراکھنڈ کے پرولا میں فرقہ وارانہ کشیدگی کے درمیان جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا محمود اسد مدنی نے وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیر اعلیٰ پشکر سنگھ دھامی کو خط لکھ کرمسلمانوں کو کھلے عام دھمکی اور نقل مکانی کی خبروں پرتشویش کا اظہار کیاتھا۔ان سے دی وائر کی سینئر ایڈیٹر عارفہ خانم شیروانی کی بات چیت۔

aki-thumb

’دکانیں خالی کرو یا خمیازہ بھگتو‘؛ اتراکھنڈ میں خوف کے سایے میں مسلم دکاندار

ویڈیو: گزشتہ ماہ مسلم کمیونٹی کے ایک شخص سمیت دو نوجوانوں نے مبینہ طور پر ایک لڑکی کو اغوا کرنے کی کوشش کی تھی، اس کے بعد اتراکھنڈ کے اترکاشی شہر میں حالات کشیدہ ہیں۔ اس کشیدگی کے درمیان پرولابازار میں کچھ پوسٹر لگائے گئے تھے، جس میں مسلم تاجروں سے کہا گیا ہے کہ وہ 15 جون سے پہلے اپنی دکانیں خالی کر دیں۔

اترکاشی شہر کا پرولا ٹاؤن۔ (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک/اگزاٹک اتراکھنڈ)

کیوں پرامن رہنے والے اتراکھنڈ کو فرقہ پرستی کی آگ میں جھونکا جا رہا ہے؟

سال 2021 میں ہونے والی مردم شماری ابھی تک نہیں ہوئی ہے، لیکن اتراکھنڈ میں ایک خاص مذہب کے لوگوں کی آبادی میں اضافے کے فرضی اعداد و شمار کھلے عام مشتہر کیے جا رہے ہیں۔ وہیں، ریاستی حکومت سپریم کورٹ کی سرزنش کی پرواہ نہ کرتے ہوئےکبھی تبدیلی مذہب کے قانون ،کبھی یکساں سول کوڈ، تو کبھی ‘لینڈ جہاد’ کے نام پر فرقہ پرست عناصر کو ہوا دے رہی ہے۔

اتراکھنڈ کے اترکاشی شہر میں مسلمانوں کو دکانیں خالی کرنے کی دھمکی دینے سے متعلق  پوسٹر۔ (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک ویڈیو گریب)

اتراکھنڈ: مسلمان تاجروں کو دکانیں خالی کرنے کی دھمکی دینے والے پوسٹر چسپاں

گزشتہ ماہ مسلم کمیونٹی کے ایک شخص سمیت دو نوجوانوں نے مبینہ طور پر ایک لڑکی کو اغوا کرنے کی کوشش کی تھی، اس کے بعد سے اتراکھنڈ کے اترکاشی شہر میں کشیدگی دیکھنے کو مل رہی ہے۔اس کشیدگی کے درمیان پرولا بازار میں کچھ پوسٹر چسپاں کیے گئے تھے، جس میں مسلم تاجروں سے 15 جون کو ہونے والی مہاپنچایت سے پہلے دکانیں خالی کرنے کو کہا گیا ہے۔

پشکر سنگھ دھامی۔ (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک)

دیو بھومی میں ’لینڈ جہاد‘ کو پنپنے نہیں دیں گے، غیر قانونی مزاروں کو منہدم کریں گے: اتراکھنڈ سی ایم

غیر قانونی مزاروں کو منہدم کرنے کی بات کہتے ہوئے اتراکھنڈ کے وزیر اعلیٰ پشکر سنگھ دھامی نے کہا ہے کہ یہ نیا اتراکھنڈ ہے، یہاں تجاوزات کرنا تودور اس کے بارے میں اب کسی کوسوچنا بھی نہیں چاہیے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ وہ کچھ مہینوں کے بعد ریاست میں یکساں سول کوڈ کا قانون بھی نافذ کریں گے۔

دوسری جماعت کی انگریزی کی کتاب میں ماں باپ کے لیے امّی اور ابو کا استعمال کیا گیا ہے۔ (تصویر: ٹوئٹر/@Delhiite_)

اتراکھنڈ: نصابی کتاب میں والدین کے لیے اردو لفظ کے استعمال پر تحقیقات کا حکم

دہرادون کے ڈی ایم کے سامنے دوسری جماعت کے ایک طالبعلم کے والدین نے اپنی شکایت میں کہا ہے کہ ان کے بیٹے نے اسکول کی ایک کتاب میں والدین کے لیے اردو کے لفظ پڑھ کر انھیں ‘امی اور ابو’ کہا۔انہوں نے ان الفاظ کے استعمال کو ‘مذہبی عقیدے پر حملہ’ قرار دیتے ہوئے کتاب پر پابندی لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔

(علامتی تصویر، فوٹو: رائٹرس)

ہیٹ اسپیچ معاملے میں سپریم کورٹ نے دہلی پولیس کی سرزنش کی، کہا – کوئی قابل ذکر پیش رفت نہیں ہوئی

دہلی میں ہوئے دھرم سنسد میں مبینہ طور پرہیٹ اسپیچ دینے سے متعلق کیس کی سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے کہا کہ یہ واقعہ 19 دسمبر 2021 کو پیش آیا تھا اور ایف آئی آر پانچ ماہ بعد درج کی گئی۔ اتنا وقت کیوں لگا؟ ایسے معاملات میں ملزمان کے خلاف فوری کارروائی کی جانی چاہیے اور صرف ‘نام’ کے لیے ایف آئی آر درج نہیں کی جانی چاہیے۔

یتی نرسنہا نند، فوٹو بہ شکریہ: فیس بک

یوپی پولیس کے نوٹس کے باوجود نرسنہانند نے کہا – کسی بھی  قیمت پر کریں گے دھرم سنسد

ریڈیکل ہندوتوا لیڈریتی نرسنہانند نے غازی آباد کے ڈاسنہ دیوی مندر میں بی جے پی کے سابق رکن پارلیامنٹ بیکنٹھ لال شرما کے یوم پیدائش کے موقع پر 17 دسمبر سے تین روزہ دھرم سنسد کے انعقاد کا اعلان کیا ہے۔ پولیس نے انہیں نوٹس جاری کرتے ہوئے پروگرام نہ کرنے کی ہدایت دی ہے۔

بنشی دھر بھگت۔ (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک)

اتراکھنڈ: بی جے پی ایم ایل اے نے ہندو دیوی – دیوتاؤں کے بارے میں اپنے تبصرے کے لیے معافی مانگی

بی جے پی ایم ایل اے بنشی دھر بھگت نے 11 اکتوبر کولڑکیوں کے بین الاقوامی دن کے موقع پر ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے لفظ ‘پٹاؤ’ کا استعمال کرتے ہوئے کہا تھا کہ تعلیم کے لیے دیوی سرسوتی، طاقت کے لیے دیوی درگا اور دولت کے لیے دیوی لکشمی کو منانا ہوتا ہے۔ ان کے اس بیان پر ان کو شدیدتنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

علامتی فوٹو : رائٹرس

اتراکھنڈ حکومت کا مدارس کو الٹی میٹم، ایک ماہ کے اندر محکمہ تعلیم میں رجسٹریشن کروائیں

اتراکھنڈ حکومت کا اندازہ ہے کہ ریاست میں تقریباً 400 ایسے مدرسے ہیں، جو رجسٹرڈ نہیں ہیں۔ سماجی بہبود اور اقلیتی بہبود کے وزیر چندن رام داس نے کہا کہ اگر مدارس مقررہ وقت تک اپنا رجسٹریشن نہیں کراتے ہیں تو انہیں بند کرنے کے لیے قدم اٹھائے جائیں گے۔

یتی نرسنہا نند، فوٹو بہ شکریہ: فیس بک

یتی نرسنہانند بولے — مدارس اور اے ایم یو کو اڑا دینا چاہیے، معاملہ درج

کٹر ہندوتوا لیڈریتی نرسنہانند نے علی گڑھ میں منعقد ایک تقریب میں ایک خاص مذہب کے خلاف اشتعال انگیز تبصرہ کیا تھا، جس کے بعد ان کے ساتھ ساتھ اکھل بھارتیہ ہندو مہاسبھا کی قومی جنرل سکریٹری پوجا شکن پانڈے اور ان کے شوہر کے خلاف بھی معاملہ درج کیا گیا ہے۔

جتیندر نارائن تیاگی۔ (تصویربہ شکریہ: ٹویٹر/ @JitendraTyagi)

ہری دوار دھرم سنسد: ہیٹ اسپیچ کے ملزم جتیندر تیاگی نے اپنی جان کو خطرہ بتایا

اتراکھنڈ کے ہری دوار میں 17-19 دسمبر 2021 کے بیچ ہندوتوا رہنماؤں کی جانب سے ‘دھرم سنسد’ کا انعقاد کیا گیا تھا، جس میں مسلمانوں اور اقلیتوں کے خلاف کھلے عام نفرت انگیز تقاریر کی گئی تھیں، یہاں تک کہ ان کے قتل عام کی اپیل بھی کی گئی تھی۔ اس معاملے میں جتیندر نارائن تیاگی عرف وسیم رضوی شدت پسند ہندوتوا لیڈر یتی نرسنہانند کے ساتھ ایک ملزمین میں سے ایک ہیں۔

جتیندر نارائن تیاگی۔ (تصویربہ شکریہ: ٹویٹر/ @JitendraTyagi)

دھرم سنسد کیس: ہیٹ اسپیچ  کے ملزم جتیندر تیاگی 2 ستمبر تک سرینڈر کریں – کورٹ

ہری دوار دھرم سنسد کیس کے ملزم جتیندر نارائن تیاگی کی ضمانت کی مدت میں توسیع سے انکار کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے انہیں 2 ستمبر تک سرینڈر کرنے کی ہدایت دی ہے۔وسیم رضوی کے نام سے معروف تیاگی فی الحال میڈیکل کی بنیاد پر ضمانت پر ہیں۔

(تصویر: پی ٹی آئی)

پیغمبر پر تبصرہ: راجہ سنگھ کی ضمانت کے خلاف حیدرآباد میں احتجاجی مظاہرہ، پارٹی سے سسپنڈ

پیغمبر اسلام کے بارے میں قابل اعتراض تبصرہ کرنے کے بعدگوشا محل کے ایم ایل اے راجہ سنگھ کوگرفتار کیا گیا تھا۔ بعد میں ایک مقامی عدالت نے انہیں ضمانت دے دی تھی، جس کے خلاف رات بھر شہر کے کئی حصوں میں احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ بی جے پی نے انہیں وجہ بتاؤ نوٹس دے کر پارٹی سےسسپنڈ کر دیا ہے۔

بی جے پی ایم ایل اے ٹی راجہ سنگھ (فوٹوبہ شکریہ: فیس بک)

تلنگانہ: بی جے پی ایم ایل اے نے پیغمبر اسلام کے بارے میں نوپور شرما جیسا تبصرہ کیا، احتجاج کے بعد گرفتار

حیدرآباد میں گزشتہ دنوں اسٹینڈ اپ کامیڈین منور فاروقی کا شو ہوا تھا، جس کے خلاف گوشہ محل سے بی جے پی ایم ایل اے ٹی راجہ سنگھ کا ایک ویڈیو یوٹیوب پر سامنے آیا ہے، جس میں مبینہ طور پر انہیں پیغمبر اسلام کے خلاف تبصرہ کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

ریکھا آریہ۔ (فوٹو بہ شکریہ: فیس بک)

اتراکھنڈ: وزیر نے محکمہ کے تمام ملازمین کو شیو مندروں میں جل ابھیشیک کرنے کا حکم نامہ جاری کیا

اتراکھنڈ کی منسٹر آف وومن اینڈ چائلڈ ڈیولپمنٹ ریکھا آریہ نے ایک سرکاری حکم نامہ جاری کرتے ہوئے اپنے محکمے کے تمام افسران، ملازمین، آنگن واڑی-منی آنگن واڑی کارکنوں اور معاونین کو ہدایت دی ہے کہ وہ 26 جولائی کو اپنے اپنے گھروں کے قریبی شیومندروں میں ‘ جل ابھیشیک’ کریں اوراس کی تصویریں ای میل اور وہاٹس ایپ گروپ میں ڈالیں۔

بجرنگ منی۔ (فوٹو بہ شکریہ: اے این آئی)

زبیر کیس: اے ایس جی کے ذریعے ’قابل احترام‘ کہے گئے بجرنگ منی نے مسلمانوں عورتوں کے ساتھ ریپ کی اپیل کی تھی

سپریم کورٹ میں صحافی محمد زبیر کی عرضی کی سماعت کے دوران حکومت کی طرف سے پیش ہوئے ایڈیشنل سالیسٹر جنرل ایس وی راجو نے کہا کہ بجرنگ منی ایک ‘قابل احترام ‘ مذہبی رہنما ہیں، جن کے بہت سے پیروکار ہیں۔بجرنگ منی کی مسلمانوں کے خلاف ہیٹ اسپیچ کی ایک طویل تاریخ ہے، جس کی وجہ سے انہیں ایک بار گرفتار بھی کیا گیا تھا۔

نوپور شرما (تصویر: پی ٹی آئی)

ملک کے جذبات کو بھڑکانے کے لیے نوپور شرما ذمہ دار، انہیں معافی مانگنی چاہیے: سپریم کورٹ

ٹی وی بحث کے دوران پیغمبر اسلام کے بارے میں تبصرے کی وجہ سے معطل بی جے پی لیڈر نوپور شرما کی جانب سے ملک کے مختلف حصوں میں ان کے خلاف درج ایف آئی آر کو دہلی منتقل کرنے کے لیے دائر عرضی پر سپریم کورٹ کی بنچ سماعت کر رہی تھی۔ بنچ نے اس ٹی وی مباحثے کی میزبانی کے لیے نیوز چینل ٹائمس ناؤ کے خلاف بھی سخت موقف اختیار کیا۔ عدالت نے پوچھا کہ ٹی وی پر یہ بحث کس لیے تھی؟ صرف ایک ایجنڈے کے فروغ دینے کے لیے؟ انہوں نے عدالت میں زیر غور معاملے کا انتخاب کیوں کیا؟

محمد زبیر۔ (فوٹو بہ شکریہ: ٹوئٹر/@zoo_bear)

ایڈیٹرس گلڈ نے کیا زبیر کی رہائی کا مطالبہ، کہا – پروپیگنڈہ کرنے والے آلٹ نیوز کے خلاف

آلٹ نیوز کے شریک بانی اور فیکٹ چیکر محمد زبیر کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے ایڈیٹرس گلڈ نے ان کی فوراً رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔ وہیں آن لائن پبلشرز کے ایک ادارےڈی جی پب نے صحافیوں کے خلاف قانون کے اس طرح استعمال کو غیرمنصفانہ قرار دیتے ہوئے پولیس سےمعاملہ واپس لینے کی اپیل کی ہے۔

محمد زبیر۔ (فوٹوبہ شکریہ: ٹوئٹر/@zoo_bear)

ہندوتوا لیڈروں کو ’نفرت پھیلانے والا‘ کہنے والے صحافی کے خلاف درج مقدمہ کو رد کرنے سے کورٹ کا انکار

تین ہندو سنتوں – یتی نرسنہانند، بجرنگ منی اور آنند سوروپ کو مبینہ طور پر نفرت پھیلانے والا کہنے پر ‘آلٹ نیوز’ ویب سائٹ کے شریک بانی محمد زبیر کے خلاف اتر پردیش کے سیتا پور ضلع کے خیر آباد پولیس اسٹیشن میں ایک جون کومقدمہ درج کیا گیا تھا۔ الہ آباد ہائی کورٹ نےکہا کہ پہلی نظر میں ایسا لگتا ہے کہ زبیر نے جرم کیا ہے اوراس معاملے کی تحقیقات کی ضرورت ہے۔

جھارکھنڈ کے رانچی میں تشدد کے بعد تعینات ریپڈ ایکشن فورس اور پولیس اہلکار ۔ (تصویر: پی ٹی آئی)

پیغمبر پر تبصرہ: پرسنل لاء بورڈ اور جمعیۃ نے مظاہرین پر پولیس کارروائی کی مذمت کی

مسلم پرسنل لا بورڈ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ پیغمبر اسلام کے بارے میں متنازعہ تبصرے پر پرامن احتجاج کرنے والوں کے خلاف مقدمات درج کیے جا رہے ہیں، لاٹھی چارج کیا جا رہا ہے اور ان کے گھروں کو مسمار کیا جا رہا ہے۔ جب تک کہ کوئی شخص عدالت میں مجرم ثابت نہیں ہوتا، وہ صرف ایک ملزم ہوتاہے۔ وہیں جمعیۃ نے کہا ہے کہ پولیس نے مظاہرے میں شامل لڑکوں کے ساتھ دشمنوں جیسا سلوک کیا۔ یہ بہت ہی افسوسناک ہے۔

نویکا کمار کے شو میں نوپور شرما اور دیگر مقررین۔ (اسکرین گریب کریڈٹس: ٹائمس ناؤ)

پیغمبر اسلام کے بارے میں نوپور شرما کے تبصرہ والے معاملے میں ٹائمس ناؤ کی نویکا کمار کے خلاف ایف آئی آر

نوپور شرما نے پیغمبر اسلام کے خلاف ‘ٹائمس ناؤ’ کے پرائم ٹائم شو میں تبصرہ کیا تھا۔ نویکا کمار اس شو کو ہوسٹ کر رہی تھیں۔ مہاراشٹر کے پربھنی میں درج ایف آئی آر میں نویکا پر مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کا الزام لگایا گیا ہے۔

کویت کا قومی پرچم۔ (علامتی تصویر: رائٹرس)

پیغمبر پر تبصرہ: کویت احتجاجی مظاہرہ کرنے والے تارکین وطن کو ملک بدر کرے گا

کویت کے قوانین کے مطابق خلیجی ملک میں تارکین وطن کی طرف سے دھرنا دینا یا مظاہرہ کرنا منع ہے۔ یہاں 10 جون کو تارکین وطن نے پیغمبر اسلام کی حمایت میں مظاہرہ کیا تھا۔ کویت ان چند ممالک میں سے ایک ہے جس نے بی جے پی کے سابق رہنما نوپور شرما اور نوین جندل کے تبصرے پر ہندوستانی سفیر کو طلب کیا تھا۔

نصیر الدین شاہ(فوٹو : پی ٹی آئی)

نصیر الدین شاہ نے پی ایم مودی سے مسلمانوں کے خلاف نفرت کو روکنے کی اپیل کی

سیاسی معاملات پر شاہ رخ، سلمان اور عامر خان کی خاموشی پر اداکار نصیر الدین شاہ نے کہا کہ، میں ان کے لیے نہیں بول سکتا۔ مجھے لگتا ہے کہ وہ سوچتے ہوں گے کہ وہ بہت زیادہ خطرہ مول لے رہے ہیں، لیکن پھر میں نہیں جانتا کہ وہ اپنے ضمیر کو کیسے تسلی دیتے ہیں۔ میرے خیال میں وہ اس پوزیشن میں ہیں جہاں ان کے پاس کھونے کے لیے بہت کچھ ہے۔